تازہ تر ین

السر

ڈاکٹرنوشین عمران
جس طرح جلد پر تیزابی چیز گرنے سے زخم بن جاتے ہیں ایسے ہی معدے اور آنت کی اندرونی جھلیوں پر بھی تیزابی رطوبت (ایسڈ) کے بڑھ جانے کے اثر سے السر کے زخم بن جاتے ہیں۔ جنہیں السر کہا جاتاہے۔السر نظام ہضم کے کسی بھی حصے میں ہوسکتا ہے جیسا کہ خوراک کی نالی (ایسوفیگس) معدہ (گیسٹرک السر) چھوٹی اور بڑی آنت (انسٹٹائن السر)دونوں جگہ ہوتوپیپٹک السر تقریباً 95 فیصدالسر معدے اور چھوٹی آنت کے پہلے حصے میں ہی ہوتے ہیں۔ السر کا مرض اچانک نہیں ہوتا بلکہ ابتداءمیں معدے یا آنت میں تیزابیت بڑھتی ہے۔ خوراک کے معدے میں جانے کے بعد ایسڈ اور رطوبت خارج ہوتے ہیں جو خوراک کو ہضم کرتے ہیں۔ معدے میں جزوی ہضم ہونے کے بعد کھانا چھوٹی آنت میں داخل ہوتا جہاں کچھ دیر رک کر مزید ہضم ہونے کے مراحل سے گزرتاہے۔السر کی بڑی وجہ معدے میں رطوبت اور ایسڈ کی مسلسل زیادتی ‘ مرچ مصالحے کا زیادہ استعمال سگریٹ الکوحل اور درد کی ادویات کا بے جا استعمال ہے۔ ذہنی تناﺅ پریشانی براہ راست السر پیدا نہیں کرتی لیکن ان کے باعث سیئریس ہارمون بڑھتے ہیں‘ایسڈ زیادہ بنتا ہے جس سے تیزابیت بڑھ جاتی ہے اور آگے چل کرالسر بن جاتاہے۔ السر کی ایک بڑی وجہ H-PYLORI بیکٹیریا ہے۔ یہ بیکٹیریا خوراک یا پانی کے ذریعے ہی معدے تک پہنچتا ہے اور پھر معدے کی اندرونی تہوں میں گھر بنا لیتا ہے۔ 70 فیصد السر کے مریضوں میں یہ بیکٹیریا پایا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ معدے کی تیزابیت یا السر کی عام دوا لینے والے مریضوں میں بھی درد ختم نہیں ہوتا کیونکہ وہ HP بیکٹیریا کی خاص دوا نہیں لیتے۔
السر کی علامات میں سینے کی ہڈی کے نیچے اور پیٹ کے اوپر کے حصے میں جلن اور درد‘ متلی ‘ ڈکار شامل ہیں۔ معدے کے السر میں درد خالی پیٹ جبکہ آنت کے السر میں رات کے وقت درد زیادہ ہوتا ہے۔ شدید درد کمر کی طرف پھیلتا بھی محسوس ہوتا ہے۔ السر کی تکلیف بڑھ جانے پر زخم سے خون رسنے لگتا ہے جس سے خون والی قے یا کالے پاخانے آنے لگتے ہیں۔ بعض افراد میں خون کی قے یا کالے پاخانے ہی السر کی پہلی علامت ہوتے ہیں لیکن یہ کیفیت السرکی شدت یا اس سے خون رسنے کے وقت ہی پیدا ہوتی ہے۔
السر کے مریض درد ختم کرنے والی ادویات استعمال نہ کریں یا ضرورت ہو تو اس کے ساتھ اینٹی السر دوا بھی شروع کردیں۔ علاج کے لئے اینٹ ایسڈ‘ اینٹی السر دوا ڈاکٹر کے مشورے سے لیں۔ بیکٹیریاHP ختم کرنے کے لئے عمومی ادویات کے ساتھ اینٹی بائیوٹک اور فلیجل دوا دینا بھی ضروری ہوتا ہے۔
٭٭٭


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved