تازہ تر ین

عوام خود لیڈرشپ پیدا کریں

راﺅ غلام مصطفی …. اظہار خیال
بد قسمتی سے قائد اعظم کے بعد اس عوام کو کوئی صالح قیادت نصیب نہیں ہو ئی۔ملک کی مجموعی صورت حال کے زائچے کا جائزہ لیں تو دنیا میں سیاسی، سماجی اور معاشی تبدیلوں کے پیش نظر ہر ذی شعور تبدیلی کی خواہش کا طلبگار ہے لیکن کوئی بھی اس جمودی فضا میں ارتعاش پیدا کرنے کےلئے پہلا قطرہ بننے کو تیار نہیں اور نہ ہی کوئی یہ جا نتا ہے کہ تبدیلی کی شروعات کہاں سے کی جائیں زندگی کے تجربات اور مشاہدات سے یہ بات سامنے آ ئی ہے کہ ہمارے ہر عمل سے دوسرے کی زندگی پر کتنا فرق پڑتا ہے تو یہ بات اٹل ہے کہ فرق ضرور پڑتا ہے لیکن ہم نہیں جانتے ہم سے دو سال بعد جمہوریت کے زینہ پر قدم رکھنے ولا ہمسایہ ملک چین کا کریکٹر چارا صولوں پر استوار ہے برداشت، تسلسل، خود انحصاری اور عاجزی اور یہ چاروں خوبیاں چین کے بانی ماوزئے تنگ میں موجود تھیں آ پ ماوزئے تنگ کی برداشت کا اندازہ کیجئے دنیا کا بہادر سے بہادر ترین انسان بھی اکلوتی اولاد کی موت پر آ نسو،خارش کے وقت ہاتھ اور لطیفہ کے وقت اپنا قہقہہ کنٹرول نہیں کر سکتا لیکن ماوزے تنگ کو ان تینوں پر کنٹرول تھا کوریا کے ساتھ جنگ ہوئی تو ماوزے تنگ نے اپنا اکلوتا بیٹا جنگ کے لئے بھجوا دیا بیٹے کی نعش واپس آ ئی تو ماوزے نے یہ کہ کر رونے سے انکار کر دیا میں اس غم میں اکیلا نہیں ہوں میرے جیسے ہزاروں والدین کے بچے اس جنگ میں مارے گئے میں پہلے ان کے آ نسو پونچھو ں گا ماوزے تنگ کو انگریزی زبان پر مکمل عبور حاصل تھا لیکن اس کے باوجود پوری زندگی انہوں نے کسی کے سامنے انگریزی نہیں بولی اسکی وجہ چین اور چینی زبان سے محبت تھی وہ کہتے تھے کہ میں دنیا کو بتا نا چاہتا ہوں کہ چین گو نگا نہیں اس کی ایک زبان ہے اور اگر دنیا ہمارے قریب آ نا چاہتی ہے یا ہمیں سمجھنا چاہتی ہے تو اسے ہماری زبان سمجھنا اور جاننا ہو گی یہ وہ لیڈر شپ تھی جس نے جنگ،اسلحہ اور فوج کے بغیر چین کو دنیا کی ابھرتی ہوئی اقتصادی سپر پارو بنا دیا جس نے اپنے ازلی دشمنوں کو بھی میڈ ان چائنا پر مجبور کر دیا آ ج امریکہ کے قومی دن پر آ تش بازی کا سامان چین سے منگوایا جاتا ہے امریکی جھنڈوں اور سوینئر تک کے نیچے میڈ ان چائنا لکھا ہو تا ہے چین کی ستر فیصد آ بادی لا دین ہے لیکن پوری اسلامی دنیا کو تسبیح اور جائے نماز سپلائی کرتی ہے یہ سب کیا ہے یہ چین کی قیادت کا کمال تھا ماوزے تنگ کے پاس پوری زندگی صرف تین جوڑے کپڑے،دو جوڑے جوتوں کے اور ایک سائیکل تھی اور انہوں نے اپنی زندگی کی آ خری ساعتیں صرف تین مرلہ کے گھر میں بسر کیں آ پ کو یہ جان کر شاید حیرت ہوگی کہ پاکستان چین کی پہلی کھڑکی ہے چین کے لوگوں نے پاکستان کے ذریعے دنیا کو دیکھنا شروع کیا۔ پی آ ئی اے پہلی انٹر نیشنل ائیر لائن تھی جس کے جہاز نے چین کی سر زمین کو چھو ا اور اس لینڈنگ پر پورے چین میں جشن منایا گیا۔ پاکستان نے ایوب خان کے دور حکومت میں چین کو تین جہاز فروخت کیے تھے ان میں سے ایک جہاز ماوزے تنگ استعمال کرتا تھا اور اس جہاز پر آ ج بھی،کرسٹی بائی پاکستان لکھا ہے، پاکستان پہلا ملک ہے جس نے چینی مصنوعات کے امپورٹ کی اجازت دی اور ہم ایک طویل عرصہ تک چین کے ریزر اور سوئیاں استعمال کرتے رہے۔ پاکستان کا ویزہ کبھی چینی لوگوں کی بڑی خواہش ہوا کرتا تھا لیکن چین آ ج ترقی اور خوشحالی کے زینوں پر قدم رکھتا چلا جا رہا ہے اور بد قسمتی سے ہم اپنے ہی مزار کے مجاور بن گئے چین کی ترقی کا سفر آنکھ بند کر کے طے نہیںہو ا اس قوم نے دوسری جنگ عظیم میں جاپان کے ہاتھوں مارے جانے والے دو کروڑ افراد کے لاشے خود اپنے ہاتھوں سے اُٹھائے۔1556میں آ نے والے زلزلہ کی تباہ کاریوں کے باعث ہزاروں افراد کو اپنی آ نکھوں سے جدا ہوتے بھی دیکھا لاغر قدموں سے چلتی اس قوم نے اپنی رگوں میں دوڑتے نشیلے خون کو ماوزے تنگ کی قیادت میں ایسے نچوڑ کر اپنے قدم مضبوط کئے کہ آ ج چین کی اُبھرتی معیشت کو دیکھ کر دنیا اپنی معاشی سمتوں کا تعین کر رہی ہے۔ عوامی خدمت گار کے دعویدار یہ سیاسی خاندان عوام کو کچھ نہیں دے سکتے۔ سرحد پار ممالک میں ان کی جائیدادیں اور کاروبار، بڑے بڑے محلات،لگژری گاڑیاں، شاہانہ ٹھاٹھ اور وی وی آ ئی پی پروٹوکول چیخ چیخ کر کرپشن کہانیوں کا نقارہ بجا رہے ہیں۔ اپنے کردار و عمل سے قدرتی وسائل سے مالا مال لہلہاتے سر سبز کھیتوں اور بہترین آبپاشی نظام سے جڑی چاروں موسموں سے مزین تین لاکھ سات ہزار تین سو چوہتر مربع میل پر پھیلی اس دھرتی پر آ باد 22کروڑ عوام میں سے ماوزے تنگ،مہاتیر محمد یا نیلسن منڈیلا تلاش کیجئے اپنے آ پ کو ٹٹولیے کہیں نہ کہیں آ پ کے اند ر کسان کا بیٹا ابراہم لنکن، غلام کا بیٹا قطب الدین ایبک اور معمولی کلرک لومیا ضرور موجود ہے۔
(کالم نگار سماجی مسائل پر لکھتے ہیں)
٭….٭….٭

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved