تازہ تر ین

سی ڈی اے پارک میں دن دیہاڑے خاتون سے زیادتی کے ملزموں کے خلاف کاروائی ، نوکری تو گئی جیل بھی مقرر میں آگئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) کیپیٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے فاطمہ جناح پارک میں خاتون کے ریپ میں مبینہ طور پر ملوث اپنے 2 ملازمین کو برطرف کردیا۔ اسلام آباد پولیس نے اس سلسلے میں 4 مشتبہ افراد کو حراست میں لیا تھا، جس میں سے 2 سی ڈی اے یا میٹروپولیٹن کارپوریشن اسلام آباد (ایم سی آئی) کے سیکیورٹی گارڈز تھے جبکہ دیگر 2 سیکیورٹی گارڈز ایک نجی کمپنی سے تعلق رکھتے تھے۔اس حوالے سے ایم سی آئی کے چیف میٹروپولیٹن آفیسر سید نجف اقبال کا کہنا تھا کہ ہم اپنے اصولوں پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کریں گے اور اس طرح کے لوگوں کی محکمے میں کوئی گنجائش نہیں۔ اس سلسلے میں نجی سیکیورٹی کمپنی سے بھی دونوں ملزمان کے خلاف کارروائی کرنے کا کہا جائے گا۔ برطرف کیے جانے والے دونوں ملازمین کو عارضی بنیاد پر نوکری دی گئی تھی اور وہ ڈیلی ویجز پر کام کرتے تھے۔اس ضمن میں پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ سی ڈی اے کے مالی نے خاتون کا ریپ کیا جبکہ باقی 3 ملزمان نے سہولت فراہم کی۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ چاروں ملزمان کے بیانات ریکارڈ کرنے کے بعد انہیں اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا جہاں ان کی شناختی پریڈ ہوگی۔ ایک 7 اگست کو خاتون اپنے دوست کے ہمراہ پارک میں موجود تھیں، جب وہاں موجود 2 افراد نے ان سے اپنا تعارف پارک کے سیکیورٹی گارڈز کے طور پر کروایا اور کہا کہ وہ سی ڈی اے کے لیے کام کرتے ہیں۔مبینہ ملزمان نے سامان لوٹنے کے بعد انہیں پارک کے علیحدہ علیحدہ دروازوں سے باہر جانے کو کہا۔خاتون نے پولیس کو بتایا کہ ان کے دوست کو پارک کے دوسرے دروازے سے باہر بھیجنے کے بعد، مبینہ سیکیورٹی گارڈز میں سے ایک نے ان کا ریپ کیا۔خاتون اس واقع کے بعد اس حد تک ڈر چکی تھیں کہ چار دن تک شکایت درج نہیں کروا پائیں۔


سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں




دلچسپ و عجیب
کالم
آپ کی رائے
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved