تازہ تر ین

جسم فروشی کیلئے بیرون ملک لڑکیاں سپلائی کرنیوالے گروہ کا انکشاف ” خبریں ہیلپ لائن “ میں انکشاف

بورے والا (نمائندہ خصوصی) بیوٹی پار لر کی آڑ میں بیرون ملک جسم فروشی کے لئے لڑکیاں سپلائی کر نے والا گروہ بے نقاب۔ ایک لڑکی گروہ کے چنگل سے فرار ہو کر پاکستان پہنچ گئی۔ ملزمان کے خلاف کاروائی کے لئے درخواست دائر۔ ملازمت کا جھانسہ دے کر پاکستانی \لڑکیوں سے جسم فروشی کروائی جاتی ہے نسیم بی بی کا موقف۔ تفصیل کے مطابق بیوٹی پارلر کی آڑ میں مجبور اور بے بس گھرانوں سے تعلق رکھنے والی لڑکیوں کو بیرون ملک ملازمت کا جھانسہ دے کر وہاں لے جا کر ان سے دھندا کروانے والے گروہ کا انکشا ف ہوا ہے اسی گروہ کا شکار بننے والی مطلقہ نسیم بی بی سکنہ 259ای بی نے تھانہ صدر کو دی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میں اپنے دو بچوں کا پیٹ پالنے کی غرض سے مرضی پورہ گلی نمبر 2میں واقع نایاب بیوٹی پارلر میں ملازمت کرتی تھی کہ پارلر کی مالکن نازیہ بی بی نے مجھے کہا کہ تمہیں شارجہ میں قائم ایک پارلر میں ملازمت دلوا دیتے ہیں اور مجھے حمید خاں نامی شخص کے پاس بھیج دیا جس نے مجھے جھانسہ دیتے ہوئے مجھ سے ایک خالی اسٹامپ پر دستخط کر واکر مجھ سے دو لاکھ روپے اور طلائی زیورات بطور امانت لے لئے اور مجھے شارجہ بھےج دیا جس پر وہاں مجھے شانی نامی ایجنٹ اپنے فلیٹ میں لے گیا اور مجھے دھندے کے لئے ایک نجی ہوٹل میں جانے کے لئے مجبور کرنے لگا وہاں اور بھی کئی لڑکیاں جو یہاں سے بھیجی گئی تھیں اسی گروہ کے ذرےعے شارجہ میں مکروہ پیشہ سے منسلک ہیں شا رجہ جانے کے چھ روز بعد ہی میں موقع پا کر ان کے چنگل سے فرار ہو کر پاکستان پہنچ گئی اور آتے ہی مذکورہ ملزمان سے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی کی بابت بتایا اور اپنی رقم اور زیورات کی واپسی کا مطالبہ کیا تو ملزمان انکاری ہو گئے نسیم بی بی نے چیف جسٹس پاکستان، وزیر اعلی پنجاب اور ڈی پی او وہاڑی سمیت دیگر اعلی حکام سے انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

 


سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں




دلچسپ و عجیب
کالم
آپ کی رائے
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved