تازہ تر ین

نرم سینڈوچ کاایک لقمہ

نگہت لغاری …. ….سچ
کوئی یقین کرئے یا نہ کرئے میں اپنی تمام تر روشن خیالی اور اعلیٰ تعلیم کے باوجود پُرانے محاوروں اور کہاوتوں پر پورا یقین رکھتی ہوں کیونکہ میں نے ان کو صد‘ فی صد دُرست اور لاگو پایا ہے۔
ملک کی ستر سالہ زندگی میں کئی حاکم آئے ہیں اور گئے ہیں کسی نے عوام کوبوٹوں تلے روندا کسی نے چپل منہ پر ماری ابھی مار پیٹ ختم نہیں ہوئی تھی کہ دو پیشہ ور شہنشاہ تشریف لے آئے ایک زرگ ایک لوہار۔ زرداری صاحب پیشے کے لحاظ سے زرگر نہ سہی زرداری کا مطلب ہی زرگری ہے زرگر سونے کو کسی بھی شکل میں ڈھالنے کیلئے بہت آہستہ آہستہ چوٹ لگاتا ہے۔ زرداری صاحب نے قومی خزانے کی دیواروں کو اس مہارت سے 5 سال تک آہستہ آہستہ چوٹ لگائی کہ زیادہ واویلا بھی نہ ہوا اور آخرکار وہ عزت اور وقار کے ساتھ اپنے سونے کے تخت سے نیچے اُتر آئے اُن کے چہرے پر ناچتی مسکراہٹ کو ہمیشہ Freindly smile سمجھا گیا حالانکہ وہ Rediculos Smile تھی جو لوگوں کا مذاق اُڑاتی تھی وہ اپنے گھوڑوں کو پستہ بادام کھلاتے تھے۔ اور عوام کو گھاس کھلاتے تھے۔ اس کے بعد زرہ بکتر پہنے شرفا تشریف لائے اُن کے تو ہتھوڑے کے ایک زور دار وار نے قومی خزانے کے پرخچے اُڑا دیئے اپنے ہی گھر کا لوہا تھا اور اپنے ہی ماہر کاریگر تھے ایسے زرہ بکتر بنائے کہ ان کے وجود کو کوئی نقصان ہی نہ پہنچ سکا لوہے کو لوہا کاٹتا ہے۔ مدتوں بعد لوہے کا ترازو پکڑے ایک منصف آیا اور انصاف کے ترازو کی ڈنڈی نکال کر ان کے جسم کی زرہ بکتر تار تار کر دی اور ان کو لوہے کی سلاخوں کو پیچھے دھکیل دیا یوں سمجھیں کہ کھوہ کی مٹی کھوہ کو لگ گئی۔ (کھوہ کی مٹی کھوہ کو لگ گئی یہ بھی محاورہ ہے) ایک جرنیل صاحب کی دعائیں بھی ہر وقت ان کے ساتھ تھیں وہ جرنیل صاحب ہر وقت باوضو رہتا تھا اور ہر وقت اتنا زیادہ اللہ اللہ کرتا تھا کہ آخر کار اللہ رب العزت نے اپنے بے پناہ پیار سے مجبور ہو کر ایک دن اُس کو آسمان پر اُڑتے۔ اُس کے جہاز سے اُچک کر اپنے سینے سے لگا لیا۔ پیار سے بھینچ بھینچ کر اُس کی ہڈیاں توڑ دیں زمین پر رہنے والے ناقدرے لوگوں کے لئے اُوپر سے صرف اُس کی ٹوپی نیچے پھینک دی اور اُس جسد خاکی کو آسمانوں کے پار اپنے پاس رکھ لیا۔
نئے وزیراعظم بہت قابل اور قابل فخر کھلاڑی ہیں اور کھلاڑی جھپٹنا جانتے ہیں خدا کیلئے خان صاحب ان پیشہ ور سنار لوہار کو نکلنے نہ دیں کسی سپر سانک ایئر کرافٹ میں سوار ہوکر ان کا پیچھا کریں۔اب ہمیں آپ کو آپ پر لکھے ہوئے چند شعر سناتی ہوں شاہد آپ کی منصبی تھکن دور ہو جائے۔
نئے خلیفہ نے وقت بے سادگی کی جو مہم شروع کر رکھی ہے وہ تو بہت ہی قابل تحسین اور دُور رس ہے آپ کے پیشرﺅوں نے سادگی کا جو مذاق اُڑیا ہے اللہ آپ کو یقیناً اس سے دور رکھے گا جب بے نظیر صاحبہ وزیراعظم تھیں تو ایک برطانوی صحافی کرسٹنیا لیمپ ہے وزیراعظم صاحبہ کو انٹرویو کرنے جب وزیراعظم ہاو¿س پہنچیں تو صرف چند متعلقہ سطور اسی کی زبان میں لکھ رہی ہوں وہ کہتی ہے۔
when I enterd the House of Primeminister of a Poor Country A golden uni formed Foot man Speeking in a Hush Tones as if there was a invalid in side through an enterance hall decorated with a vast chandelier he led the way to a long reception room decorated With silk carpet and gild sofas in the styal of louis .(X)
عمران خان صاحب سے پوری قوم یہ تو توقع کر رہی ہے وہ اپنے قول اور فعل کے عمل کو ساتھ رکھیں گے پروٹوکول کے معاملات میں جتنی فضول خرچی پچھلی حکومتوں خصوصاً شریف برادران نے کی ہے جو مسائل سننے کیلئے وہ دُور دراز علاقوں میں کیمرہ بردار صحافیوں کی بریگیڈ کے ساتھ جاتے تھے اُسی پیسے سے ان غریبوں کے مسائل حل ہوسکتے تھے امدادی چیک دیتے وقت یہ حاکم سسکیاں بھر بھر کر روتے تھے۔ میں حیران ہوتی تھی ان کا سیاسی نشان شیر تھا اور یہ سب جانتے ہیں کہ شیر جب اپنے شکار کیے ہوئے کسی بڑے جانور کو نگلتا ہے تو نگلنے کی جدوجہد میں وہ گوشت اس کے گلے میں پھنس جاتا ہے اور بے اختیار اس کے آنسو نکل آتے ہیں ایک دفعہ امریکی صدر بش ایک سرکاری ڈنر میں کھانا کھا رہے تھے۔ تو ایک بہت ہی نرم سینڈوچ کا ایک لقمہ ان کے حلق میں پھنس گیا اور ڈنر میں شریک اعلیٰ ترین عہدہ داروں کے سامنے انہوں نے اُلٹی کر دی انہی دنوں صدر بش افغانستان اور عراق جنگ کے بہت سے نقصانات اٹھا چکے تھے ایک اعلیٰ فوجی جرنیل جو شاید بش کی جنگی پالیسیوں سے نالاں تھا۔ اس نے ایک دم ایک فقرہ کسا اور کہا مسٹرپریذیڈنٹ! بعض اوقات بہت نرم چیز بھی گلے میں پھنس کر الٹی میں باہر آجاتی ہے اور پیٹ کے اندر نہیں جاسکتی؟
(کالم نگارانگریزی اوراردواخبارات میں لکھتی ہیں)
٭….٭….٭


سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں




دلچسپ و عجیب
کالم
آپ کی رائے
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved