تازہ تر ین

اقرار جرم کے لیے ملزم کی زبان پر گرم لوہا رکھنے کی سزا ،مگر کس لئے؟

لاہور (نےٹ نےوز) مصر کے سینا اور اسماعیلیہ کے علاقوں میں عجیب و غریب قسم کی عدالت لگتی ہے۔ سینکڑوں برس سے اس کے رواج اور رسمیں مسلمہ ہیں۔ یہ سرسری سماعت کی عدالت ہوتی ہے۔ جہاں الزام اور دفاع کا فیصلہ چند لمحوں کے اندر کر دیا جاتا ہے۔ ملزمان کو انتہائی خطرناک اور بے حد مشکل صورتحال سے گزرنا پڑتا ہے۔ اس عدالت سے وہی فریق رجوع کرتے ہیں جنہیں اس کی سخت شرائط قبول ہوتی ہیں۔ عدالت لگنے پر متعلقہ فریق حاضر ہوتے ہیں‘ آگ دہکائی جاتی ہے۔ اس میں لوہے کا ایک ٹکڑا گرم کرنے کیلئے رکھ دیا جاتا ہے۔ 15منٹ تک یہ سلسلہ چلتا ہے۔ ملزم سے اس کا منہ کھلوایا جاتا ہے۔ جج اس کی زبان پر گرم لوہا 3مرتبہ گزارتا ہے، اگر ملزم جھوٹا ہوتا ہے تو اس کی زبان جل جاتی ہے اور اگر سچا ہوتا ہے تو اس کی زبان پر کوئی اثر نہیں ہوتا۔ اس عدالت کو بشعة بھیانک کہا جاتا ہے۔ چوری، آبروریزی، قتل اور نسب نامہ ثابت کرنے کیلئے اس عدالت سے رجوع کیا جاتا ہے۔ اسماعیلیہ صوبے کے شہر فاید کے ماتحت سرابیوم علاقے میں اس قسم کی عدالت لگتی ہے۔ اس کی سربراہی شیخ فضل العبادی کرتے ہیں۔ وہ العباعیدہ قبیلے کے شیخ ہیں۔ ہر روز مختلف صوبوں اور پڑوسی ملکوں کے بیسیوں ملزمان عدالت سے رجوع کرتے ہیں اور ناقابل تردید حقیقت جاننے کی درخواست کرتے ہیں۔ العربیہ نیٹ کے نمائندے کا کہنا ہے کہ وہ مذکورہ عدالت کے ایک اجلاس میں شریک ہوا جہاں ہزار پونڈ کی چوری کا ملزم لایا گیا تھا بے قصور ثابت ہوا۔ الزام لگانے والے نے اس سے معذرت کی۔ دوسرے اجلاس میں چوری کا ملزم مجرم ثابت ہوا۔


سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں




دلچسپ و عجیب
کالم
آپ کی رائے
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved