تازہ تر ین

خدمتِ خلق

عبدالستار عاصم….جہان قائد
انسانوں کی اصلاح اور عقید ہ کی درستگی کیلئے اللہ تعالیٰ نے ایک لاکھ چوبیس ہزارانبیاءاکرام ؑ دنیا میں بھیجے۔ آخری پیغمبرنبی کریم کو دونوں جہانوں کیلئے رحمت بنا کر بھیجا گیا نبی کریم دنیا کے کسی بھی مذہب کو ماننے والوں کیلئے رحمت بن کر آئے یہی وجہ ہے کہ آج یورپ کے پانچ ممالک کی یونیورسٹیز میں نبی کریم کوبطور رول ماڈل کے تسلیم کر کے آپ کی حیات مبارکہ پر تحقیق بھی ہو رہی ہے اوروہ لوگ آپ کی تعلیمات کا مطالعہ بھی کر رہے ہیں۔ نبی کریم نے بچپن سے لیکر وصال تک کسی بھی انسان ‘ جاندار تک حتیٰ کہ کسی درخت تک کو نقصان نہیں پہنچایا ،غیر مسلم مفکرین اس تحقیق میں ابھی تک لگے ہوئے ہیں کہ ایک ایسی شخصیت جس نے کبھی کسی انسان کو دھوکہ نہیں دیا اور زندگی کا ہر لمحہ انسانیت کیلئے وقف کیا‘ ایسے انسان کو دنیا کا عظیم ترین انسان ہونے کا شرف بھی حاصل ہے اور آپ کی زبان مبارک سے نکلا ہوا ہر لفظ سچ ثابت ہو رہا ہے تو کیوں نہ دنیا بھر کے تمام غیر مسلم مفکرین دائرہ اسلام میں شامل ہو کر اپنی اپنی زندگیوں کو سکون کا پیکر بنا لیں۔نبی کریم کی سیرت پر دنیا کی ہر چھوٹی بڑی زبانوں میں کتب لکھی گئیں اور تا قیامت لکھی جاتی رہےں گی۔بقول ممتاز روحانی شخصیت چیئرمین عالمی درودود عوت مرکز مذہبی سکالر ڈاکٹر طارق شریف زادہ اُردو زبان میںتقریباً پانچ ہزار سے زائد سیرت کی کتب موجود ہیں اور مزید بھی ریسرچ ہو رہی ہے۔ گزشتہ دنوں رحمن فاو¿نڈیشن ماڈل ٹاو¿ن لاہورکے زیراہتمام نبی کریم کی شانِ اقدس میں ایک عظیم الشان محفل میلاد مصطفی کا انعقاد کیاگیا۔ اس موقع پرڈاکٹرطارق شریف زادہ‘ ڈاکٹر وقار احمد نیاز ،فنون لطیفہ کے روح رواں میاں فرزند علی کے صاحبزادہ اور جانشین میاں راشد فرزند ،راشد محمود ،پروفیسر محمد فاروق عزمی ،محمد منشاءقاضی نے نبی کریم کی سیرت کو عام کرنے کی ضرورت پر زوردیا۔ ڈاکٹر طارق شریف زادہ نے کہا کہ رحمن فاو¿نڈیشن ،پاکستان کا ایسا فلاحی ،علمی، ثقافتی ادارہ ہے جس نے جناب ضیا شاہد کی بارہ شہرہ آفاق کتب کو دنیا بھر میں عام کرنے کیلئے بہترین رول ادا کیا بلکہ رحمن فاو¿نڈیشن کے ایک سینئر ممبر نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ”سچا اور کھرا لیڈر“کا ایک ایڈیشن امریکہ اور پاکستان کی یونیورسٹیوں میں سپانسر کرکے تقسیم کرنے کا پرگرام بنا رہے ہیں‘ اُنہوں نے ایک تجویز بھی دی کہ پاکستان کے ہر تعلیمی ادارے سکول سے لے کریونیورسٹی تک کی لائبریری میں ایک گوشہ ضیا شاہدلائبریری اینڈ ریسرچ سنٹر بننا چاہیے تاکہ وہ طلبا و طالبات جو زندگی میں کامیابی حاصل کرناچاہتے ہیں وہ ضیاشاہد کی زندگی کے مطالعہ سے استفادہ کر سکیںانہیں معلوم ہوکہ ضیا شاہد پاکستان کے واحد چیف ایڈیٹرہیں جو بیک وقت کالم نگار‘ افسانہ نگار‘ مترجم‘ کہانی نگار ہیں جو صرف چند گھنٹے آرام کرتے ہیں اپنا زیادہ وقت پاکستان کی خدمت کیلئے صرف کرتے ہیں‘ خدمت خلق کاجذبہ ان میں کوٹ کوٹ کر بھرا ہوا ہے۔ حقیقت یہی ہے کہ ضیا شاہد ہمارے قومی ہیرو ہیں اور انہیں پاکستان کا سب سے بڑا ایوارڈ ملنا چاہیے ۔ممتاز کالم نگار اور قلم فاو¿نڈیشن انٹرنیشنل کے صدر محمدفاروق چوہان نے تجویز دی کہ معاشرے کے صاحبِ حیثیت لوگوں کو ضیا شاہد صاحب کی کتب کو سپانسر کر کے تعلیمی اداروں کی لائبریریوں میں تقسیم کرانا چاہیے‘ راشد محمود نے تجویز دی کہ جس طرح عبد الستار ایدھی کا خواب تھا کہ ہر پچاس کلو میٹر کے فاصلے پر ایک ہیلتھ سنٹر بنایا جائے تاکہ عوام کی خدمت چوبیس گھنٹے میسر رہے اسی طرح رحمن فاو¿نڈیشن کا بھی ایک خواب ہے کہ گندا پانی پینے کی وجہ سے ہر دوسرا شہری گردوں کی بیماری میں مبتلا ہو رہا ہے چنانچہ گردو ں کی بیماریوں سے بچنے کیلئے ہر سو کلو میٹر پر ایک جدید ترین ہسپتال بننا چاہیے۔ معروف دانشور اور تجزیہ نگار رانا عامر رحمن نے تجویز دی کہ رحمن فاو¿نڈیشن خدمت خلق کے بہت اہم کام کر رہا ہے پندرہ سالوںمیں انہوں نے اسلام آباد ،جہلم ،فیصل آباد،کراچی میں سنٹر بنا کر ثابت کر دیا ہے کہ انسان اگر کسی بھی مشن کے ساتھ مخلص ہو کر کام کرے تو خدائی مدد شاملِ حال ہو جاتی ہے ،رحمن فاو¿نڈیشن ہر ماہ پندرہ سو سے زائد مریضوں کاسو فیصد مفت علاج کر رہا ہے ،جس پر ہر ماہ چالیس لاکھ اخراجات آ رہے ہیں اور یہ اخراجات مخیر خواتین و حضرات کے تعاون سے پورے ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو اور پاکستان کے پہلے ایک ہزار امیر ترین لوگوں کو چاہیے کہ وہ پاکستان کی بیس کروڑ عوام کو صاف پانی کا تحفہ دیں ،جس طرح ایک بڑے پبلشر ملک مقبول احمدنے لاہور میں بے شمار فلاحی اداروں اور مستحق لوگوں کے گھروں میں واٹر فلٹر لگوائے ہوئے ہیں اور ہر ماہ ان کے فلٹرزکو تبدیل کروانے کا ذمہ بھی لیا ہوا ہے ۔اسی طرح کی ایک ٹیم ہر شہر میں تشکیل دی جائے جس طرح ڈاکٹر کرنل (ر)رشید احمد،بریگیڈئیر محمد یوسف ،ڈاکٹر میجر(ر) محمد یوسف اختر ،کرنل (ر)محمد نواب ،حاجی مشتاق احمد ،رانا شہناز احمد خان ایڈووکیٹ ،ڈاکٹر محمد اجمل خان نیازی،سرفراز سیّد جیسا درددل رکھنے والے لوگ ہر شہر میں موجود ہیں ان لوگوں کو اجتماعی طور پر فلاحی کاموں پر توجہ دینی چاہیے ۔ اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے، اسلام میں اپنی آمدن میں سے اپنے قریبی مستحق عزیزوں میںبطور زکوٰة، عطیات ،صدقات ،خیرات تقسیم کرنے کاحکم ہے۔
سدا بہار روحانی سکالر شیخ سعدی ؒ نے ایک جگہ لکھا ہے کہ میں زندگی بھر دو لوگوں کی تلاش میں ناکام رہا ایک وہ اللہ کا نیک بندہ جس نے اللہ کی راہ میں پیسہ خرچ کیا اور وہ غریب ہو گیا اور ایک وہ بندہ جس نے ظلم کیا ہو اور وہ اللہ کی پکڑ سے بچ گیا ہو ۔ حضرت علیؓ کا ایک قول ہے کہ اللہ تعالیٰ جب تمہیں ضرورت سے زیادہ رزق دے تو سمجھ لیں کہ وہ اللہ تعالیٰ کی آپ کے پاس امانت ہے اور اس میں مستحق لوگوں کا حق ہے ۔پاکستان میں ہزاروں فلاحی ادارے چل رہے ہیں اور تا قیامت چلتے رہےں گے ،دنیا بھر میںپاکستانی سب سے زیادہ عطیات دیتے ہےں۔رحمن فاو¿نڈیشن پاکستان کا تیسرا بڑا ہسپتال بنا رہے ہیں میری تجویز ہے کہ ایک ہزار ایسے لوگ وہ بے شک پاکستان میں ہوں یا پاکستان سے باہر ان کو چاہیے کہ اپنے پیاروں کے نام ایک ایک کمرہ یا ایک فلور یا ایک بلاک اُن کے نام منسوب کر کے اپنی نگرانی میں تعمیر کروائیں۔ ایک کمرہ میں جناب ضیا شاہد کی والدہ مرحومہ کے درجات کی بلندی اور صدقہ جاریہ کے طور پر تعمیر کروانے کا عملی اعلان کرتا ہوں ،حدیث ِ نبوی ہے کہ نیکی کا آغاز گھر سے کریں آپ بھی اپنے عطیات دنیا بھر میں حبیب بینک کی کسی بھی برانچ میں آن لائن جمع کر واسکتے ہیں ۔اکاو¿نٹ ٹائٹل : اکاو¿نٹ نمبر00427900088803رابطہ نمبر :0321-9474281 / 0300-8422518ہیڈ آفس 134-Gماڈل ٹاو¿ن لاہور‘ قارئین آپ کی سہولت کیلئے اکاو¿نٹ نمبر اور رابطہ نمبر لکھ دئیے ہیں تاکہ آپ بر وقت اپنے عطیات جمع کر واسکیں ۔اللہ تعالیٰ قرآنِ مجید میںسورة بقرہ میں فرماتے ہیں :ترجمہ -جو لوگ اللہ کی راہ میں خرچ کرتے ہیں اُن کی کہاوت اس دانہ کی ہے جس سے سات بالی نکلیں ۔ہر بالی میں سے ایک سودانے ،اور اللہ جسے چاہتا ہے زیادہ دیتا ہے اور اللہ وسعت والا اور بڑا علم والا ہے ۔جو لوگ اللہ کی راہ میں اپنا مال خرچ کرتے ہیں ،پھر خرچ کرنے کے بعد نہ احسان جتاتے نہ اذیت دیتے ہیں ،اُن کے لئے اُن کا ثواب اُن کے رب کے حضور ہے اور اُن پرنہ کچھ خوف ہے اور نہ وہ غمگین ہوں گے ۔اچھی بات اور مغفرت اس صدقہ سے بہتر ہے جس کے بعد اذیت دینا ہو اور اللہ بے پروا اور حلم والاہے ۔ (پ۳،البقرة:۲۶۳،۲۶۱)
(کالم نگار ادبی اور سماجی مسائل پر لکھتے ہیں)
٭….٭….٭


سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved