All posts by admin

مودی ٹرمپ ملاقات: پاکستان کو دیوار سے لگانے کی کوشش؟

بھارتی وزیر اعظم نرندر مودی نے 25 اور 26 جون کو امریکہ کا دورہ کیا جس کی سب سے نمایاں بات 26 جنوری کو وایٹ ہاوس میں صدر ٹرمپ سے ا±ن کی ملاقات تھی۔ اس ملاقات کے بعد جو مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا، ا±س میں پاکستان سے اس بات کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا گیا کہ ا±س کی زمین دیگر ممالک میں دہشت گردی کی اعانت کیلئے استعمال نہیں کی جائے گی۔ مشترکہ اعلامیہ میں پاکستان سے یہ بھی کہا گیا کہ وہ اپنے ملک میں بنیاد پزیر دہشت گرد گروپوں کی جانب سے ممبئی، پٹھانکوٹ اور دیگر سرحد پار حملوں کے مرتکب افراد کو انصاف کے کٹہرے میں لائے۔

پانامہ کیس ڈیڈلائن قریب ،منصوبہ بندی فائنل ،مریم نواز کی طلبی پر نیا طوفان

اسلام آباد (نیٹ نیوز) وزیراعظم نوازشریف، ان کے بیٹوں، بھائی اور داماد کے بعد پانامہ جے آئی ٹی نے وزیراعظم کی صاحبزادی مریم نواز کو بھی طلب کرلیا۔ ایف آئی اے کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل واجد ضیاءکی سربراہی میں پانامہ تحقیقات کے لیے بننے والی جے آئی ٹی نے وزیراعظم نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز کو 5 جولائی کو صبح 11 بجے متعلقہ دستاویزات کے ساتھ بلایا گیا ہے۔ جے آئی ٹی نے وزیراعظم نوازشریف کے صاحبزادوں حسین اور حسن نواز کو بھی پھر طلب کیا ہے۔ حسن نواز کو 3 جولائی اور حسین نواز کو 4 جولائی کو صبح 11 بجے فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی بلالیا ہے۔ حسین نواز اس سے پہلے پانچ مرتبہ جبکہ حسن نواز دو بار جوڈیشل اکیڈمی میں جے آئی ٹی کے روبرو پیش ہوچکے ہیں۔ عید کی ایک دن کی چھٹی کے بعد پانامہ پیپرز معاملے پر مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کا اجلاس جوڈیشل اکیڈمی میں ہوا ہے۔ اجلاس میں جے آئی ٹی ارکان قلم بند کرائے گئے بیانات کا جائزہ لیا جارہا ہے۔مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے 10 جولائی کو اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کرنی ہے، سپریم کورٹ کی جانب سے دی گئی ڈیڈ لائن کے مطابق کام مکمل کرنے کے لیے جے آئی ٹی نے ہفتہ وار چھٹیاں بھی نہیں کی ہیں۔ دوسری جانب جے آئی ٹی نے وزیراعظم نوازشریف کے کزن طارق شفیع کو 2 جولائی بروز اتوار دن 12 بجے دوسری بار طلب کرلیا ہے۔ ذرائع کے مطابق طارق شفیع کی دوبارہ پیشی کے لئے جاری سمن 23 جون کو عرفان منگی کے دستخط سے جاری کیا گیا ہے۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم پر حکمرانوں کا کوئی دباو¿ نہیں چلے گا اور جے آئی ٹی کا فیصلہ جولائی کے مہینے میں آ جائے گا۔نماز عید کی ادائیگی کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ہم ایک زندہ قوم ہیں اور ہمیں دہشت گردی کا متحد ہو کر مقابلہ کرنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی پر حکمرانوں کا دباو¿ نہیں چلے گا اور امید ہے کہ پاناما جے آئی ٹی کا فیصلہ جولائی میں آجائے گا جبکہ بھارتی جاسوس کے حوالے سے حکمرانوں نے قوم کو مایوس کیا ہے۔ ادھر وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی کا کہنا ہے کہ رحمان ڈکیت کو بلا کر جے آئی ٹی نے خود کو متنازعہ بنا لیا ہے۔ فیصل آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عابد شیر علی کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر عاصم حسین، شرجیل میمن، عزیر بلوچ اور ایان علی کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جا رہی جن کے خلاف جے آئی ٹی کی انکوائریز کو ایک سال ہو چکا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کے دشمن ”رحمان ڈکیت“ کو بلا کر جے آئی ٹی نے خود کو متنازعہ بنا لیا ہے۔ عبدالرحمن ملک کی اپنی جماعت پیپلزپارٹی کی تاریخ جے آئی ٹیز سے بھری پڑی ہے، ان پر عمل درآمد کیوں نہیں کیا جاتا، عابد شیر علی نے مطالبہ کیا کہ سابق آمر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کو بھی جے آئی ٹی میں بلایا جائے جنہوں نے 9 سال نواز شریف اور ان کے خاندان کا احتساب کیا۔مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کو 68 سالہ بابا قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ انتخابات کے بعد شادی تو کیا کسی کو منہ دکھانے کے قابل بھی نہیں رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو ایک درندہ ہے جس کے خلاف ریاستی قوانین کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

امریکا کا بھارت کی زبان بولنا قابل تشویش ہے، وزیر داخلہ

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثارعلی خان کا کہنا ہے کہ یہ بات انتہائی قابل تشویش ہے کہ امریکی انتظامیہ ہندوستان کی زبان بولنے لگی ہے، امریکا نے بھارتی وزیر اعظم مودی کے دورہ واشنگٹن پرحزب المجاہدین کے سربراہ سید صلاح الدین کو دہشت گرد قرار دیا ہے۔وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے مزید کہا کہ بھارتی حکومت نہ صرف کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں میں ملوث ہے بلکہ روز اوّل سے حق خود ارادیت کی جائز اور منصفانہ تحریک کو دبانے اور آزادی کی کاوشوں کو دہشت گردی کے طور پر پیش کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے اور جس کے غاصبانہ طرز عمل پر ہر بااصول اور باضمیر قوم کو تشویش ہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی وزیر اعظم کی وائٹ ہاﺅس یاترا کے بعد امریکی حکومت کے بیان سے ایسا لگتا ہے کہ امریکا کے نزدیک معصوم کشمیریوں کے خون کی کوئی اہمیت نہیں۔چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ لگتا یوں ہے کہ شاید انسانی حقوق کے حوالے سے بین الاقوامی قوانین کا کشمیر میں اطلاق نہیں ہوتا اور وہاں انسانی حقوق کی پامالی اور معصوموں کے خون کی ہولی کھیلے جانے جیسے سنگین جرائم کو بھی فراموش کیا جا سکتا ہے۔

سفری پابندیوں کا حکم نامہ بحال ،ٹرمپ کا جشن

واشنگٹن(نیٹ نیوز) امریکی سپریم کورٹ نے ٹرمپ کا سفری پابندیوں کا حکم نامہ جزوی طور پر بحال کر دیا ہے۔ فیصلے کے مطابق ایگزیکٹو آرڈر ان غیر ملکیوں پر لاگو نہیں ہوگا جن کا کسی بھی امریکی شخص یا ادارے سے حقیقی تعلق ہے۔ ان افراد کے علاوہ دیگر تمام غیر ملکیوں کو اس حکم نامے پر عمل کرنا ہوگا۔ کیس کی سماعت اکتوبر میں پھر ہوگی۔ سپریم کورٹ نے وائٹ ہاﺅس کی جانب سے پناہ گزینوں پر جزوی پابندی عائد کرنے کی درخواست بھی منظور کر لی ہے۔ امریکی سپریم کورٹ کے ججوں کا کہنا ہے کہ وہ رواں سال اکتوبر میں اس بات کا دوبارہ جائزہ لیں گے کہ آیا صدر ٹرمپ کی اس پالیسی کو جاری رہنا چاہیے یا نہیں۔ واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے انتظامی حکم نامے کے ذریعے 6 مسلمان ممالک سے شہریوں کے امریکہ آنے پر پابندی لگائی ہے جسے وفاقی عدالت نے کالعدم قرار دیا تھا۔ جن ممالک پر پابندی لگائی گئی ہے ان میں ایران، لیبیا، صومالیہ، سوڈان اور یمن شامل ہیں۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ آتے ہی ٹرمپ خوشی سے جھوم اٹھے اور کہا کہ امریکہ مخالف لوگوں کو اب یہاں جگہ نہیں ملے گی۔

کشمیریوں کے حامیوں کو دہشت گرد کہنا ناانصافی ہے، پاکستان

ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی حمایت کرنے والوں کو دہشت گردقراردینا نا انصافی ہے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ ایک سال کے دوران قابض بھارتی فوج نے وادی میں مظالم بڑھا دیے ہیں، کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی حمایت کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دینا ناانصافی ہے۔نفیس زکریا کا مزید کہنا ہے کہ عالمی برادری پاکستان کی قربانیوں کی معترف ہے، پاکستان ہرقسم کی دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پرعزم ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں جنہیں انسانی حقوق کے اداروں نے بھی ریکارڈ کیا ہے، پاکستان مسئلہ کشمیر کا پر امن حل سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق چاہتا ہے۔ترجمان دفترخارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کشمیری 7دہائیوں سے آزادی کی جدو جہد کر رہے ہیں، انہیں حق خودارادیت سے محروم نہیں رکھا جاسکتا۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لیے سیاسی سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔

آئندہ 48گھنٹوں میں مو سم کیسا رہے گا ،محکمہ موسمیات کی حیران کن پیشگوئی

کراچی(ویب ڈیسک) محکمہ موسمیات نے آئندہ 48 گھنٹوں کے دوران کراچی سمیت ملک بھر میں شدید بارشوں کی پیش گوئی کی ہے۔محکمہ موسمیات کی جانب سے جاری کردہ ایڈوائزری کے مطابق آئندہ 48 گھنٹوں کے دوران بالائی پنجاب، زیریں سندھ، خیبر پختونخوا، مشرقی بلوچستان اور کشمیر ریجن میں گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارشوں کا امکان ہے۔محکمہ موسمیات کی جانب سے وارننگ جاری ہونے کے بعد کراچی کے ڈپٹی میئر ارشد وہرہ نے تمام ضلعی عہدے داران اور حکام کو الرٹ رہنے کی ہدایات جاری کردی ہیں جب کہ انہیں عید کے تیسرے روز یعنی 28 جون کو میئر کے دفتر میں طلب کرلیا ہے۔

ملک بھر میں عید الفطر مذہبی جو ش و جذبے سے منائی گئی

لاہور‘ اسلام آباد‘ کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) ملک بھر میں عیدالفطر مذہبی جوش و جذبہ اور عقیدت و احترام سے منائی گئی۔ دن کا آغاز ملک کی سلامتی اور ترقی و خوشحالی کیلئے خصوصی دعاﺅں سے ہوا۔ ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں، قصبوں اور دیہات میں کھلے مقامات، مساجد اور عیدگاہوں میں عیدالفطر کے اجتماعات ہوئے جن میں لاکھوں فرزندان اسلام نے شرکت کی۔ علماءکرام نے عیدالفطر کے اجتماعات میں عیدالفطر کی اہمیت کو اجاگر کیا اور معاشرہ کے غریب و مستحق طبقات کو بھی عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ رواں سال سانحہ پارا چنار اور احمد پور شرقیہ نے قوم کو سوگوار کر دیا اور سادگی سے عید منائی گئی۔صوبائی دارالحکومت لاہور میں سوموار کو عیدالفطر کے اجتماعات میں لاکھوں فرزندان اسلام نے شرکت کی۔ عیدالفطر کے بڑے اجتماعات تاریخی بادشاہی مسجد‘مسجد دربار حضرت علی ہجویریؒ ‘مسجد وزیر خان‘ شالیمار باغ‘ یونیورسٹی گراﺅنڈ ‘مرکزی عیدگاہ‘جامعہ اشرفیہ‘جامعہ نعیمہ سمیت متعددمقامات پر ہوئے۔ عیدالفطر کے موقع پرمساجد، عید گاہوں اور امام بارگاہوں کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات رہی جبکہ بڑی عیدگاہوں پر نمازیوں کو واک تھرو گیٹس سے اندر جانے کی اجازت دی گئی۔عیدالفطر کے موقع پر اہم عوامی مقامات، تفریح گاہوں اور پارکوں کے باہر بھی پولیس کی اضافی نفری تعینات کی گئی تھی۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی 500 سے زائد جامعہ مساجد اور امام بارگاہوں میں عیدالفطر کے اجتماعات منعقد ہوئے۔ سب سے بڑا اجتماع فیصل مسجد میں ہوا۔ صدر مملکت ممنون حسین نے بھی فیصل مسجد میں نماز عید ادا کی۔ عیدالفطر کی نماز کیلئے اسلام آباد کے تمام سیکٹرز اور دیہی علاقوں کی جامعہ مساجد اور امام بارگاہوں میں صبح ساڑھے 6 بجے سے ساڑھے 7 بجے کے دوران کے مختلف اوقات مقرر کئے گئے تھے۔ سکیورٹی کی صورتحال کے پیش نظر اس مرتبہ کھلے مقامات پر نماز عید کی ادائیگی کی اجازت نہیں تھی۔ عیدالفطر کی ادائیگی کے موقع پر شہر کے داخلی و خارجی راستوں اور مختلف چوک چوراہوں اور عیدگاہوں اور تجارتی مراکز کے گرد و نواح سکیورٹی انتہائی چوکس تھی۔ راولپنڈی میں بھی عید الفطر مذہبی عقیدت و احترام اور جوش وجذبے سے منائی گئی ۔دن کا آغاز عید کے خصوصی خطبات سے کیا گیا جن میں امت مسلمہ کے اتحاد کی ضرورت پرزور دیا گیا اور ملکی ترقی و خوشحالی کی خصوصی دعائیں کی گئیں۔ راولپنڈی میں عید کے بڑے اجتماعات عیدگاہ شریف، لیاقت باغ، مرکزی عیدگاہ گوالمنڈی، سپورٹس کمپلیکس لیاقت باغ، میونسپل سٹیڈیم ،صادق آباد ،مدنی مسجد ،خیابان سرسید ،ریلوے گراﺅنڈ ڈھوک حسو،جامعہ اسلامیہ صدر، گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج اصغر مال اور علی مسجد سیٹلائٹ ٹاﺅن میں منعقد ہوئے ۔کراچی میں بھی عیدالفطر مذہبی جوش و جذبے سے منائی گئی۔ شہر کے مختلف علاقوں میں نماز عید کے اجتماعات منعقد کئے گئے۔ گورنر سندھ محمد زبیر، ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ، کاروباری و تجارتی شخصیات سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے نماز عید پولو گراﺅنڈ میں ادا کی۔ نماز کی ادائیگی کے بعد ملک میں امن و امان، خوشحالی اور استحکام کے لئے دعائیں مانگی گئیں۔ عید الفطر کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

بھارت نے چین کیساتھ نیا محاذ کھول دیا

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک) سرحدی تنازع پر چین اور بھارت میں کشیدگی بڑھ گئی۔ چین نے سکم میں نتھولعل گزرگاہ بند کر دی۔ نتھولعل گزرگاہ بند ہونے سے بھارتی زائرین پرانی گزرگاہ سے جائیں گے۔ بھارتی فوج نے سرحد کے اندر گھس آنے کے بعد نتھو لعل گزرگاہ بند کی۔ بھارتی فوج نے چینی سرحد کے اندر گھس کر روڈ کی تعمیر روکنے کی کوشش کی۔ سرحدوں کے اندر بھارت کو ترقیاتی کام روکنے کا حق نہیں۔ ادھر چین کا بھارت سے سرحدی خلاف ورزی پر باضابطہ احتجاج۔ چینی وزارت خارجہ کے مطابق بھارتی سرحدی گاﺅں تبت میں گھس آئے۔ علاقائی خودمختار پر مو¿قف واضح ہے۔ بھارت سرحدی خلاف ورزی میں ملوث اہلکاروں کے خلاف اقدامات کرے۔

ٹرمپ نے مودی کو گود لے لیا

واشنگٹن، اسلام آباد (نیٹ نیوز) نریندر مودی کو خوش کرنے کی کوشش کرتے ہوئے امریکا نے حزب المجاہدین کے سربراہ سید صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دیدیا ہے۔ محکمہ خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ سید صلاح الدین کی تنظیم حزب المجاہدین نے مقبوضہ کشمیر میں کئی مبینہ دہشت گرد کارروائیوں کی ذمے داری قبول کی تھی اور مقبوضہ کشمیر کو بھارتی فوج کا قبرستان بنانے کی دھمکی دی تھی۔ امریکی محکمہ خارجہ کے مطابق حزب المجاہدین کے سربراہ سید صلاح الدین کا اصل نام محمد یوسف شاہ ہے۔ امریکا نے حزب المجاہدین کے سربراہ کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کا اعلان بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کے موقع پر کیا ہے۔ دریں اثناءنریندر مودی کے دورہ¿ امریکا کےخلاف کشمیریوں اور سکھ کمیونٹی نے وائٹ ہاو¿س کے باہر مظاہرہ کیا اور بھارتی وزیراعظم کے خلاف نعرے بازی کی۔ علاوہ ازیں ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی حمایت کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دینا ناانصافی ہے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں۔ ترجمان دفترخارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کشمیری 7 دہائیوں سے آزادی کی جدوجہد کررہے ہیں، انہیں حق خودارادیت سے محروم نہیں رکھا جاسکتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لیے سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔ ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ ایک سال کے دوران قابض بھارتی فوج نے وادی میں مظالم بڑھا دیئے ہیں۔ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی حمایت کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دینا ناانصافی ہے۔ نفیس زکریا کا مزید کہنا ہے کہ عالمی برادری پاکستان کی قربانیوں کی معترف ہے، پاکستان ہر قسم کی دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پُرعزم ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں جنہیں انسانی حقوق کے اداروں نے بھی ریکارڈ کیا ہے۔ پاکستان مسئلہ کشمیر کا پُرامن حل سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق چاہتا ہے۔ اس کے علاوہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ ٹرمپ سے دہشت گردی اور انتہا پسندی پر بات چیت کی گئی، دہشت گردی کے خلاف انٹیلی جنس کو بڑھائیں گے، افغانستان میں امن کے لیے امریکا کے ساتھ تعاون کریں گے۔ امریکی صدر ٹرمپ سے ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب میں نریندر مودی کا کہنا تھا کہ امریکا اور بھارت نے میری ٹائم سکیورٹی اور دفاعی صلاحیت بڑھانے پر بات چیت کی۔ بھارتی وزیراعظم نے مزید کہا کہ ان کے اور ٹرمپ کے وژن میں کوئی فرق نہیں۔ مودی کی جانب سے ٹرمپ کو دورہ¿ بھارت کی دعوت بھی دی گئی۔ قبل ازیں امریکی صدر ٹرمپ اپنے خطاب میں کہنا تھا کہ امریکا اور بھارت دہشت گردی کا شکار ہیں۔ دونوں ممالک دہشت گرد تنظیموں اور انتہا پسند نظریات کے خاتمے کے لیے پُرعزم ہیں، اسلامی انتہا پسندی کا خاتمہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے دونوں ممالک فوجی تعاون بڑھانے پر دن رات کام کررہے ہیں۔ آئندہ ماہ بھارت، امریکا اور جاپان کی بحری افواج بحرہند میں مشترکہ فوجی مشقیں کریں گی۔ ٹرمپ نے بھارت کو امریکا کا سچا دوست قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکا اور بھارت کے درمیان اس وقت بہترین تعلقات ہیں۔ امریکا اور بھارت کو دہشت گردی کے مشترکہ خطرات کا سامنا ہے۔ امریکی صدرکا افغانستان کی تعمیر و ترقی میں بھارتی کردار کو سراہتے ہوئے کہنا تھا کہ امریکا اور بھارت دُنیا کے لیے تعمیر و ترقی کی مثال بن سکتے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی صدر نے افغانستان میں بھارتی اثرورسوخ اورپاکستان کیخلاف سازشیں کرنے پر بھی مودی کو امریکی انتظامیہ نے شاباش دی اور بھارت کو 2ارب ڈالرکے 22 ڈرون سمیت بھاری اسلحہ دینے کا بھی اعلان کردیا۔