All posts by asif azam

https://www.facebook.com/asif.azam.33821

ترسیلات زر میں 10، غیر ملکی سرمایہ کاری میں 70 فیصد اضافہ

اسلام آباد( ویب ڈیسک ) وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ رواں مالی سال کے 6 ماہ کے دوران اوور سیز پاکستانیوں کی جانب سے بھجوائی جانیوالی ترسیلات زر میں 10 فیصد اضافہ اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں سترہ فیصد اضافہ ہوا ہے اورملک کے اقتصادی اعشاریے حکومت کی بہتر کارکردگی اور درست سمت کا اظہار ہے۔
وزارت خزانہ کی جانب سے گذشتہ روز یہاں سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار وزارت خزانہ کے ترجمان خاقان نجیب نے گذشتہ چھ ماہ کی اقتصادی صورتحال کے حوالے سے یہاں سے جاری کردہ اپنے بیان میں کیا۔
ترجمان وزارت خزانہ کا مزید کہنا ہے کہ موجودہ حکومت کے گذشتہ چھ ماہ کے دوران ملک میں اقتصادی اعشاریئے بہتر ہوئے ہیں جو حکومت کی بہتر کارکردگی اور درست سمت کی عکاسی کرتے ہیں انھوں نے کہا کہ رواں مالی سال 2018-19 کے پہلے چھ ماہ کے دوران بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کی جانب سے بھجوائی جانیوالی ترسیلات زر میں دس فیصد اضافہ ہے جبکہ غیر ملکی سرمایہ کاری کی شرح میں 17فیصد اضافہ ہوا ہے۔
اس کے علاوہ رواں مالی سال کی پہلی ششہاہی کے دوران تجارتی خسارے میں پانچ فیصد کمی واقع ہوئی ہے جبکہ ملکی برا?مدات میں دو فیصد اضافہ اور درا?مدات میں دو فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔
ترجمان وزارت خزانہ کا مزید کہنا ہے کہ حکومت کی کوششوں کے نتیجے میں پچھلے سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کی پہلی ششماہی کے دوران تجارتی خسارہ میںبھی4.4 فیصد کمی ہوئی ہے۔

امریکی صدر کی شٹ ڈاؤن کے خاتمے کیلئے ڈیمو کریٹس کو نئی پیش

واشنگٹن (ویب ڈیسک ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شٹ ڈاو¿ن کے خاتمے کیلئے ڈیمو کریٹس کو نئی پیش کر دی۔
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکا میں طویل ترین شٹ ڈاو¿ن جاری ہے، وائٹ ہاو¿س میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پریس بریفنگ کے دوران کہا وہ عارضی اسٹیٹس امیگرینٹس کے ویزوں میں تین سال کی توسیع کیلئے تیار ہیں۔
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پیشکش دی کہ وہ 7 لاکھ ڈاکا امیگرینٹس کو مزید 3 سال کیلئے پرمٹ جاری کرنے پر تیار ہیں، ڈیمو کریٹس اگر یہ پیشکش قبول کر لیں تو شٹ ڈاو¿ن ختم ہو جائے گا۔
دوسری طرف امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پلوسی نے ٹرمپ کی پیشکش مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ نے ڈریمز، ٹی پی ایس امیگرنٹس کے مسائل کا مستقل حل پیش نہیں کیا۔
واضح رہے امریکا میں حکومت اور اپوزیشن میں اختلافات کے باعث وفاقی حکومت کا بجٹ منظور نہ ہونے کی وجہ سے جزوی شٹ ڈاو¿ن ہوگیا ہے جو تقریباً گزشتہ ایک ماہ سے جاری ہے۔

سبزیوں پر مشتمل غذا سے عالمی بھوک کا خاتمہ ممکن ہے، رپورٹ

واشنگٹن (ویب ڈیسک )اس وقت دنیا میں اربوں کی آبادی ہے اور کروڑوں افراد شدید غذائی قلت کا شکار ہیں، ماہرین نے اس کا واضح حل پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت بڑے پیمانے پر غذائی عادت بدل کر گوشت میں کمی اور سبزیوں کی جانب راغب ہونا ہوگا تاکہ بڑھتی ہوئی آبادی کو صحت مند اور سیر رکھا جاسکے۔
ممتاز طبی جریدے لینسٹ میں شائع ایک تفصیلی رپورٹ بعنوان ’ عظیم غذائی تبدیلی: ناقص عالمی غذائی نظام میں بہتری‘ شائع ہوئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ایک جانب تو ایک ارب افراد پیٹ بھر کھانے سے محروم ہیں تو دوسری جانب دو ارب افراد غلط انداز سے کھائے چلے جارہے ہیں اس روش کو بدل کر سیارہ زمین پر غذائی دباو¿ کو کم کیا جاسکتا ہے۔
اس رپورٹ میں 16 ممالک کے 37 ماہرین نے حصہ لیا جو صحت، غذا، ماحول اور دیگر شعبوں سے تعلق رکھتےہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پوری دنیا میں گوشت کھانے میں 50 فیصد کمی اور سبزیوں اور پھلوں وغیرہ کے استعمال میں 100 فیصد اضافہ بہت ضروری ہے۔

اس پر عمل کرکے سالانہ ایک کروڑ 16 لاکھ جانیں بچائی جاسکتی ہیں اور عالمی ا?بادی کا پیٹ بھرا جاسکتا ہے کیونکہ 2050ئ تک دنیا کی ا?بادی دس ارب تک جاپہنچے گی تاہم اس میں بہت فرق ہے مثلاً امریکا اور کینیڈا میں لوگ تجویز کردہ سرخ گوشت کی ساڑھے 6 گنا زائد مقدار کھا رہی ہے جبکہ جنوبی ایشیا کے لوگ اس کی نصف مقدار ہی استعمال کررہے ہیں۔
پوری دنیا کے لوگ نشاستے والی اشیا (ا?لو، شکرقندی اور کساوا) کی ضرورت سے زائد مقدار کھارہے ہیں جو تجویز کردہ غذائی چارٹ سے ایشیا میں ڈیڑھ گنا اور افریقا میں ساڑھے 7 گنا زائد ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ عالمی ا?بادی میں غلط انداز سے غذا کھانے کا رجحان عروج پر ہے۔
لینسٹ کے مطابق بالغ افراد کے لیے روزانہ 2500 کیلوریز والی غذا کھانا ضروری ہے جن میں سرخ گوشت صرف 14 گرام یا 58 گرام مرغی کا گوشت یا پھر 100 گرام مچھلی بہت ہے جبکہ 100 گرام ڈیری مصنوعات، دودھ ، لسی اور پنیر وغیرہ بھی اسی غذائی چارٹ کا ایک حصہ ہے لیکن ضروری ہے کہ روزانہ 300 گرام سبزیاں کھائی جائیں جن میں پتے والی، سرخ یا نارنجی رنگ کی سبزیاں شامل ہیں۔
ماہرین نے شکر سے جان چھڑانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ صرف 30 گرام شکر روزانہ کے لیے بہت کافی ہے۔ اس کے علاوہ ا?لو کی مقدار 39 گرام روزانہ تک محدود ہونی چاہیے۔
ان ہدایات کی روشنی میں ماہرین نے غذائی عادات کو مکمل طور پر تبدیل کرنے پر زور دیا ہے تاکہ غذائی پیداوار کے لیے کرہ ارض پر پڑنے والے بوجھ کو کم کیا جاسکے۔ اس وقت جو غذا ہم کاشت کررہے ہیں وہ گرین ہاو¿س گیسوں کے اخراج کی 30 فیصد ، پانی کے استعمال میں 70 فیصد اور زمین کے استعمال کی 40 فیصد وجہ بن رہی ہے۔

اب گاڑیوں کے وائپر بھی سیلاب سے خبردار کرسکتے ہیں

مشی گن( ویب ڈیسک ) اب کاروں پر گرنے والے بارش کے پانی اور وائپر کی صفائی کی شرح سے برسات کی ٹھیک ٹھیک پیمائش اور شہری سیلاب (اربن فلڈ) کی پیشگوئی کی جاسکتی ہے۔
یہ دلچسپ تجربہ امریکی شہر این ا?ربرمیں کیا گیا جس میں کاروں کی اسکرین سے پانی صاف کرنے والے وائپروں پر لگے سینسر اور ڈیش بورڈ پر رکھے کیمرے استعمال کرکے برسات کا ڈیٹا حاصل کیا گیا۔ تجرباتی طور پر 70 گاڑیوں میں یہ نظام لگایا گیا۔
اس ساری کوشش کا مقصد یہ ہے کہ سڑکوں پر چلنے والے کاروں سے حقیقی وقت میں بارش کی مقدار کا درست ڈیٹا حاصل کیا جائے۔ اس طرح کسی شہر میں سیلاب کے خطرے کی پیشگوئی میں مدد ملے گی کیونکہ شہری سیلاب سے املاک، انفرا اسٹرکچر اور ماحول کو شدید نقصان پہنچتا ہے۔ اسی بنا پر یونیورسٹی ا?ف مشی گن کے پروفیسر برانکو کارکیز اور ان کے ساتھیوں نے یہ اسمارٹ سسٹم تیار کیا ہے۔

گاڑیوں میں لگے خود کار سینسر اور کیمرے سے ملنے والا ڈیٹا بارش کی وہ معلومات دے سکتا ہے جو اس سے قبل کبھی ممکن نہیں تھا۔ یہ موسمیاتی ریڈار سے بھی مو¿ثر انداز میں ہماری معلومات میں اضافہ کرکے اس ضمن میں معلومات کے خلا کو پر کرسکتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ موسمیاتی ریڈار ایک میل کے چوتھائی حصے کی خبر دیتا ہے اور وائپر ہر سیکنڈ پر بعد چند میٹر تک میں ہونے والی بارش کی خبر دے سکتے ہیں۔
ہم جانتے ہیں کہ پوری دنیا میں موسم کا مزاج بگڑ رہا ہے اور بارشوں کی شدت میں اضافہ ہورہا ہے۔ اس طرح وائپر سینسر اور دیگر ا?لات کے ذریعے ہر کار کو ایک موسمیاتی اسٹیشن میں بدلا جاسکتا ہے۔ صرف پاکستان کے بالائی علاقوں میں ہی بارشوں کی شدت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے اس ضمن میں جلد یا بدیر ایسے ا?لات کی ضرورت بڑھتی جائے گی۔
اگر یہ سینسر شہر بھر میں ہر جگہ لگائے جائیں تو یہ ایک مہنگا نسخہ ہوگا لیکن گاڑیوں پر لگانے میں اس کا خرچ کم ہوجاتا ہے اور یوں کئی شہر ا?پس میں بارشوں کے ڈیٹا نیٹ ورک سے جوڑے جاسکتے ہیں۔

چینی کمپنی کی ملازموں کو سڑک پر ہاتھ پاؤں کے بل چلنے کی سزا

بیجنگ (ویب ڈیسک ) چینی صوبے شینڈونگ کی کمپنی نے اپنے ملازموں کی خراب کارکردگی پر انہیں شرم ناک سزا کے طور پر سڑکوں پر رینگنے پر مجبور کردیا۔کمپنی نے اپنے 6 ملازمین کو سیلز کا ہدف پورا نہ کرنے پر سڑکوں پر ہاتھوں اور گھٹنوں کے بل چلنے کو کہا، اس کی ویڈیو آنے پر سوشل میڈیا کی جانب سے اس فعل پر شدید تنقید کی جارہی ہے۔چینی شہر زاو¿ زوانگ میں یہ واقعہ 14 جنوری کو پیش آیا جس میں خواتین سمیت چھ ملازمین کو چاروں ہاتھ پاو¿ں پر سڑک کنارے رینگتا دیکھا جاسکتا ہے جسے دیکھ کر لوگ حیران رہ گئے۔ ایک شخص کمپنی کا پرچم لیے آگے بڑھ رہا ہے۔ رینگنے والے افراد نے دفتر کا لباس پہنا ہوا ہے اور کسی قسم کا کوئی حفاظتی انتظام نہیں کیا گیا۔پولیس جائے وقوع پر پہنچی تو اس وقت تھکے ہوئے ملازمین ہانپ رہے تھے۔ تفتیش سے معلوم ہوا کہ یہ ایک کاسمیٹک کمپنی ہے اور اسے وقتی طور پر بند کرکے تحقیقات کی جارہی ہیں تاہم کمپنی کے ترجمان نے کہا کہ وہ اس عمل سے صرف ملازمین کو کام کرنے کی ترغیب دے رہے تھے۔واضح رہے کہ چین میں کمپنیاں اپنے ملازموں کی ناقص کارکردگی پر عجیب و غریب سزا دینے کی شہرت رکھتی ہیں۔ اس سے قبل ایک کمپنی نے اپنے ملازمین کو ہدف پورا نہ کرنے پر کڑوا مشروب پینے پر مجبور کیا تھا جبکہ ایک اور کمپنی کے ملازموں نے سزا کے طور پر مجبوراً لال بیگ بھی کھائے تھے۔

48 فیصد عوام نے پنجاب حکومت کی کارکردگی کو تسلی بخش قرار دیدیا

لاہور (وائس آف ایشیا) تحریک انصاف کے اقتدار میں آنے کے بعد سے ہی حکومت کو کئی طرح کے اسکینڈلز اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ ڈی پی او پاکپتن کا تبادلہ سے لے کر آئی جی اسلام آباد کے تبادلے تک حکومتی نمائندے عدالت کے روبرو بھی پیش ہوئے۔ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے بارہا حکومت کی سادگی پالیسی کی دھجیاں بھی ا±ڑائیں، اسی وجہ سے ان سب میں پنجاب حکومت اور وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو عوام کی جانب سے خاصی تنقید کا سامنا رہا جس کی وجہ سے خیال کیا جا رہا تھا کہ پنجاب حکومت عوام کو مطمئن کرنے اور عوام کی خدمت کرنے میں ناکام ہو گئی ہے لیکن حقیقت اس کے برعکس ہے۔ پنجاب کی 48 فیصد عوام نے صوبائی حکومت کی کارکردگی کو تسلی بخش قرار دے دیا ہے جس کے تحت یہ کہنا غلط نہیں ہو گا کہ اقتدار میں آنے کے تقریباً 5 ماہ بعد ہی صوبائی حکومت عوام کو کافی حد تک مطمئن کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔ پنجاب کے 48 فیصد عوام نے صوبائی حکومت کی کارکردگی کو تسلی بخش جبکہ 35 فیصد عوام نے صوبائی حکومت کی کارکردگی کو ناقص قرار دیا۔ صوبائی حکومت کی کارکردگی کے حوالے سے کروائے جانے والے اس حالیہ سروے میں 14 فیصد عوام غیر جانبدار رہی۔ پنجاب حکومت کی کارکردگی کے بارے میں گیلپ پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے سروے کے دوران پنجاب کے 48 فیصد عوام نے حکومت کی کارکردگی کو تسلی بخش قرار دیا ہے اسی طرح پورے ملک کے 43 فیصد عوام نے بھی پنجاب حکومت کی کارکردگی کو تسلی بخش قرار دیا ہے۔ جس سے صاف ظاہر ہے کہ عوام پنجاب میں تبدیلی آنے پر کسی حد تک مطمئن ہے اور صوبائی حکومت کو مزید کام کرنے اور عوام کی خدمت کرنے کا موقع دینا چاہتی ہے۔

سی پی این ای کا”پاکستان میڈیا کنونشن“ کی کامیابی پر اطمینان کا اظہار

اسلام آباد (پ ر) سی پی این ای نے اسلام آباد میں منعقد کئے گئے ”پاکستان میڈیا کنونشن2019 ئ“ کی کامیابی پر گہری مسرت اور اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کنونشن کے تمام شرکاءکو کنونشن کی زبردست کامیابی پر مبارکباد دی ہے۔ سی پی این ای کے صدر عارف نظامی کی زیر صدارت سٹینڈنگ کمیٹی کے اجلاس میں ”پاکستان میڈیا کنونشن2019 ئ“ کے انعقاد کا جائزہ لیتے ہوئے صدر ڈاکٹر عارف علوی، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد حسین چوہدری، خیبرپختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی، مسلم لیگ (ن) کی رہنماءمریم اورنگزیب، پیپلزپارٹی کے رہنماءسید نیئر حسین بخاری، بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنماءسینیٹر انوارالحق کاکڑ سمیت تمام سیاسی پارٹیوں کے رہنماو¿ں، اورینٹ ایڈورٹائزنگ کے سربراہ سید مسعود ہاشمی اور برین چائلڈ کے چیئرمین ریحان مرچنٹ ، کراچی پریس کلب کے صدر امتیاز خان فاران، کوئٹہ پریس کلب کے صدر رضا رحمان، لاہور پریس کلب کے صدر ارشاد انصاری اور اسلام آباد نیشنل پریس کلب کے صدر شکیل قرار کا کنونشن میں شرکت پر شکریہ ادا کیا۔ سی پی این ای کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر جبار خٹک نے اجلاس کو بتایا کہ کنونش میں ملک بھر سے پرنٹ، الیکٹرانک اور ڈیجیٹل میڈیا سے وابستہ 200 سے زائد مندوبین نے شرکت کی۔ کنونشن میں میڈیا کی آزادی، صحافتی اخلاقیات، میڈیا قوانین، میڈیا کی معیشت ، جدید میڈیا اور میڈیا کی صفوں میں یکجہتی اور اتحاد سمیت مختلف موضوعات پر مباحثے منعقد کئے گئے جس میں میڈیا کو درپیش زمینی حقائق کی روشنی میں مستقبل کے میڈیا کی منظر کشی بھی شامل تھی۔ مباحثے کے مختلف حصوں میں میڈیا کی آزادی، استحکام اور اقتصادی پائیداری کے لئے نیز میڈیا کو درپیش سنگین مسائل سے نبردآزما ہونے کے لئے میڈیا کی تمام صفوں اور حصوں میں عملاً مربوط روابط اور یکجہتی کی اشد ضرورت کو محسوس کرتے ہوئے ایک اعلان نامہ تیار کیا گیا جسے سی پی این ای کی جانب سے آج (اتوار) کو جاری کیا جائے گا۔اجلاس میں ڈاکٹر جبار خٹک، اعجازالحق، رحمت علی رازی، طاہر فاروق، عارف بلوچ ، عامر محمود، حامد حسین عابدی، عدنان ملک، انور ساجدی، کاظم خان، ارشاد احمد عارف، غلام نبی چانڈیو، عبدالرحمان منگریو، عبدالخالق علی، شکیل احمد ترابی، احمد اقبال بلوچ، مقصود یوسفی، ذوالفقار احمد راحت، احمد شفیق، فقیر منٹھار منگریو، بشیر احمد میمن، خلیل الرحمن، اکمل چوہان،محمود عالم خالد، معظم فخر، محمد طاہر، ممتاز احمد صادق، مظفر اعجاز، شیر محمد کھاوڑ، وقاص طارق فاروق، یحییٰ خان سدوزئی، زبیر محمود خالد، نشید راعی، سید شمس الضحیٰ شاہ، سردار نعیم، حافظ ثناءاللہ، سید سفیر حسین شاہ، امتیاز روحانی، عامر خٹک، منزہ سہام اور زاہدہ عباسی سمیت سی پی این ای کے اراکین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

ترجمان سی ٹی ڈی نے اپنے بیان میں غلط کارروائی کا خود پول کھول دیا

لاہور (خصوصی ر پورٹر) ترجمان سی ٹی دی کے بیان میں غلطی سے کارروائی کا پول کھل گیا، ترجمان نے بیان میں کہا کہ ساہیوال واقع میں دو خواتین سمیت چار دہشت گرد مارے گئے کارروائی سولہ جنوری کو فیصل آباد میں ہونے والے آپریشن کا حصہ تھی جس میں دہشت گرد عبدالرحمن اور شاہد جبار ہلاک ہوگئے تھے ساتھ ہی کہہ دیا کہ ساہیوال میں کارروائی کے دوران چار دہشت گرد ہلاک اور شاہد جباا میں ملوث تھے اور پنجاب میں داعش کے سب سے خطر ناک دہشت گرد ہیں۔

18سالہ حسینہ نے مس بلجیم کا تاج سر پر سجالیا

برسلز (شوبزڈیسک ) بلجیم کے دار الحکومت برسلز میں 51ویں سالانہ مقابلہ حسن کا انعقادکیا گیا،مقابلے میں شرکت کرنے کیلئے ملک کے مختلف حصوں سے آنیوالی 30حسیناﺅں نے حصہ لیا۔مختلف راﺅنڈز میں تقسیم اس مقابلے کے فائنل راﺅنڈ کیلئے 8 حسیناﺅں کا انتخاب کیا گیا جبکہ ججز اور حاضرین کے متفقہ ووٹ کے بعد 18سالہ ایلینا کاسترو سیرزنامی حسینہ نے’مس بلجیم2019‘کا ٹائٹل حاصل کرکے تاج اپنے سر پر سجا لیا۔مقابلہ حسن میں حاضرین کی بھی بڑی تعداد نے شرکت کی جبکہ ٹیلی وژن پر لاکھوں افراد نے یہ ایونٹ براہ راست دیکھا۔

مہوش حیات کی پہلی ویب سیریز ’ ’عنایہ“کا ٹریلر ریلیز

کراچی(شوبز ڈیسک ) پاکستانی اداکارہ مہوش حیات کی پہلی ویب سیریز ’عنایہ‘ کا ٹریلرجاری کردیا گیا جس میں انہیں گلوکارہ کے طور پر دکھایا گیا ہے۔فلم ’کراچی سے لاہور‘ اور ’لاہور سے آگے‘ جیسی کامیاب فلمیں بنانے والے وجاہت رﺅف نے ویب سیریز بنائی ہے۔ جس میں مہوش حیات اور اظفر رحمان نے مرکزی کردار نبھایا ہے۔ویب سیریز کی دیگر کاسٹ میں گل رعنا، رباب ہاشم، اسد صدیقی اور شان بیگ سمیت دیگر اداکار شامل ہیں۔یاد رہے کہ گزشتہ سال مہوش حیات کی فلم ’لوڈ ویڈنگ‘ میں جلوہ گر ہوئی تھیں جو باکس آفس پر کامیاب رہی۔