All posts by asif azam

نقیب اللہ قتل کیس ، سپریم کوررٹ کا بڑا حکم

اسلام آباد(ویب ڈیسک) عدالتِ عظمیٰ نے سابق ایس ایس پی ملیر راو¿انوار کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دے دیا ہے۔سپریم کورٹ میں نقیب اللہ محسود ہلاکت کے ازخود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔ کیس کی سماعت چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کی۔عدالت نے نقیب اللہ محسود کی مبینہ پولیس مقابلے میں ہلاکت میں نامزد مرکزی ملزم سابق ایس ایس پی ملیر راو¿ انوار کو ذاتی حیثیت میں طلب کرتے ہوئے وزارتِ داخلہ کو حکم دیا کہ راو¿انوار کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈالا جائے جب کہ عدالت نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ اور کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے ممبران کو بھی طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 27 جنوری تک ملتوی کردی۔ چیف جسٹس کا کہنا ہے کہ کیس کی سماعت کراچی رجسٹری میں ہوگی۔

امریکہ کی انوکھی منطق ، ایسا مطالبہ کے سب ششدر رہ گئے

واشنگٹن( مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ نے کہا ہے کہ پاکستان طالبان لیڈروں کوفوری طور پر گرفتار یا بے دخل کرے، وائٹ ہاو¿س سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ طالبان گروپ کو پاکستانی سرزمین استعمال کرنے سے روکا جائے۔

شریفوں کی چیخیں کس پر نکلیں،سابق صدر نے حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے کہا ہے کہ شریفوں کی کرپشن پاکستان تک محدود نہیں ان کی کرپشن بین البراعظمی ہے۔لاہور میں پارٹی رہنماو¿ں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سابق صدر ا?صف زرداری کا کہنا تھا کہ شریفوں کا احتساب تو ابھی شروع ہی نہیں ہوا صرف نوٹس پر ہی ان کی چیخیں نکل گئیں، یہ اس لیے چیخ رہے ہیں کیوں کہ ان کی کرپشن کا عالمی نیٹ ورک بے نقاب ہونے والا ہے۔سابق صدر آصف زرداری کا کہنا تھا کہ ہم نے کئی دہائی تک احتساب کے نام پر ان کا انتقام برداشت کیا ہم نے نیب کو بھی بھگتا اور نواز شریف کے احتساب الرحمان کا بھی مقابلہ کیا لیکن ان کا تو ابھی تک ناخن ہی نہیں کھینچا گیا اور نہ انہیں ہتھکڑی لگی ہے۔

 

وزیر داخلہ اور چیئرمین نیب کے درمیان تنازعہ شدت اختیار کر گیا

اسلام آباد (آن لائن) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا نام (ای سی ایل) میں ڈالنے کے معاملے پر وزیر داخلہ اور چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کے مابین نیا تنازعہ پیدا ہوگیا ہے۔ چیئرمین نیب کا خط مسترد کرتے ہوئے وزارت داخلہ نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا نام ایگزکٹ کنٹرو لسٹ (ای سی ایل) میںڈالنے سے انکار کردیا ہے جس کی روشنی میں چیئرمین نیب جاوید اقبال نے سیکرٹری داخلہ کو دوبارہ خط لکھ کر اسحاق ڈار کانام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش کی ہے۔ آن لائن کو ذرائع نے بتایا کہ وزارت داخلہ نے اسحاق ڈار کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کی بجائے نیب سے مزید وجوہات طلب کی ہیں اور نیب کے خط میں دی گئی وجوہات وزارت داخلہ نے مسترد کردی ہیں جس کی روشنی میں نیب اور حکومت کے مابین مزید اختلافات کی خلیج بڑھتی جارہی ہے۔ نیب ذرائع نے بتایا کہ عدالت عالیہ نے بھی اسحاق ڈار کے خلاف دیا گیا حکم امتناعی پہلے ہی خارج کردیا ہے اور ملزم اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت کو سماعت جاری رکھنے کی ہدایت اور اجازت دے دی ہے۔

نواز شریف کا چوہدری نثار سے ملاقات سے انکار ، وجہ جان کر سب حیران

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) چودھری نثاراور پرویز رشید کے درمیان سردجنگ ختم کرانے کوششیں ناکام ہو گئیں۔ سابق وزیراعظم نواز شریف نے بھی چوہدری نثار سے ملاقات کرنے سے انکارکردیا۔ ذرائع کے مطابق راولپنڈی میں پرویز رشیدکیخلاف مظاہروں پرسابق وزیراعظم نواز شریف سخت نالاں ہیں۔ نواز شریف نے اچانک چودھری نثار علی سے ملاقات منسوخ کردی ہے۔ ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ وزیراعلی پنجاب دونوں رہنماں کے درمیان دوبارہ مصالحت کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ اگر شہباز شریف کامیاب رہے تو نواز، نثار ملاقات جلد ہوگی۔

 

بھٹو قبر سے حکومت کرتے رہے ، اہم رہنماءبھی مان گئے

اوکاڑہ (آئی این پی ) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنماءوفاقی زیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ جو ہم سے استعفیٰلےنے آیا وہ اپنا زبانی استعفیٰ دے کر دوبئی چلا گیا یہ ابھی استعفیٰ نہیں دے گا، 31 جنوری کے بعد دے گا شیخ رشید میں اتنی طاقت نہیں کہ وہ ابھی اپنا استعفیٰ دے، یہ بزدل ہے اس کو معلوم ہے کہ اگر 31 جنوری سے پہلے استعفیٰ دیتا ہے تو اسکی سیٹ پر ضمنی الیکشن ہوگا اگر 31 جنوری کے بعد دے گا تو الیکشن نہیں ہوگا۔ ان خیالات کا اِظہار انہوں نے پیر کو اوکاڑہ میں اوکاڑہ ریلوے اسٹیشن اسٹیٹ آف آرٹ کا افتتاح کرتے ہوئے کیا اس موقع پر جلسے سے پارلیمانی سیکرٹری عاشق کرمانی، ایم این اے چوہدری ریاض الحق جج، میاں محمد منیر، راو¿ اجمل، چوہدری ندیم عباس ربیرہ نے بھی خطاب کیا۔ پی پی پی کے قائد ذوالفقار علی بھٹو کو جب پھانسی لگی تو وہ غلط فیصلہ تھا وہ قبر سے بھی حکومت کرتا رہا بھلا ہو زرداری کا جس نے پی پی پی کو ختم کر دیا ہم نے خان صاحب کے استعفوں کو گلے سے لگایا جب انہوں نے دھرنے کے دوران استعفیٰ دیے اور ہم نے منظور نہیں کیے کیونکہ ہم نہیں چاہتے تھے کہ یہ در بدر رہوں ہم کسی کو لعنتی نہیں کہتے یہ لوگ ووٹ بھی لیتے ہیں اور لعنتی بھی بنتے ہیں ہم نے خدا کو جان دینی ہے ہم کوئی فرشتے نہیں کہ ہم سے غلطی نہ ہو ہم نے جو وعدے کیے وہ الحمد اللہ پورے کر دیے ہیں۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ قادر آباد کا پاور پلانٹ بنا نہیں بلکہ اُگاہ ہے ہم نے لوڈشیڈنگ کو ختم کیا سی این جی فلنگ اسٹیشنوں کی لمبی لمبی قطاروں کو ختم کیا اُنہوں نے ایک بار پھر اپنے کارکنوں کو تاکید کی کہ کسی مخالف کو لعنتی نہیں کہنا اپنے اخلاق اور اپنے کردار سے جواب دینا ہے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ چار ماہ الیکشن میں رہ گئے ہیں وہ خیبرپختونخواہ پر توجہ دیں ورنہ یہ صوبہ بھی آپکے ہاتھ سے نکل جائےگا۔

شیخ رشید کی دھماکے دار انٹری

اسلام آباد(آئی این پی) عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمدآج اہم پریس کانفرنس کریں گے پریس کانفرنس میں کئی اہم اعلانات متوقع ہیں تفصیلات کے مطابق عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد آج (منگل) کو نیشنل پریس کلب میں دن 3بجے اہم پریس کانفرنس کریں گے۔

چئیرمین نیب کی اپنوں کیخلاف کاروائی نے سب کی آنکھیں کھول دیں

اسلام آباد (آن لائن) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے خلاف ایل این جی کرپشن سکینڈل کی راولپنڈی سے کراچی نیب کو ٹرانسفر کرنے پر چیئرمین نیب نے ڈائریکٹر جنرل نیب راولپنڈی ناصر اقبال سے جواب طلب کرلیا ہے۔ ڈی جی نیب راولپنڈی ناصر اقبال نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے ایل این جی کرپشن سکینڈل کی تحقیقات نیب دائریکٹوریٹ کراچی منتقل کردیں جو کہ ایک قانونی اقدام ہے۔ آن لائن کو ذرائع نے بتایا ہے کہ چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال نے ڈی جی نیب راولپنڈی ناصر قبال کے اس اقدام کو مسترد کرتے ہوئے وضاحت طلب کرلی ہے اور سخت اقدامات کا فیصلہ بھی کیا ہے اور واضح کیا ہے کہ نیب کے اندر نیب بنانے کی اجازت ہر گز نہیں دی جائے گی۔ ایل این جی کرپشن سکینڈل کے بڑے ملزمان میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی‘ سیکرٹری داخلہ ارشد مرزا‘ پی ایس او کے ایم ڈی شیخ اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے علاوہ درجن سے زائد افسران شامل ہیں۔

عمران کا آخری اور بلاول کا پہلا الیکشن،بڑا دعوی سامنے آگیا

خیرپور (این این آئی) پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما نواب خان وسان نے کہا ہے کہ رواں سال بلاول بھٹوکاپہلااورعمران خان کا آخری انتخاب ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق خیرپور کی جیلانی یونین کونسل میں خطاب سے رکن قومی اسمبلی نواب وسان نے کہا ہے کہ ملکی اداروں کے خلاف بات کرنے والوں کی سوچ بھی مجیب الرحمان جیسی ہوگئی ہے، پیپلزپارٹی نوازشریف کو ملکی اداروں کےخلاف بات کرنے نہیں دیگی۔نواز شریف کے حوالے سے نواب وسان نے کہاکہ ملک کیخلاف باتیں کرنے پر نوازشریف کو شرم آنی چاہئے، نوازشریف اب آپ وزیراعظم کے اہل نہیں رہے۔انھوں نے کہا کہ بلاول بھٹو نے کہہ دیا 2018 پیپلزپارٹی کا سال ہے، رواں سال بلاول بھٹو کا پہلا اور عمران خان کا آخری الیکشن ہوگا۔

 

پنجاب میں ڈرگ انسپکڑ سے متعلق رپورٹ نے سب کی آنکھیں کھول دی

خان بیلہ (رپورٹ :ملک جہاں زیب ) صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب کے اکثر اضلاع میں تعینات ڈرگ انسپکٹرز کے کرپشن ،پیشہ ورانہ بد دیانتی ،میڈیکل سٹوروں پر چیکنگ کے بجائے منتھلیاں لینے کا انکشاف ہوا ہے ،سپیشل برانچ کی ایک رپورٹ میں محکمہ صحت کے تمام دعوﺅں کی قلعی کھُل گئی ۔یہ رپورٹ وزیر اعلیٰ پنجاب اور چیف سیکرٹری کو بھیج دی گئی ۔معلوم ہوا ہے کہ صوبے بھر میں جعلی ادویات کے بڑھتے ہوئے کاروبار اور بغیر لائسنس کے میڈیکل سٹوروں میں اضافہ اور جعلی ادویات بنانے والی فیکٹریوں کے خلا ف مو¿ثر کاروائی نہ ہونے کی وجہ سے حکومت کے تمام دعوے دھرے کے دھرے رہ جاتے تھے۔حکومت معیاری ادویات کی فروخت اور جعلی ادویات بنانے والی فیکٹریوں کے خلاف جب بھی کوئی آپریشن کرتی تو اسکے بہتر نتائج سامنے نہیں آتے تھے۔محض کاغذی کارروائی کے بعد تمام معاملہ ٹھپ ہوجاتا تھا ۔پنجاب حکومت نے ڈرگ انسپکٹرز سے پہلے ادویات بنانے والی فیکٹریوں کی انسپکشن کے اختیارات واپس لئے لیکن اس کے باوجود ڈرگ انسپکٹرز کے خلاف شکایات کے انبار لگ گئے ۔ جس پر حکومت نے صوبہ بھر کے تمام اضلاع میں تعینات ڈرگ انسپکٹرز کی خفیہ مانیٹرنگ کروانے کا فیصلہ کیا ۔اس حوالہ سے سپیشل برانچ لاہو ر کو خصوصی ٹاسک دیا گیا ۔ مصدقہ دستاویزات کے مطابق صوبہ بھر میں تعینات 121 ڈرگ انسپکٹرز میں سے 72 ڈرگ انسپکٹرز کرپشن اور دیگر پیسہ ورانہ بد دیانتی میں ملوث پائے گئے ۔جب کہ چنیوٹ،مظفر آباد ،وہاڑی ‘میانوالی ،لودھراں ،ڈیرہ غازی خان ،خوشا ب ،منڈی بہاﺅالدین ،سرگودھا،قصور ،ملتان میں تعینات تمام ڈرگ انسپکٹرز کرپشن میں ملوث پائے گئے ۔لاہو ر میں تعینات 8 میں سے 6 ،شیخوپورہ میں 5 میں سے 4 ،ننکانہ صاحب میں 2 میں سے 1 گوجرانوانہ میں 7 میں سے 6 سیالکوٹ میں 4 میں سے 3 راولپنڈی میں 6 میں سے 3 اٹک میں5 میں سے 1،خانیوال 4 میں سے 1 ،ساہیوال 2 میں سے 1 ،اوکاڑہ میں 3 میں سے 1،بہاول پور 4 میں سے 3 ،بہاول نگر3 میں سے 2 اور رحیم یار خان میں 4 میں سے 3 ڈرگ انسپکٹرز مالی کرپشن میں ملوث پائے گئے ۔مصدقہ دستاویزات کے مطابق لاہور میں جو ڈرگ انسپکٹرز کرپشن میں ملوث ہیں ان میں داتا گنج بخش ٹاﺅن کے محمد جمیل ،گلبرگ ٹاﺅن کے فیصل محمود ،سمن آباد ٹاﺅن کے رانا محمد شاہد ظفر ،کنٹونمنٹ بور ڈ کے کمال سکندر ،شالیمار ٹاﺅن کے رحیم احمد خان اور وہگہ ٹاﺅن ملوک کے انور شامل ہیں۔شیخوپورہ کے عمران انور،تحصیل مرید کے ،کے غلام یٰسین ،شرقپور کے احمد سجال ،فیروز والا کے محمد نور جاوید صفدر آباد میں نادیہ ،ضلع قصور کے رانا ثنا اللہ آصف ،پتوکی کے چودھری شہزاد ،چونیاں کے شیرزمان ،ضلع ننکانہ صاحب کے جاوید اقبال ،سانگلہ ہل کی سعدیہ نذیر ،ضلع گوجرانوالہ کے صالح محمد ،قلعہ دیدار سنگھ کے انیس لقمان ،نندی پور کے عادل مقبول ،گوجرنوالہ ٹاﺅن سے عدیل زین ،وزیر آباد کے عمران خالد ،کموکی کے محسن عزیز ،سیالکوٹ کی نائلہ ا رشاد جن کے متعلق رپورٹ میںکہا گیا ہے کہ یہ اپنے نائب قاصد محمود احمد کے ذریعے منتھلیاں لیتی ہےں ۔سمبڑیال کے محمد عظیم،پسرور کے اویس یونس،ضلع منڈی بہاﺅالدین کے حافظ کفایت اللہ کے متعلق رپورٹ میں لکھا گیا ہے کہ وہ مختلف میڈیکل سٹوروں سے نمونہ جات کی مد میں مہنگی ادویات بھی اٹھا لیتے ہیں جنہیں دیگر من پسند میڈیکل سٹوروں پرفروخت کر دیا جاتا ہے ۔ملکوال کے محمد عبداللہ کے متعلق لکھاگیا ہے کہ ان کے بھائی ظفر اقبال ایک میڈیکل کمپنی کے ڈسٹری بیوٹر ہیں اور جو میڈیکل سٹور ان کی ادویات نہیں لیتے ان کے خلاف چھاپے مارے جاتے ہیں۔ضلع راولپنڈی کے جواد حسین ،پوٹھوہار ٹاﺅن کے نوید انور،مری کے عمر زیب عباسی ،ضلع اٹک کے چودھری عدنان اسلم ،چنیوٹ کے وقار احمد اور توصوف ناصر ،ضلع ملتان بوسن ٹاﺅن کے راﺅ ساجد ،شاہ رکن عالم ٹاﺅن کے عثمان غنی ،شیر شاہ ٹاﺅن کے اسد ابرار ،موسیٰ پاک ٹاﺅن کے جنید ،شجاع آباد کے ڈاکٹر محمد مسعود ،جلال پور ٹاﺅن کے عبدا لرﺅف ،خانیوال کے نوید حسین سرگانہ ،وہاڑی بوریوالہ کے جانسن کامران ،میلسی کے ملک حماد ،وہاڑی شہر کے عمران رشید ،لودھراں کے امیر شاہد ،دنیا پور کے محمد عدنان ،سرگودھا تحصیل ساہیوال کے فہیم ضیاء،بھیرو کے اسرار احمد ،ضلع خوشاب کے چودھری محمد فاروق ،تحصیل نور پور کے عامر حفیظ کے متعلق بتا یا گیا ہے کہ یہ مختلف میڈیکل سٹوروں کو سیل کر کے پھر خود ہی رشوت لیکر انہیں ڈی سیل کر دیتے ہیں اور کم ہی کیس ڈرگ کورٹ کو بھجواتے ہیں۔ضلع میانوالی تحصیل عیسیٰ خیل کے صبیح الرحمٰن کے متعلق بتایا گیا ہے کہ وہ ایک عبدالرحمن نامی کلرک کے ساتھ ملکر جعلی لائسنس بھی بنا تے اور میڈیکل سٹوروں کو دیکر ان سے بھاری معاوضہ وصول کرتے ہیں۔تحصیل میانوالی کے فرقان قریشی کے متعلق بتا یا گیا ہے کہ یہ آفیسر اس سے قبل چکوال میں تعینات تھے ۔ فلائنگ فارما کمپنی کے نام سے ایک جعلی میڈیکل کمپنی بنا کر اپنے عہدہ کا ناجائز فائدہ اٹھا کر جعلی ادویا ت کو میڈیکل سٹورو ں پرفروخت کرتے ہیں۔جس پر ان کے خلاف مقدمہ نمبر 56 اور 04 درج کئے گئے۔پپلاں کے خالد پرویز ملک ،ساہیوال کی مسز صدف کے متعلق بتا یا گیا ہے کہ یہ اتائی ڈاکٹرز کی حوصلہ افزائی کر کے ان سے بھاری رقم وصول کرتے ہیں ۔اوکاڑہ کے شوکت وہاب ،دیپالپور کے ملک عرفان منیر ،ڈیرہ غازی خان کے شاہد محمود ،ذوالفقار علی ،مظفر گڑھ کے محمد رضا شاہد ،علی پور کے عمران پتافی ،کوٹ ادو کے محمد ایاز ،راجن پور کے جاوید اقبال ،تحصیل لیہ کے سعید احمد جوئیہ ،کروڑ کے محمد عامر شکیل ،چوبارہ کے عدنان کمال ،ضلع بہاول پور کے نوید اسلم ،خیر پور ٹامیوالی کے اسرارنیازی ،یزمان کے محمد زبیر ،احمد پور شرقیہ کے زبیر بٹ ضلع بہاول نگر ہارون آباد کے علی رضاء،چشتیاں منچن آباد کے محمد یحیٰ ،ضلع رحیم یار خان کے کرپٹ ترین ڈرگ انسپکٹرز میں مقبول حسین بھٹی ،صادق آباد کے محمد طاہر اور خان پور کے امجد فاروق شامل ہیں۔اس حوالہ سے صوبائی وزیر پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ خواجہ عمران نذیر نے ” خبریں“ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے اس معاملہ سے نپٹنے کیلئے دیرپا پالیسیاں بنائی ہیںاور ڈرگ انسپکٹرز کے کردار کو ختم کیا جارہا ہے اور پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر لاہو ر اور فیصل آباد میں ایک انٹر نیشنل کمپنی کو تمام میڈیکل سٹوروں کی جیو ٹیکنگ اور انسپکشن کی ذمہ دار ی بطور (آﺅٹ سورس) کی جارہی ہے جب کہ دیگر اضلاع میں بھی انسپکشن کی ذمہ داریاں تھرڈ پارٹی کو دی جا رہی ہیں۔لہٰذا حکومت جلد ان ڈرگ انسپکٹرز کو ڈی نوٹیفائی کر دیگی۔انہوں نے کہا کہ جو ڈرگ انسپکٹر کرپشن اور دیگر پیشہ ورانہ بد دیانتی میں ملوث ہےں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی ۔اس حوالہ سے ایڈیشنل سیکرٹری ڈرگ کنٹرول سہیل احمد نے ”خبریں “سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈرگ انسپکٹرز سے مطلوبہ نتائج لینے کیلئے ضروری ہے کہ ان کا سروس سٹرکچر بہتر بنا کر ان کے معاشی معاملات بھی بہتر کئے جائیں۔حکومت پانچ بڑے اضلاع میں نئے فارماسسٹ بھرتی کررہی ہے ۔جن کی ایک لاکھ تک تنخواہیں ہوں گی اور انہیں گاڑیاں بھی دی جائیں گی۔لہٰذا جب تک پرانا کلچر تبدیل نہیں ہوگا نتائج بہتر نہیں آئیں گے۔
ڈرگ انسپکٹر