All posts by asif azam

بھارتی سورماءکی شرمناک کرتو ت ،کرنل نے جونئیر افسر کی بیٹی کو بے آبرو کیسے کیا ،جان کر آپ بھی دنگ رہ جا ئینگے

نئی دہلی (ویب ڈیسک)بھارتی فوج کے کرنل نے دوست کے ساتھ مل کر اپنے جونیئر افسر کی بیٹی کو حوس کا نشانہ بنا ڈالا جس کے بعد پولیس نے لڑکی کی درخواست پر فوجی افسر کو گرفتار کرلیا۔بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق شملہ میں 56 سالہ کرنل نے آرمی ٹریننگ کمانڈ میں تعینات لیفٹینیٹ کرنل کی 21 سالہ بیٹی کو ماڈلنگ کے شعبے میں جگہ دلانے کا جھانسہ دیا اور اپنے گھر بلایا جہاں اس نے دوست کے ساتھ مل کر لڑکی کو اپنی حوس کا نشانہ بنایا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق واقعے کے بعد فوجی افسر نے لڑکی کو دھمکایا کہ اگر اس واقعے کا کسی کو علم ہوا تو وہ اس کے والد کے کیریئر کو تباہ کردے گا لیکن لڑکی نے اسی روز پولیس میں واقعے کی رپورٹ درج کرادی۔پولیس کا کہنا ہےکہ لڑکی کےبیان اور اس کے میڈیکل ٹیسٹ کے بعد ملزم کو گرفتار کرلیا گیا ہے جب کہ واقعے میں ملوث اس کا دوست فرار ہے جس کی گرفتاری کے لیے کارروائی کی جارہی ہے۔پولیس نے حاضر سروس کرنل کو عدالت میں پیش کیا جسے عدالت نے 25 نومبر تک پولیس کی تحویل میں دے دیا۔

 

دنیا سیکنڈوں میں ختم ،،،خوفناک ایٹمی ہتھیار نے پوری دنیا میں دہشت پھیلا دی

اسلام آباد(ویب  ڈیسک)چین کو دنیا جہاں دنیا کی واحد سپر پاور امریکہ کے متبادل پر دیکھ رہی ہے وہیں اب امریکیوں کی بھی ٹانگیں کانپنے لگ گئ ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق چین نے ایک ایسا میزائل بنا لیا ہے جو دنیا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے اس سے قبل ایسا میزائل جس کی زد میں پوری دنیا ہو کسی بھی ملک کے پاس نہیں ہے۔ چینی میزائل کا نام ڈونگ فینگ 41ہے جو ہائپر سانک بیلسٹک راکٹہے جو 12ہزار کلومیٹر دور تک نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے   ۔ اس میزائل کی اہم بات یہ ہے کہ یہ میزائل ایک ساتھ دس ایٹم بم لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے جو مختلف ٹارگٹ کو ایک ساتھ نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ چینی دفاعی ماہرین نے ڈونگ فینگ کے آٹھ کامیاب تجربات کر لئے ہیں اور اب یہ چینی فوج کے حوالے کرنے کے حوالے سے آخری مراحل میں ہے اور جلد ہی اسے چینی فوج کے زیر استعمال دیکھا جا سکے گا۔

چوتھی کوشش بھی ناکام بڑی خبر آگئی،ن لیگ میں کھلبلی

اسلام آباد(ویب ڈیسک)پیپلزپارٹی کے شریک چیرمین آصف زرداری نے نوازشریف سے ملاقات سے انکار کردیا۔میاں نوازشریف نے گزشتہ روز گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ملک اور جمہوریت کے لیے آصف زرداری سے بغیر کسی شرط کے ہاتھ ملانے کو تیار ہیں۔ذرائع کے مطابق آصف زرداری اور نوازشریف کےد رمیان ملاقات کی کوششیں گزشتہ تین سے چار ماہ سے جاری تھیں لیکن یہ چوتھی کوشش بھی ناکام ہوگئی ہے اور آصف زرداری نے نوازشریف سے ملنا یا ہاتھ ملانا خارج از امکان قرار دیدیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ آصف زرداری سمجھتے ہیں کہ موجودہ ملکی سیاسی صورتحال کے ذمہ دار نوازشریف ہیں، انہیں صرف اپنی ذات کے لیے میثاق جمہوریت یاد آتا ہے۔ذرائع کے مطابق سابق صدر کا مؤقف ہے کہ انہیں ہمیشہ ڈسا گیا ہے، پیپلزپارٹی نے میثاق جمہوریت کیا جس کا اسے نقصان ہوا اور نوازشریف آخری وقت میں انہیں چھوڑ کر چلے گئے۔

اسحاق ڈار کے بیانات جھوٹے نکلے ،بڑی خبر آگئی

لاہور (خصوصی رپورٹ)معیشت کے حوالے سے سابق وزیر خرانہ اسحاق ڈار کے دعوے جھوٹ نکلے، دسمبر میں آئی ایم ایف سمیت غیر ملکی قرضوں کی واپسی آئی ایم ایف سے مزید قرض لئے بغیر ناممکن بن گئی، غیر ملکی قرضوں کی واپسی نہ ہونے سے مزید 2سو ارب کے قریب ود دینا پڑے گا پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر اس وقت 11ملین ڈالر ہیں جبکہ قرضوں کی ادائیگی کیلئے حکومت پاکستان کو تین بلین ڈالر درکار ہیں۔ حکمرانوں نے غیر ملکی قرضوں کی رقم منصوبوں میں لگا کر اس سے پرافٹ حاصل کرنے کی بجائے کرپشن کی نذر کردی، اگلے سال قرضوں کی ادائیگی کیلئے عوام پر مہنگائی کا بم گرانے کی تیاریاں شروع ہوگئیں۔ انوسٹی گیشن رپورٹ کے مطابق حکومت کے تمام دعوے ملک کی معیشت بہتر ہوئی ہے اور آئی ایم ایف سے قرض نہیں لیں گے دعوے جھوٹے نکلے، حکومت نے آئی ایم ایف سمیت غیر ملکی قرضوں کی مد میں 17بلین ڈالر اس سال ادا کرنے ہیں جس کی ادائیگی میں ایک ماہ آٹھ دن کا وقت رہ گیاہے۔ مگر حکومتی خزانوں اورموجودہ معیشت کو دیکھا جائے گا تو آئی ایم ایف سے قرض لئے بغیر ادائیگی ممکن نظر نہیں آتی، اگر آئی ایم ایف سے قرض لیا جاتا ہے تو پھر عوام پر پاکستان کی تاریخ کا سب سے مہنگا ترین مہنگائی بم گرایا جائے گا اور اگر تیس دسمبر تک قرض کی رقم ادا نہیں کی جاتی تو پھر سود کی مد میں مزید 2سو ارب سودا ادا کرنا پڑے گا۔

 

وزیر اعظم ہاﺅ س سے لے کر تمام بڑے ایوانوں میں کھلبلی ،وزراءکی دوڑیں کیوں لگیں ؟؟؟

اسلام آباد ( خصوصی رپورٹ ) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے ظہرانے میں شرکت نہ کرنے والے لیگی ممبران اسمبلی نے نیا طوفان کھڑا کردیا ، سابق وزیراعظم نواز شریف نے پارلیمنٹ ، وزیراعظم ہاﺅس ، کیبنٹ انکلیو اور ایوان صدر میں وزراءاور ممبران کی دوڑیں لگودیں ۔ غیر حاضر ممبران کی فہرست طلب کرلی گئی ۔ عدم شرکت کی معقول وجہ نہ ہونے پر شوکاز نوٹس جاری کئے جانے سے متعلق متضاد دعوے ، مریم نواز نے بھی پارلیمنٹ اجلاس میں شرکت نہ کرنےوالے ممبران کا پتہ چلانے کےلئے ویڈیو فوٹیج حاصل کرلی، وفاداریاں بدلنے والوں کیخلاف سخت ایکشن کا فیصلہ ۔ ذمہ دار ذرائع نے آن لائن کو بتایا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے حکومت کی تمام تر کوششوںکے باوجود ظہرانے میں شرکت نہ کرنے والوں کے بارے میں سخت برہمی کااظہار کیا ہے اور ان کے بارے میں ایکشن لینے کا فیصلہ کیا ہے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ نواز شریف نے تمام غیر حاضرممبران کی فہرست طلب کی ہے اس سلسلے میں رات گئے تک پارلیمنٹ ہاﺅس ، ایوان صدر ، وزیراعظم ہاﺅس اور سیکرٹریٹ ، کیبنٹ انکلیو اور ایوان صدر میں ہنگامی رابطے کئے گئے اور اکثریتی عدم شرکت والے ممبران کے ٹیلی فونک رابطے منقطع تھے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز شرکت نہ کرنے والے ممبران اسمبلی کو خود فون کرتی رہی ہیں اس بات پر بھی برہمی کااظہار کیاجارہاہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے دورہ لندن منسوخ کرکے تمام تر توجہ اس بات پر فوکس رکھی کہ ممبران اسمبلی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے ظہرانے میں شرکت کریں تاہم ظہرانے میں 128،134اور 138کے علاوہ 146ممبران کی شرکت کی متضاد خبریں آتی رہیں جس کے بعد مریم نواز نے نہ صرف حساس اداروں بلکہ الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے علاوہ پارلیمنٹ سے شرکت کرنے والے ممبران کی فوٹیج بھی حاصل کرلی ہے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنا دورہ لندن منسوخ صرف اس ظہرانے کیلئے کیا تھا ان کی پاکستان میں موجودگی تمام ممبران اسمبلی کو یہ پیغام دینا تھا کہ وہ پاکستان میں رہیں گے اور اپنے مقدمات کا سامنا کرینگے تاہم اس کے باوجود ممبران کی عدم شرکت نے سیاسی محاذ پر ایک نیا سیاسی طوفان کھڑا کردیا ہے جس کے باعث وزیراعظم ہاﺅس سے لیکر تمام ایوانوں میں کھبلی مچی ہوئی ہے اور مسلم لیگ (ن) پر ایک سکتے کی کیفیت طاری ہے۔

کس کو خوش رکھنے کیلئے نظر بند کیا گیا ؟؟ حافظ سعید نے بالآخر زبان کھول دی

لاہور (نیااخبا ر رپورٹ)لاہور ہائیکورٹ کے نظر ثانی بورڈ نے حافظ سعید کی نظربندی ختم کرتے ہوئے توسیع کی حکومتی درخواست مسترد کر دی۔ ریویو بورڈ نے حکم دیا کہ حافظ سعید کے خلاف کوئی دوسرا کیس نہ ہونے کی بنیاد پر ان کو فوری رہا کر دیا جائے۔ حافظ سعید نے کہا ہے کہ بھارت کو منہ کی کھانی پڑی ہے ان کی نظر بندی کے خاتمے سے حق کی فتح ہوئی ہے۔واضع رہے کہ حافظ سعید کو عدالت کے حکم پر رات گئے رہا کر دیا گیا۔ 3 رکنی ریویو بورڈ کے سامنے حافظ سعید کو پیش کیا گیا اور ریویو بورڈ نے بند کمرے میں کارروائی کی۔ حافظ سعید کی جانب سے بتایا گیا کہ عدالت نے ان کے چار ساتھیوں کی نظر بندی ختم کر دی ہے۔ ان کے خلاف کوئی ثبوت موجود نہیں بلاجواز غیر قانونی طور پر نظر بند رکھا گیا ہے، انہیں امریکہ کے کہنے پر نظر بند کیا گیا۔ امریکہ نے پاکستان کی امداد بند کرنے کی دھمکی دی تھی۔ کسی قانونی جواز کے بغیر ان کی نظربندی آئین اور بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے استدعا کی کہ عدالت پابندی کوکالعدم قرار دے۔ وفاقی حکومت کے وکیل نے بورڈ کو بتایا کہ حافظ سعید کی نظربندی کا معاملہ نظرثانی بورڈ کے سامنے اس لئے رکھا ہے کہ حافط سعید کے چار ساتھیوں کی نظربندی ختم ہونے سے امن و امان کے مسائل پیدا ہوئے۔ اگر حافظ سعید کی نظربندی ختم کی گئی تو عالمی امداد بند ہونے اور پاکستان کو پابندیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ نظرثانی بورڈنے ناکافی ثبوتوں کی بنا پر حافظ سعید کی نظربندی میں توسیع کی حکومتی درخواست مسترد کر دی۔ نظرثانی بورڈکا فیصلہ سنتے ہی کارکن پرجوش ہو کر نعرے بازی کرتے رہے جبکہ انہوں نے حافظ سعید پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں۔ کمرہ عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ سعید نے کہا کہ کشمیریوں کی جدوجہد ضرور رنگ لائے گی۔ آزاد عدلیہ نے دلیرانہ فیصلہ دیا جسے سراہتے ہیں۔ سماعت کے موقع ہائیکورٹ میں سکیورٹی کے سخت انتظامات دیکھنے میں نظر آئے۔ علاوہ ازیں لاہور ہائیکورٹ نے حافظ سعید کی نظر بندی کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت کو جواب داخل کرانے کیلئے مہلت دے دی ہے۔ جسٹس قاضی امین الدین نے سماعت کی جس میں حافظ سعید نے اپنی نظربندی کو چیلنج کرتے ہوئے اسے کالعدم قرار دینے کی استدعا کی ہے۔ سماعت کے دوران ہائیکورٹ نے درخواست کا جواب داخل نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے جماعت الدعو کے سربراہ حافظ محمد سعید کی نظربندی ختم کرنے کے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے اور حافظ سعید جماعت الدعو کے کارکنوں کو مبارکباد دی ہے۔ ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد اور نظریہ پاکستان رابطہ کونسل کے چیئرمین محمد یعقوب شیخ نے فیصلہ کو حق کی فتح قرار دیا اور کہا ہے کہ حافظ محمد سعید کی رہائی سے کشمیری اور پاکستانی قوم کی طرف سے خوشیاں منائی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ثابت ہو گیا کہ حافظ محمد سعید کو بغیر کسی وجہ کے غیرقانونی طور پر دس ماہ تک نظر بند رکھا گیا۔دختران ملت مقبوضہ کشمیر کی سربراہ سیدہ آسیہ اندرابی نے حافظ محمد سعید کی رہائی کے احکامات جاری کرنے کے فیصلہ پر اعلی عدلیہ کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ مظلوم کشمیری قوم کی مائیں، بہنیں اور بیٹیاں اہل پاکستان کو مبارکباد پیش کرتی ہیں۔ ادھر فیصلہ پر ملک بھر میں جماع الدعو کے کارکنوں و ذمہ داران نے شکرانے کے نوافل ادا کئے۔ لاہور سمیت چاروں صوبوں و آزاد کشمیر میں فیصلہ پر مٹھائیاں بھی تقسیم کی گئیں۔ سوشل میڈیا پر بھی حافظ محمد سعید کی رہائی کی خبر ٹاپ ٹرینڈ میں شامل رہی۔

 

سرکاری ملازمتوں کے خواہشمند وں کیلئے سب سے اہم خبر

لاہور (خصوصی رپورٹ) ہیپاٹائٹس آرڈیننس 2017ءکا نفاذ کر دیا گیا۔ تمام بیوٹیشنز اور حجام کو رجسٹریشن کرانا ہوگی اور لائسنس لینا ہوگا۔ افتتاحی تقریب میں خواجہ عمران نذیر کی خصوصی شرکت۔ آرڈیننس کے تحت مریضوں اور لواحقین کو آگاہی ، ہسپتال ویسٹ کو عالمی معیار پر ٹھکانے لگانا، آٹوڈسپوزایبل سرنجوں کا استعمال کرنا لازمہ ہوگا، جس کیلئے ہسپتالوں کو آٹوڈسپوزایبل سرنجیں دینے کا عمل مکمل کرلیا گیاہے۔ پنجاب بھر میں ہیپاٹائٹس ٹیسٹ اور سکریننگ مفت کی جائے گی۔ سرکاری ملازمت کے لیے ہیپاٹائٹس کی سکریننگ لازمی قرار دی گئی ہے۔ جبکہ جیلوں میں قیدیوں کی منتقلی پر ساتویں روز تک ہیپاٹائٹس کو ٹیسٹ لازم ہوگا۔ کسی بھی ہیپاٹائٹس کے مریض کی تفصیلات شائع یا شیئر کرنے پر سخت کارروائی کی جائے گی۔ تقریب میں سیکرٹری صحت علی جان خان، پروفیسر غیاث النبی، پروفیسر اختر سعید نے بھی شرکت کی۔ خواجہ عمران نذیر نے کہا ہے کہ قانون بن جانے سے تیزی سے پھیلنے والے مرض پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ اب صحت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ ہیپاٹائٹس آرڈیننس پر عملدرآمد نہ کرنے والوں کو قید اور جرمانے کی سزائیں دی جا سکیں گی۔

 

نواز شریف نے اہم سوال کر دیا ۔۔

اسلام آباد(صباح نیوز)سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ تحریک انصاف سے کوئی گلا نہیں،جمہوریت اس کے قریب سے بھی نہیں گزری اور میں اسے سیاسی جماعت نہیں مانتا،پارلیمنٹ آمروں کے کالے قوانین کو تحفظ دینے کے لئے تیار نہیں،اس کا ثبوت گزشتہ روز دیکھا گیا۔ پی ٹی آئی آمروں کی پالیسی پر گامزن ہے لیکن پیپلز پارٹی نے آمروں کے کالے قانون کی حمایت کی اس پر بہت افسوس ہوا، ملکی ترقی جمہوریت سے ہی ممکن ہے، پاکستان میں ووٹ کی طاقت کو یقینی بنائیں گے۔ انہوں نے کہا آج ایک آمر کو ملک میں گھسنے کی جرا¿ت نہیں اور یہی تبدیلی ہے۔ عدلیہ کا دہرا معیار سامنے آرہا ہے،ہمارے فیصلے تو بہت جلدی آجاتے ہیں مگر عمران خان،جہانگیر ترین اور علیم خان کے خلاف بھی کرپشن کے مقدمات ہیں، ان کے خلاف کیسز کا کوئی پتہ نہیں ہے، رولز آف گیم ایک جیسے ہونے چاہئیں، سسیلین مافیا اور گاڈ فادر جیسے الفاظ لکھنا عدلیہ کو زیب نہیں دیتا،حکومت کو چین کے ساتھ کام نہیں کرنے دیا گیا، دھرنوں کے باوجود ملک نے ترقی کی۔ بدھ کو احتسا ب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی بہت عرصہ پہلے جس جدوجہد سے گزری ہے اسے قربانیوں کو اتنی جلدی فراموش کردینا سمجھ نہیں آتا،جمہوریت کے راستوں سے بھاگنے والوں کے لئے یہ کھلا پیغام ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی اصلاحات بل قومی اسمبلی سے منظور ہونے پر اتحادی جماعتوں کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد دیتا ہوں، یہ ان لوگوں کے لیے آنکھیں کھول دینے والی بات ہے جو ملک کو جمہوریت کے راستے پر نہیں چلنے دیتے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ میں موجود افراد کی ایک بڑی تعداد آمروں کے قانون کو تحفظ دینے کی حامی نہیں جبکہ پارلیمنٹ نے آمروں کے کالے قانون کو مسترد کردیا جو بڑی پیشرفت ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت سے محبت کرنے والے لوگ ہیں عوام الناس کی رائے سے پیار کرتے ہیں اور اسی کو عزت دیتے ہیں۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ جو سمجھتے ہیں کہ پاکستان جمہوری جدوجہد کے ذریعہ قائم ہوا تھا اور یہاں جمہوریت ہی ملک کو ترقی دلاسکتی ہے یہ ان کے لئے بڑی اطمینان بخش بات ہے کہ پاکستان کی پارلیمنٹ کی بھاری اکثریت اب آمروں کے قوانین کو توثیق دینے کے لئے تیار نہیں ہے،گزشتہ روز میڈیانے اس کا ثبوت دیکھ لیا۔نوازشریف نے کہا کہ 1999میں مارشل لاءتھا توآج 2017 میں بہت مختلف ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج 1999والا ڈکٹیٹر جو مارشل لاء لگانے والا شخص تھا وہ کدھر ہے؟ ،اسے آج پاکستان میں گھسنے کی جرات نہیں ہے۔اس سے قبل احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر کمرہ عدالت میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دھرنوں کے باوجود قوم کی خدمت کی، ہماری انتھک کوششوں کے باعث ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ ہوا اور جی ڈی پی کی شرح تین سے چھ فیصد تک اوپر چلی گئی، نواز شریف نے کہا کہ ہمارے دور میں اللہ کے فضل کرم سے خوشحالی و بجلی آئی اور بے روزگاری ختم ہوئی۔ سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت کو چین کے ساتھ کام نہیں کرنے دیا گیا، پانامہ کی بجائے اقامہ پر سزادی گئی ہے ،ان تمام الزامات کے باوجود قانون کی بالادستی کو مقدم رکھتے ہوئے عدالتوں میں پیش ہورہے ہیں ۔ واضح ہوگیا ہے کہ ہمارے لئے اور دوسروں کے لئے الگ الگ پیمانے ہیں۔ خیبرپختونخوا کا وزیراعلیٰ سرکاری خرچ پر جلوس کی قیادت کرنے آتا ہے۔اس سے قبل نواز شریف اپنی صاحبزادی مریم نواز اور پارٹی رہنماﺅں کے ہمراہ فیڈرل جوڈیشل کمپلیکس پہنچے تو عدالتی احاطے میں انہوں نے صحافیوں سے مختصر بات کی، صحافی نے سوال کیا کہ استثنیٰ کے باوجود آپ آ گئے ہیں جس پر نواز شریف نے کہا کہ دیکھیں کیسے کیسے دور سے ہم گزر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ دھرنوں کا سلسلہ 2014سے جاری ہے، میں خاص طور پر پی ٹی آئی کی بات کررہا ہوں، حکومت کو چین کے ساتھ کام نہیں کرنے دیا گیا، دھرنوں کے باوجود ملک نے ترقی کی۔ آئی این پی کے مطابق سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ(ن) کے صدر میاں نواز شریف نے کہا کہ ارکان اسمبلی نے مخالفین کو اپنے متحد ہونے کا واضح پیغام دیا ‘ اپوزیشن کے بل کیخلاف ساتھ دینے پر ارکان قومی اسمبلی مبارکباد کے مستحق ہیں ‘ مستقبل میں بھی ارکان اسمبلی اسی اتحاد اور یگانگت کا مظاہرہ کریں۔ بدھ کو نواز شریف کی زیر صدارت پنجاب ہاﺅس میں مسلم لیگ(ن) کا غیر رسمی مشاورتی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں مریم نواز ‘ مریم اورنگزیب ‘ آصف کرمانی ‘ طارق فضل چوہدری ‘ میر مقام ‘ شیخ انصر ‘ طلال چوہدری ‘ مصدق ملک اور دیگر (ن) لیگ کے رہنما شریک ہوئے۔ اجلاس میں احتساب عدالت میں کارروائی پر مشاورت کی گئی۔ نواز شریف نے اپوزیشن کا بل مسترد ہونے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ ارکان اسمبلی نے گزشتہ روز اپنے متحد ہونے کا واضح پیغام کو دیا۔ اپوزیشن کے بل کے خلاف ساتھ دینے پر ارکان مبارکباد کے مستحق ہیں۔ مستقبل میں بھی ارکان اسمبلی اسی اتحاد اور یگانگت کا مظاہرہ کریں۔ مشاورتی اجلاس میں (ن) لیگ کی عوامی رابطہ مہم پر بھی بات چیت کی گئی۔ پیر صابر شاہ نے (ن) لیگ کے اجلاس میں شریک ہو کر نواز شریف کو اپنے تحفظات سے آگاہ کیا۔ صابر شاہ نے کہا کہ مجھے خیبر پختونخوا کی پارٹی سیاست سے سائیڈ لائن کیا جا رہا ہے ۔ پیر صابر شاہ نے امیر مقام کے روئیے سے نواز شریف کو آگاہ کیا۔ نواز شریف نے پیر صابر شاہ کو تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرا دی۔ وزیر قانون زاہد حامد بھی مشاورتی اجلاس میں شریک ہوئے۔ وزیر قانون نے مشاورتی اجلاس میں ختم نبوت قانون میں ترمیم اور فیض آباد میں تحریک لبیک کی جانب سے جاری دھرنے سے متعلق بھی شرکاءکو بریفنگ دی۔