All posts by asif azam

آرمی چیف سے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل کی ملاقات، اہم امور پر مشاورت

راولپنڈی (آئی این پی) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور سمیت علاقائی سیکورٹی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ پیر کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے جی ایچ کیو میں ملاقات کی۔ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور سمیت علاقائی سیکورٹی کے امور تبادلہ خیال کیا گیا

حدیبیہ کیس ،صرف میڈیا پر پابندی ،سیاستدانوں پر کیوں نہیں جوروزانہ عدالتوں کی ایسی تیسی پھیرتے ہیں:ضیا شاہد

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) چینل ۵ کے تجزیوں اور تبصروں پر مشتمل پروگرام ”ضیا شاہد کے ساتھ“ میں گفتگو کرتے ہوئے معروف صحافی و تجزیہ کار ضیا شاہد نے کہا ہے کہ طاہر القادری صاحب کے ساتھ اکٹھے ہونے والے تمام افراد کا مقصد ایک ہے۔ تمام سیاستدانوں کا مقصد یہ ہے کہ سپریم کورٹ سے وزیراعظم کو نااہل کروا دینے کے باوجود وہ پارٹی کے صدر اور ان کے چھوٹے بھائی پنجاب میں وزیراعلیٰ موجود ہیں۔ لہٰذا عملا تو اقتدار میاں نوازشریف کے پاس ہی رہا۔ اب یہ تمام سیاستدان مشترکہ کاوش کے ذریعے انہیں گرانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اپوزیشن جماعتوں کو طاہر القادری کی صورت میں ایک مضبوط سہارا مل گیا ہے جس کے پیروکار دھرنے سے جاتے بھی نہیں۔ تمام سیاسی پارٹیاں اپنے سیاسی مقاصد کے لئے طاہر القادری کو استعمال کرنا چاہتی ہیں تا کہ حکومت کو نیچا دکھا سکیں۔ طاہر القادری بھی ان افراد کو استعمال کرنا چاہتے ہیں تا کہ اپنے شہداءکے خون کے بدلے کے طور پر حکومت کو گرا سکیں۔ اس مرتبہ ڈاکٹر طاہر القادری بھی اپنے مقصد میں کامیاب ہوتے دکھائی نہیں دیئے۔ عمران خان، آصف زرداری کے خلاف دھواں دھار تقاریر کر رہے ہیں۔ آصف زرداری عمران خان کے خلاف ہیں۔ یوں اگر ڈاکٹر صاحب دھرنا دیتے ہیں تو ایک دن آصف زرداری کے ساتھ اور ایک دن عمران کے ساتھ دھرنا دینا ہو گا۔ جو ناممکن دکھائی دیتا ہے۔ مصطفی کی مثال ایک یوسف بے کارواں جیسی ہے۔ انہوں نے فوج پر الزام لگایا کہ ہمیں ایم کیو ایم سے ملوایا۔ ایم کیو ایم اور پی ایس پی میں شدید اختلافات پائے جاتے ہیں۔ عمران خان کے والد اکرام اللہ خاں نیازی کی کرپشن کے بارے کچھ زیادہ معلوم نہیں کسی دن قمرزمان کائرہ سے اس بارے معلومات لیں گے۔ ضیاءالحق اور خود بھٹو کے دور میں دائیں بازو اور بائیں بازو کی دونوں پارٹیاں اکٹھی بیٹھتی رہی ہیں۔ بریلوی مسلک کے لوگ مولانا شاہ احمد نورانی کی قیادت میں اور دیو بند کے پیروکار مفتی محمود کی قیادت میں اکٹھے ہوئے تھے۔ جو ایک دوسرے کے پیچھے نماز تک نہیں پڑھتے تھے۔ وہ لوگوں کو دکھانے کے لئے اکٹھے ہو گئے تھے۔ یہ بات طے ہے کہ جہاں مصطفی کمال ہوں گے وہاں فاروق ستار نہیں ہوں گے۔ مصطفی کمال کو خیال آیا کہ طاہر القادری سے مل کر وہ مین اسٹریم میں آ سکتے ہیں اس لئے وہ یہاں آ گئے۔ بابر غوری کے لئے ایم کیو ایم کو چھوڑ کر مصطفی کمال کے ساتھ ملنا مشکل ہو گا۔ سپریم کورٹ نے حدیبیہ پیپر ملز پر تبصرہ نہ کرنے کا اچھا فیصلہ کیا ہے۔ صحافت کا بھی یہی اصول ہے کہ معاملہ عدالت میں ہو تو اس پر بات نہیں کرنی چاہئے پہلے تو جج صاحبان فوراً ایکشن لے لیتے تھے۔ لیکن آہستہ آہستہ ایسا ہونا بند ہو گیا۔ اور لوگ خوب خوب اپنی رائے ساتھ ساتھ دیتے رہتے ہیں۔ نوازشریف صاحب کو عدالت نے اس وقت بحال کر دیا جب انہیں صدر نے 58/2B استعمال کرتے ہوئے گھر بھیج دیا تھا۔ محترمہ بینظیر کو فارغ کیا گیا تو عدالت نے انہیں بحال نہیں کیا بلخ شیر مزاری اس وقت نگران وزیراعظم بنے تھے۔ بینظیر بھٹو نے عدالت کے بارے لفظ استعمال کیا کہ ان پر ”چمک کا اثر“ ہے۔ چمک سے مراد”پیسہ“ ہے۔ یوسف رضا گیلانی وہ واحد شخص ہے۔ جس نے نااہلی کے بعد عدالت پر ایک لفظ تک نہیں کہا اور خاموشی سے گھر چلا گیا۔ نوازشریف صاحب جب سے نااہل ہوئے ہیں ان کی بیٹی، داماد اور سارے رشتہ داروں نے کابینہ کے تمام ارکان نے عدالت کو وہ بے نقد سنائی ہیں۔ کھلم کھلا جج کو فیصلوں کو عدالتوں کو نشانہ بنایا ہے۔ عدالت نے آج میڈیا پر تو قدغن تو لگا دی ہے۔ لیکن یہ پابندی سیاستدانوں پر کیوں نہیں لگائی۔ حدیبیہ کوئی متبرک کاغذ ہیں جن کے بارے بات نہیں کی جا سکتی؟ قانون دان ہی اس بارے میں اچھی رائے دے سکتے ہیں۔ سی پی این ای کے اجلاس میں ہم ملکی اہم اشخاص کو لے کر ان سے بات کرنے ہی اویس لغاری کے بجلی کے معاملے میں بہت کچھ کہا ہے۔ یہ پہلے مشرف دور میں آئی ٹی کے وزیر بھی ہوا کرتے تھے۔ انہوں نے کل ہمیں بتایا کہ اوور بلنگ کرنے پر ایکسین کو تین سال سزا سنائی جائے گی۔ قومی اسمبلی نے تو بل پاس کر لیا تھا۔ لیکن سینٹ میں اسے مسترد کر دیا گیا ہے لگتا ہے کہ میٹر ریڈرز حضرات سے لے کر ایکسین حضرات کے نمائندے وہاں تک پہنچ گئے اور بل کو منظور ہونے سے روک دیا ہے۔ تحریک انصاف کے نعیم الحق نے کہا ہے کہ طاہر القادری کے دھرنوں عوامل کو ہمیں دیکھنا ہو گا کہ پی ٹی آئی ان کے ساتھ اس وقت شریک ہو جس وقت اس میں زرداری صاحب نہ ہوں۔ دھرنا ایک نہیں بلکہ کئی ہوں گے۔ طاہر القادری کا ایک ایجنڈا ہے۔ وہ ماڈل ٹاﺅن سانحہ ہے ہم ملکی دیگر مسائل کے ساتھ نکلے ہوئے ہیں۔ عمران خان نے کہا ہے کہ وہ زرداری کو ساتھ ملانے کے لئے اپنے اصولوں کی قربانی نہیں دے سکتے۔ عمران خان زرداری کی کرپشن کے پیچھے کھڑے نہیں ہوں گے۔ لیکن جمہوریت بچانے کے لئے انہیں ساتھ ملایا جا سکتا۔ تحریک انصاف کے عمران سمیت بارہ لیڈران اور 200 کارکنوں کے خلاف ججز صاحبان نے فیصلہ لکھا ہے۔ مینجمنٹ میں لکھا ہے کہ صرف امتیازی سلوک روانہ رکھنے کا وجہ سے آج کی درخواست کو مسترد کیا جاتا ہے۔ آج مشاورت کی ہے کہ اس فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ جانا چاہئے کہ نہیں۔ ماہر قانون جسٹس (ر) وجیہہ الدین نے کہا ہے کہ عدالتی فیصلوں پر بات چیت کرنے سے ذرا پرہیز ہی کرنا چاہئے۔ سیاستدانوں کی طرف آنے والے کئی بیانات ”توہین“ کے زمرے میں آتے ہیں۔ عدالتوں میں آج کل رواداری کا ایک تاثر پایا جاتا ہے جو کہ اچھا عمل ہے۔ حدیبیہ کیس کی بڑی زیادہ اہمیت ہے۔ نیب کورٹ میں معاملات میاں صاحب کے خلاف چل رہے ہیں۔ غلط روش پر چلنے والے دیگر سیاستدانوں پر بھی کیسز چلیں گے۔ ان تمام کیسز میں سب سے اہم حدیبیہ کیس ہے۔ میڈیا کو بھی کہا گیا ہے کہ وہ بھی اس پر بات نہ کرے۔ ہمارے جج صاحبان نے ابھی اس پر مشاہدہ دیا ہے۔ لگتا ہے مزید فیصلہ بھی آئے گا۔

 

ایف بی آر کا راحت فتح علی خان کو ٹیکس کے لیے نوٹس

لاہور(ویب ڈیسک)فیڈرل بیورو آف ریونیو نے بین الاقوامی شہرت یافتہ پاکستانی گلوکار راحت فتح علی خان کو ٹیکس کے لیے نوٹس جاری کردیا۔ ایف بی آر کا کہنا ہے کہ گلوکار راحت فتح علی خان کے ذمے ایڈوانس ٹیکس کے 20 لاکھ روپے واجب الادا ہیں جس کی وصولی کے لیے انہیں نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ گلوکار کو 15 دسمبر تک کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے ہدایت کی گئی ہے کہ وہ 15 دسمبر تک ایڈوانس ٹیکس جمع کرادیں۔

واضح رہے کہ تقریباً 6 ماہ قبل بھی ایف بی آرکی جانب سے راحت فتح علی خان کوبیرون ملک کنسرٹس سے حاصل ہونے والی آمدنی ظاہر نہ کرنے پر نوٹس جاری کیا گیا تھا۔ ایف بی آر ترجمان کا کہنا تھا کہ راحت فتح علی خان نے 3 برسوں میں بیرون ملک کنسرٹس کرکے کروڑوں روپے کمائے لیکن اس آمدنی کو سالانہ گوشواروں میں ظاہر نہیں کیا۔

شاہ رخ خان بھی سلمان خان کے نقشِ قدم پر

 ممبئی(ویب ڈیسک) بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان بھی دبنگ خان کے نقشِ قدم پر چلتے ہوئے فلم کی ناکامی کے بعد دریا دلی کا مظاہرہ کرکے ڈسٹری بیوٹرز کو رقم واپس لوٹا دی۔بالی ووڈ انڈسٹری میں سلمان خان اپنی دریادلی کے حوالے سے کافی مشہور ہیں اور اپنی انہی عادات کی وجہ سے وہ آئے روز خبروں کی زینت بنے رہتے ہیں جب کہ اپنی پچھلی فلم ’ٹیوب لائٹ‘ کی ناکامی پر ڈسٹری بیوٹرز کو رقم واپس کرکے تو انہوں نے نئی مثال قائم کی جس کی دیکھا دیکھی بالی ووڈ کنگ نے بھی یہی عمل دہرایا۔بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق شاہ رخ خان کی فلم ’’جب ہیری میٹ سجل‘‘ باکس آفس پر بُری طرح ناکام ثابت ہوئی جس کی وجہ سے ڈسٹری بیوٹرز کو کافی نقصان برداشت کرنا پڑا کیوں کہ فلمساز کی جانب سے امید ظاہر کی جارہی تھی کہ فلم باکس آفس پر کم سے کم 100 کروڑ کا بزنس کرے گی لیکن فلم نے صرف 62 کروڑ 33 لاکھ کا ہی بزنس کیا، جس کے بعد شاہ رخ خان نے نقصان کی رقم میں 15 فیصد این ایچ اسٹوڈیوز اور 30 فیصد دیگر ڈسٹری بیوٹرز کو واپس لوٹائی۔

واضح رہے بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا تھا کہ سلمان خان نے فلم ’ٹیوب لائٹ‘ کی ناکامی پر ڈسٹری بیوٹرز کو 50 کروڑ کے قریب رقم واپس کی تھی۔

باغی ارکان کیلئے افسو سناک خبر،نواز شریف نے چونکا دینے وا لا اقدام کر ڈالا،لیگی حلقوں میں کھلبلی

لاہور(ویب ڈیسک )پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صدراورسابق وزیراعظم نوازشریف نے پارٹی پالیسیوں کی خلاف ورزی کرنے والے ارکان کوفارغ کرنے کا فیصلہ کرلیا،نواز شریف نے ان ارکان کیخلاف کاروائی کی ذمہ داری سینیٹرپرویزرشید اورخواجہ سعدرفیق کوسونپ دی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق صدر مسلم لیگ نون نواز شریف نے خواجہ سعد رفیق اورپرویز رشید کوواضح ہدایت کی ہے کہ پارٹی پالیسی سے روگردانی کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے۔نوازشریف نے پارٹی رہنماءاور سابق وزیراعظم میرظفراللہ جمالی اورسابق وفاقی وزیررضا حیات ہراج کو بھی پارٹی سے فارغ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان ارکان کو پارٹی پالیسی کی خلاف ورزیوں پرپہلے شوکاز نوٹس جاری کیے جائیں گے۔جبکہ کسی بھی رکن کو کسی فورم پربھی مدعو نہیں کیاجائے گا۔ واضح رہے انتخابی اصلاحاتی ترمیمی بل 2017ءکی منظوری کے وقت میرظفراللہ جمالی نےاپنا ووٹ اپوزیشن کے حق میں دیا جبکہ رضا حیات ہراج ووٹ ڈالنے کیلئے اسمبلی میں ہی نہیں آئے۔ بعض ارکان ٹی وی ٹاک شوز میں بھی پارٹی قیادت کا دفاع اورحکومتی کارکردگی کی تعریف کرنے کی بجائے تنقید کرہے ہیں۔

دماغ پر قا بو پانے کیلئے خطرناک ،حیرت انگیز چپ نے دھوم مچادی،بنانے والے بھی دنگ رہ گئے

نیویارک (ویب ڈیسک)سائنس دانوں نے بندر کے دماغ میں معلومات براہ راست داخل کرنے کا کامیاب تجربہ کیا ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ مستقبل میں انسانی ذہن میں کسی بھی معلومات کو بآسانی منتقل کیا جاسکے گا۔سائنسی جریدے جرنل نیورون کے مطابق نیویارک میں واقع یونیورسٹی آف روچسٹر کی ماہرین کی جانب سے دو بندروں پر یہ تجربہ کیا گیا جس میں انہیں چار سوئچ دیے گئے جن کے ذریعے لائٹس کھولنی اور بند کرنی تھیں، ابتدا میں بندروں نے غلط سوئچ کو استعمال کرنے کی کوشش کی، نیورو سائنسدانوں کی ٹیم نے ان بندروں کے دماغ میں نصب کردہ چپ کو سگنل اور معمولی کرنٹ دے کر درست بٹن کی معلومات اور احکامات منتقل کیے تو بندروں نے درست طریقہ اختیار کرتے ہوئے تمام لائٹس جلادیں۔یونیورسٹی آف روچسٹر کے فزیشن اور سینئر ریسرچر مارک ایچ شیبر نے بتایا کہ ماہرین ابتدائی طور پردماغ کے چند حصوں میں دلچسپی لے رہے ہیں اابھی یہ تحقیق ابتدائی مراحل میں ہے تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ اس عمل کے ذریعے ایسے افراد کے علاج کا ایک نیا راستہ کھل سکتا ہے جن کے دماغ کے کچھ حصے کسی انجری یا فالج کی صورت میں کام کرنا چھوڑ چکے ہوں۔ایچ شیبر نے بتایا کہ نتیجے سے ظاہر ہوا کہ معلومات کی منتقلی کے بعد ہی بندر اس قابل ہوئے کہ کون سی لائٹ کس بٹن سے جل سکتی ہے تاہم بندر یہ بتانے سے قاصر ہیں کہ ان کے محسوسات کیا ہیں، اس تجربے کے بعد ہم ایسے افراد کے دماغ کے تباہ ہونے والے حصوں کو بائی پاس کرکے معلومات براہ راست منتقل کرسکتے ہیں جن کے دماغ کے حساس حصے فالج، حادثے یا کسی اور بیماری کی وجہ سے متاثر ہیں اور اب یہ تجربہ انسان پر بھی کیا جاسکتا ہے۔واضح رہے کہ اس تحقیق کے مطابق آپ اپنی مطلوبہ معلومات کسی کے بھی دماغ میں منتقل کرنے میں کامیاب ہوسکتے ہیں، یہ بالکل اسی طرح کا آئیڈیا ہے جو کہ ہالی ووڈ کی مشہور زمانہ سائنس فکشن فلم ” دی میٹرکس“ میں دکھایا گیا ہے کہ لوگوں کے دماغ میں جوڈو، کراٹے سمیت لڑائی کے دیگر فنون کی معلومات داخل کردی جاتی ہیں اور وہ چند سیکنڈز بعد ہی ان فنون کا ماہر بن جاتا ہے جس طرح کمپیوٹر میں کوئی سافٹ ویئر انسٹال کردیا جائے۔

آصف زرداری کے ہوتے ہوئے پیپلزپارٹی سے اتحاد ممکن نہیں

اسلام آباد(ویب ڈیسک)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ آصف زرداری کے ہوتے ہوئے پیپلزپارٹی سے کسی صورت اتحاد ممکن نہیں۔اسلام آباد میں انسداد دہشت گردی عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ مخالفین نے جان بوجھ کر مجھ پر دہشت گردی کے کیسز بنائے، مجھے ڈرایا اور دھمکایا گیا کہ میں کرپٹ شریف مافیا کا پیچھا چھوڑ دوں، اور یہ تاثر پیدا کیا گیا کہ ہم چور ہیں تو باقی سب بھی چور ہیں لیکن ایسا کبھی بھی نہیں ہوسکتا، میں نے پاکستان سے کرپشن کا خاتمہ کرنے کا عہد اور عوام سے وعدہ کررکھا ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ میں نے اپنی جائیداد سے متعلق تمام منی ٹریل عدالت میں پیش کی لیکن نوازشریف سے جب پوچھا گیا کہ پیسا کہاں سے آیا تو ان کے پاس جواب میں صرف قطری خط تھا اور اسی قطری خط سے نواز شریف نے بچوں کی جائیداد سے متعلق سوال پر بھی سہارا لیا۔ ان کا کہنا تھا کہ سانحہ ماڈل ٹاو¿ن میں پولیس حکمرانوں کی ذاتی ملازم بنی ہوئی تھی اور میرے خلاف مقدمات میں بھی حکومتی پراسیکیوٹر شریف خاندان کا ترجمان بنا ہوا ہے یہ سب چور اور ان کے لیڈرز بھی چور ہیں۔پیپلزپارٹی سے اتحاد کے حوالے سے عمران خان کا کہنا تھا کہ سابق صدر آصف علی زرداری کے ہوتے ہوئے پیپلزپارٹی سے اتحاد نہیں ہوسکتا۔

اسپاٹ فکسنگ کیس: ناصر جمشید پر ایک سال کی پابندی عائد

 اسلام آباد(ویب ڈیسک)پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے قومی ٹیم کے اوپنر ناصر جمشید پر کرکٹ کھیلنے کی ایک سال کی پابندی لگادی۔پی سی بی کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے ناصر جمشید کے خلاف اسپاٹ فکسنگ کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے انہیں ایک سال کے لئے کرکٹ کھیلنے پر پابندی لگادی۔پی سی بی کے مطابق ناصر جمشید پر عدم تعاون کی شق پر ایک سال کی پابندی عائد کی گئی جب کہ ان پر اینٹی کرپشن کوڈ کی 2 شقوں کی خلاف ورزی کا الزام تھا۔خیال رہے کہ پی سی بی کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے 24 نومبر کو ناصر جمشید کے خلاف اسپاٹ فکسنگ کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔پاکستان سپر لیگ کے دوسرے ایڈیشن کے دوران اسپاٹ فکسنگ میں شرجیل خان، محمد عرفان، خالد لطیف، ناصر جمشید اور سلمان بٹ کا نام سامنے آیا تھا جنہیں بعدازاں معطل کردیا گیا تھا۔

اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی نیب کی درخواست پر عدالت نے کونسا فیصلہ کیا،دیکھئے خبر

اسلا م آباد(ویب ڈیسک)احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ریفرنس میں اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی نیب کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نیب کی جانب سے اسحاق ڈار کے خلاف دائر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ریفرنس کی سماعت کر رہے ہیں۔سماعت کے دوران نیب کے اسپیشل پراسیکیوٹر عمران شفیق نے عدالت سے ملزم کو اشتہاری قرار دینے کی درخواست کی جس کی وکیل صفائی کی جانب سے مخالفت کی گئی اور اسحاق ڈار کی نئی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کردی۔عدالت نے اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی نیب کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا جب کہ وکیل صفائی کو دلائل جاری رکھنے کا حکم دیا۔اسحاق ڈار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے موکل کی ایم آر آئی کا انتظار تھا، سینے میں اب بھی تکلیف ہے جب کہ دل کی شریان میں بھی معمولی سا مسئلہ ہے۔وکیل نے کہا کہ اسحاق ڈار کے مزید ٹیسٹ ہوں گے، نیب نے اب تک میڈیکل رپورٹ کی تصدیق نہیں کرائی جب کہ وارنٹ کی تعمیل لاہور کے ایڈریس پر کی گئی وہ تو وہاں رہتے ہیں نہیں۔اس موقع پر اسپیشل پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ ملزم کو تمام عدالتی کارروائی کا علم ہے اس لئے وارنٹ لندن بھجوانے کی ضرورت نہیں ہے۔ سابق ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب قاضی مصباح بھی اسحاق ڈار کی طرف سے عدالت میں پیش ہوئے کہا کہ عدالت سے درخواست کی کہ وہ اسحاق ڈار کی طرف سے دلائل دینا چاہتے ہیں جس پر فاضل جج نے کہا کہ آپ مقدمے میں وکیل نہیں اس لئے دلائل کی اجازت نہیں دے سکتے۔

 

سپریم کورٹ نے حدیبیہ پیپر ملز ریفرنس کی سماعت کے آغاز میں ہی بڑا فیصلہ سنادیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے حدیبیہ پیپر ملز ریفرنس کی سماعت کے دوران نیب کی التوا کی اپیل کی درخواست مسترد کردی۔جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور جسٹس مظہر عالم خان پر مشتمل سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے حدیبیہ پیپر ملز ریفرنس کی سماعت کی۔اس موقع پر نیب کے وکیل نے کہا کہ نیب پراسیکیوٹرکا عہدہ خالی ہے اس لئے مناسب ہوگا کہ اس اہم مقدمے میں پراسیکیوٹر خود پیش ہوں۔خیال رہے کہ گزشتہ سماعت پر نیب نے سماعت میں التوا کی درخواست کی تھے جسے آج عدالت نے مسترد کردیا۔جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس دیے کہ پراسیکیوٹر نیب کا عہدہ خالی ہونا کیس کے التوا کی کوئی بنیاد نہیں اور کیس ملتوی نہیں ہوگا۔