Tag Archives: Khabrain

ملک بھر میں مظاہرے پھوٹ پڑے ،راستے بند ،جماعت اسلامی ،جماعت الدعوة سمیت تمام مذہبی جماعتوں کی ریلیاں

لاہور، اسلام آباد، کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلمانوں کے قبلہ اول کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی فیصلے کے خلاف مذہبی جماعتوں ملک گیر احتجاج اور ریلیاں نکالنا شروع کردیں ۔ جماعت اسلامی ، جے یو آئی ف اور تحریک لبیک یا رسول اللہ سمیت مختلف مذہبی جماعتوں نے نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد امریکی فیصلے کے خلاف ریلیاں شرو ع کردی ہیں ۔ اد ھر لاہور میں طلبہ تنظیم نے امریکی صدر کے فیصلے کے خلاف امریکی قونصلیٹ کے باہر احتجاج کیا اور امریکا مخالف نعرے بازی کی۔مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالخلافہ تسلیم کرنےکا اعلان واپس لیا جائے، اگر اعلان واپس نہ لیا گیا تو احتجاج کا سلسلہ جاری رکھیں۔پولیس نے طلبہ تنظیم کے احتجاج کے باعث سکیورٹی خدشات کے پیش نظر امریکی قونصلیٹ کے راستے سیل کردیئے، قونصلیٹ کے گرد کنٹینرز کھڑے کرکے پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی۔اسلام آباد بار کونسل کی جانب سے بھی امریکی فیصلے کے خلاف احتجاج کیا گیا جس میں وکلا کی بڑی تعداد نے ایف ایٹ کچہری میں احتجاج کیا اور امریکا کےخلاف شدید نعرے بازی کی۔پشاور میں جماعت اسلامی اور جے یو آئی ف کی ریلیوں کا سلسلہ جاری ہے ۔جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کا القدس کو اسرائیلی دارالحکومت قراردینا جلتی پر تیل ڈالنے کے مترادف ہے، ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی امن کو خطرے میں ڈال دیا ہے، مسلم حکمران متحد ہوکر امریکی فیصلے کے خلاف لائحہ عمل دیں۔ادھر فضل الرحمن نے ٹرمپ کی طرف سے قبلہ اول بیت المقدس کو ا سرائیل کادارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس کو مسلمانوں کے جذبات سے کھیلنے کے مترادف قرار دیا۔ ادھر اہلسنت جماعتوں کے گرینڈ الائنس نظام مصطفی متحدہ محاذ نے ملک گیر یوم القدس منارہی ہیں۔ جمعہ کے اجتماعات میں امریکی صدر کے اعلان کے خلاف قراردادیں منظور کی گئیں۔ پاکستان علماءکونسل کے چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے القدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلے کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور ان کی جانب سے لبیک یا اقصی کے عنوان سے یوم احتجاج منایا جا رہا ہے۔جماعت اسلامی کے تحت ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی احتجاج کیا جا رہا ہے۔ نماز جمعہ کے بعد مساجد کے باہر مظاہرے ہو رہے ہیں۔ مرکزی مظاہرہ بنارس چوک پر جاری ہے جہاں جماعت اسلامی کراچی کے امیر انجینئر حافظ نعیم الرحمن، نائب امیر کراچی محمد اسحاق خان اور ضلع غر بی کے امیر عبد الرزاق خان بھی شریک ہیں۔تحریک لبیک یارسول اللہ کے امیر علامہ خادم حسین رضوی کی ہدایت پرمرکز تحریک لبیک جامع مسجد بہار شریعت بہادرآباد سے ریلی نکالی رہی ہے۔ مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی اپیل پر ملک بھر کی طرح سندھ بھر میں بھی یوم مردہ باد امریکہ منایا جارہا ہے۔ ایم ڈبلیوایم سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے ہنگامی اجلاس کے دوران کہا کہ بیت المقدس مسلمانوں کا قبلہ اول ہے۔ اس کے خلاف کسی بھی سازش کو مسلمانوں کے خلاف اعلان جنگ سمجھا جائے گا۔ پاکستان علماءکونسل اور اس کی حلیف جماعتوں کے زیر اہتمام ملک بھر میں یوم الاقصی و القدس منایا گیا ، ملک بھر میں ہونے والے مظاہروں ، اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے امریکی صدر کے القدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلے کی شدید الفاظ میں مذمت کی، اسلامی ممالک کو امریکہ کا سفارتی ، اقتصادی اور معاشی بائیکاٹ کرنا چاہیے ، امریکی صدر نے امن کو تباہ کرنے کی سازش کی ہے جس مسلم امہ کو بھر پور جواب دینا ہو گا ۔مقررین نے کہا کہا کہ ایک پلاننگ کے تحت امریکہ اور اس کے حواری اسلامی دنیا کو کمزور کرنے کی سازش کر رہے ہیں اور امریکی صدر دنیا کو عالمی جنگ کی طرف لے جا رہے ہیں۔ پاکستان سنی تحریک کی اپیل پر دینی جماعتوں نے جمعہ کو ملک گیر یوم تحفظ بیت المقدس کے طورپر منایا گیا اور مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی اعلان کیخلاف اسلام آباد، کراچی، لاہور، پشاور، کوئٹہ، راولپنڈی،فیصل آباد، ملتان ،گوجرانوالہ، حیدرآباد، سکھر، میرپورخاص ،ڈیرہ غازی خان اورمظفرآبادسمیت ملک کے کئی شہروں میں بڑے احتجاجی مظاہرے اورریلیاں نکالی گئیں جبکہ جمعہ کے ملک گیراجتماعات میں اس مذموم اقدام کیخلاف مذمتی قراردادیں منظور کی گئیں ،احتجاجی مظاہروں اور ریلیوں میں امریکی واسرائیلی پرچم بھی نذرآتش کیے گئے،سربراہ پاکستان سنی تحریک محمدثروت اعجازقادری کاکہناتھاکہ امریکی صدرڈونلڈٹرمپ کی جانب سے امریکی سفارت خانے کو مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنیکااعلان اسلام کیخلاف اعلان جنگ کے مترادف ہے، امریکی اقدام سے پوری امت مسلمہ کے جذبات مجروح ہوئے ہیں جس سے مشرق وسطیٰ سمیت پوری دنیا جنگ کی لپیٹ میں آجائے گی۔ دفاع پاکستان کونسل اور جماعةالدعوة کی اپیل پرامریکہ کی طرف سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کیخلاف ملک گیر سطح پر احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور ریلیاں نکالی گئیں۔ لاہور، راولپنڈی، ملتان، کراچی، کوئٹہ ،پشاور، فیصل آباداور گوجرانوالہ سمیت پورے ملک میں ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں تمام مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی اور قبلہ اول کے تحفظ کے لئے جانیں قربان کرنے کا عزم کیا۔امیر جماعةالدعوة حافظ محمد سعید نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کیخلاف ملک گیرسطح پربھرپور تحریک چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسلمان ملک امریکہ سے سفارتی تعلقات ختم کریں۔ پاکستان میں اسلامی سربراہی کانفرنس کا اجلاس طلب کیا جائے۔ 17دسمبر کو لاہور میںتحفظ قبلہ اول کے حوالہ سے بڑا پروگرام ہو گا۔ ملک بھر کی سیاسی و مذہبی جماعتوں سے رابطے کر رہے ہیں۔ دفاع پاکستان کونسل کا مرکزی اجلاس اسی ہفتہ طلب کیا گیا ہے۔ مقبوضہ بیت المقدس آج پھر کسی صلاح الدین ایوبی کی منتظر ہے۔ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کا اعلان بہت بڑی جنگ کا پیش خیمہ ہے۔ اسے ٹھنڈے پیٹوںبرداشت نہیں کیا جائے گا۔امت مسلمہ کا بچہ بچہ بیت المقدس کے تحفظ کے لئے جانیں قربان کرنے کے لئے تیار ہے۔یہودی بیت المقدس کی طرح مدینہ منور ہ پر بھی قبضہ کرنے کے مذموم عزائم رکھتے ہیں۔ آج امت کو متحد و بیدار کرنے،غیرتمند بنانے اور میدانوں میں کھڑا کرنے کی ضرورت ہے۔دفاع پاکستان کونسل اور جماعةالدعوة کی اپیل پر علماءکرام نے خطبات جمعہ میں بیت المقدس کی آزادی کو موضوع بنایا اور امریکی فیصلے کے خلاف مذمتی قراردادیں پاس کی گئیں۔صوبائی دارالحکومت لاہور کے چوبرجی چوک میں ہونے والے احتجاجی جلسہ میں ہزاروںافراد نے شرکت کی۔ شرکاءنے بینرزاورپلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پرفلسطین کی آزادی جہاد سے ہی ممکن ہے۔یہودو نصاریٰ کا گٹھ جوڑ،عالمی امن کے لئے خطرہ،دنیا کے تین ذلیل،امریکہ بھارت اسرائیل و دیگر تحریریں درج تھیں۔شرکاءامریکہ و اسرائیل کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے اور فلسطینیوں سے رشتہ کیا لاالہ الااللہ،قبلہ اول کی آزادی تک جنگ رہے گی ،جنگ رہے گی و دیگر نعرے لگاتے رہے۔چوبرجی چوک میں احتجاجی جلسہ سے جماعة الدعوة کے سربراہ پروفیسر حافظ محمد سعید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کا اعلان بہت بڑی جنگ کا پیش خیمہ ہے۔مسلم ممالک کے حکمران امریکہ سے سفارتی رابطے ختم کریں۔سفیروں کو اپنے ملکوں سے نکالا جائے اور جو ملک اپنا سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس میں کھولے اس کا سفارتخانہ بھی اسلامی ممالک بند کریں۔ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا حق تسلیم کرنا ٹرمپ کا احمقانہ فیصلہ ہے جس کے سنگین نتائج برآمد ہونگے۔ڈونلنڈ ٹرمپ کا یہ اعلان انسانی حقوق کی علمبرداری کے دعوے کی خلاف ورزی کے ساتھ ساتھ فلسطینیوں کی آزادی اور مسلمانوں کے جذبات کو مشتعل کرنے کی ایک کوشش ہے۔ ان خیالات کا اظہار ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے مرکزی قائدین ڈاکٹر صاحبزادہ ابو الخیر محمد زبیر ، علامہ سید ساجد علی نقوی، پروفیسر حافظ سعید ، پیر عبد الرحیم نقشبندی، علامہ راجہ ناصر عباس، پیر ہارون علی گیلانی، لیاقت بلوچ ، عبد اللہ گل، علامہ عارف واحدی اور ثاقب اکبر اور دیگر قائدین نے ایک مشترکہ بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹرمپ کے اس اعلان سے ثابت ہو چکا ہے کہ امریکہ مظلوموں کا نہیں بلکہ ظالموں کا حامی اور سرپرست ہے ،اس کے اس اقدام سے ثابت ہو گیا کہ امریکہ کے انسانی حقوق کے لیے جدوجہد کے دعوے جھوٹے اور فریب پر مبنی ہیں ۔ قائدین نے کہا کہ مسلمان کبھی بھی فلسطینیوں کی آزادی کے حق سے دستبردار نہیں ہو سکتے اور نہ ہی بیت المقدس کی حیثیت پر خاموشی اختیار کر سکتے ہیں ۔ بیت المقدس کی آزادی ہمارا دینی فریضہ ہے ۔ قائدین نے کہا کہ یہ کوئی وقتی مسئلہ نہیں ہے اس کے لیے عرب دنیا نے اسرائیل کے ساتھ تین جنگیں کی ہیں اور ستر سال سے زیادہ کا عرصہ گزرنے کے باوجود یہ مسئلہ جوں کا توں ہے۔ قائدین کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کے اس اعلان نے دنیا کو خطرات سے دوچار کر دیا ہے اورفلسطین میں بھڑکائی جانے والی یہ آگ اس علاقے تک محدود نہیں رہے گی ۔ قائدین نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیل ایک ناجائز ریاست ہے ،فلسطین فلسطینیوں کا ہے اورفلسطین کے اندر اسرائیل کے دارالحکومت کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے قائدین نے اس بات کا اعادہ کیا کہ فلسطینیوں کے حق خود ارادیت اور بیت المقدس کی آزادی کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا ۔ پاکستان کے مسلمان دنیا بھر کے مسلمانوں کی طرح اپنے فلسطینی بھائیوں کے ہمراہ ہیں اور ملی یکجہتی کونسل پاکستان بہت جلد ایک عظیم الشان مارچ کا اعلان کرے گی۔ انصارالامہ پاکستان کے سربراہ مولانافضل الرحمن خلیل نے امریکی سفارت خانے کی بیت المقدس منتقلی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ صدرٹرمپ کی متشدانہ و متعصبانہ پالیسیاں دنیا کو جنگ کی طرف دھکیل رہی ہیں۔ٹرمپ کا فیصلہ انتہائی خطرناک ثابت ہوگا۔ٹرمپ نے یہ فیصلہ کر کے علاقائی امن یا عالمی امن کی نہیں بلکہ عالمی فساد کی بنیاد رکھی ہے۔ امریکی ہت دھرمیوں کی وجہ سے دنیا پہلے ہی تصادم کا شکار ہے اور اب پھر احمقانہ فیصلوں اور اقدامات کی وجہ سے مشرق وسطی نئے مسائل سے دو چار ہونے کو ہے۔جس کے نتائج سے پوری دنیا کے تمام طبقات شدید متاثر ہوں گے۔ہم سمجھتے ہیں کہ امریکی صدر اپنے عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد اسرائیل کے جبری تسلط کو فروغ دے رہے ہیں اور حالیہ فیصلہ اسرائیل کے بیت المقدس پر ناجائز قبضے کو مزید تحفظ دینے کے کڑی ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ کی متشدانہ و متعصبانہ پالیسیاں دنیا کو جنگ کی طرف دھکیل رہی ہیں۔جس کا خمیازہ عالم دنیا کی تمام قوتوں کو بھگتنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا ڈونلڈ ٹرمپ کی مسلمانوں اور اسلام سے نفرت کسی سے پوشیدہ نہیں تھی۔اب وہ مسلم کش ایجنڈے کو امریکی پالیسیوں کا حصہ بنا کر اسرائیلی عزائم کی تکمیل کر رہے ہیں۔لیکن قبلہ اول اور بیت اللہ پر مرمٹنے والی امت کسی صورت صہیونی عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دے گی۔ہم اس نازک موڑ پر مطالبہ کرتے ہیں کہ مسلمان ممالک کی قیادت آگے بڑھے اور جلد او آئی سی کا اجلاس بلا کر مسلم کش اقدامات کے سد باب کے لئے جامع حکمت عملی ترتیب دے۔ جماعت اسلامی لاہور کے زیراہتمام بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت بنانے کے امریکی اعلان کے خلاف احتجاجی مظاہرے سے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان حافظ محمد ادریس نے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت بنانے کے امریکی اعلان کے خلاف پوری امت مسلمہ سراپا احتجاج ہے۔ مشرق سے مغرب تک ہر مسلمان حیران وپریشان ہے۔ یہی وقت ہے کہ مسلمانوں کو اکٹھے ہو کر امریکہ سمیت تمام اسلام دشمن صہیونیوں طاقتوں کے خلاف اپنی آواز بلند کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ہم فلسطین میں یہودیوں کے ناپاک قدموں کو برداشت نہیں کرینگے۔ امریکی صدر ٹرمپ کے اعلان کے خلاف جماعت اسلامی کی قیادت میں خیبر سے کراچی تک پوری قوم سڑکوں پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیت المقدس کی حفاظت کیلئے ہم کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے اور اس وقت تک سراپا احتجاج رہیں گے جب تک امریکی صدر اپنا ناپاک اعلان کو واپس نہیں لیتا انہوں نے کہا کہ امریکی صدر کے اعلان نے پوری دنیا میں آگ لگا دی ہے۔ خطیب بادشاہی مسجد لاہور و چیئر مین مجلس علماءپاکستان مولانا سید عبدالخبیر آزادنے جمعة المبارک کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بیت المقدس انبیاءکرام علیہم السلام کی سر زمین ہے اورمسلمانوں کا قبلہ اول ہے ،اسرائیلی دار الخلافة بنا نے کا منصوبہ اور امریکی سفارتخانہ کے قیام کا امریکی صدر ٹرمپ کی طرف سے اعلان کی پر زور مذمت کرتے ہےں ، اسرائیلی وامریکی منصوبہ کبھی کامیاب نہےں ہوگا، بیت المقدس اور مسجد اقصی جو عالم اسلام کا قبلہ اول ہے ، فلسطینی سر زمین میں اسرائیلی دارالخلافة کا قیام فلسطینیوں کے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

 

لندن کے میئر صادق خان نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سُنا دی

لاہور(ویب ڈیسک)برطانوی شہر لندن کے میئر صادق خان نے کہا ہے کہ پاکستانی ہنر مندوں کو ترجیحی بنیادوں پر ویزے جاری کیے جاتے ہیں اور پاکستان لندن سمیت دنیا بھرکی معیشت میں بہتر جگہ پا سکتا ہے۔لاہور کے الحمرا ہال میں اپنے اعزاز میں منعقدہ  تقریب سے خطاب اور بعد ازاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صادق خان کا کہنا تھا کہ بطور میئر لندن پاکستان آنے پر خوشی اور فخر ہے، جس شاندار طریقے سے لاہور میں استقبال کیا گیا اس پر  سب کا مشکور ہوں۔میئر لندن نے کہا کہ پاکستان سے محبت کرتا ہوں اور اس کو درپیش چیلنجز سے آگاہ ہوں، معاشی میدان میں پاکستان کی ترقی قابل ستائش ہے اور پاکستان برطانیہ سمیت دنیا بھر کی معیشت میں بہتر مقام بنا سکتا ہے۔صادق خان نے کہا کہ لندن نے بیرونی سرمایہ کاروں کے لیے اپنے دروازے کھول دیے ہیں، اور پاکستانی ہنرمندوں کو ترجیحی بنیادوں پر ویزے جاری کیے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بہت سے بھارتی بھی پاکستان سے بہتر تعلقات چاہتے ہیں، پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ کو دنیا بھر میں پسند کیا جاتا ہے اور کرکٹ کے ذریعے دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری لائی جا سکتی ہے۔صادق خان نے کہا کہ لندن میں دنیا بھر کی قومیں آباد ہیں جب کہ رواں سال لندن میں دہشت گردی کے 4 واقعات پیش آئے، دہشت گردی پر قابو پانے کے لیے ہم سب کو ایک پلیٹ فارم پر جمع ہونا پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ میں پاکستانیوں کے لیے پیغام لایا ہوں کہ لندن میں کاروبار کے بہت مواقع ہیں، مستقبل میں پاکستان اور لندن کے درمیان بہترین تجارتی روابط قائم ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ نوجوانوں سے فائدہ نہ اٹھانے والے ملک غلطی پر ہیں۔

میئر لندن نے کہا کہ عمران خان نے انتخابی مہم میں میری مخالفت کی اور یہ ایک جمہوری طریقہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں جیتنے کے لیے لڑا اور جیت میرا مقدر بنی، لندن کے عوام نے نفرت اور تقسیم کرنے کے عمل کو مسترد کیا۔

اسلام آباد میں مظاہرین نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا

 اسلام آباد(ویب ڈیسک) تحریک لبیک نے فیض آباد میں جاری دھرنا ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے ملک بھر میں شٹر ڈاؤن اور پہیہ جام ہڑتال کی کال بھی واپس لے لی ہے۔تحریک لبیک نے گزشتہ 22 دنوں سے جاری اسلام آباد میں جاری دھرنا ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے ملک بھر میں شٹر ڈاؤن اور پہیہ جام ہڑتال کی کال بھی واپس لے لی ہے۔پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک لبیک یارسول اللہ کے سربراہ خادم حسین رضوی کا کہنا تھا کہ فیض آباد دھرنا 12 گھنٹے بعد ختم کر دیا جائے گا، تمام گرفتار کارکنوں کی رہائی کے لیے 12 گھنٹے کا وقت دیا گیا ہے جب کہ حکومت سے معاہدے میں پاکستان آرمی ضامن بنی۔خادم حسین رضوی کا کہنا تھا کہ رانا ثناء اللہ کے معاملے پر علماء و مشائخ کی کمیٹی قائم کردی گئی، رانا ثناء اللہ علماء ومشائخ کے سامنے پیش ہو کر بیان کی وضاحت کریں گے۔ دھرنا قائدین کی جانب سے دھرنا ختم کرنے کے اعلان کے بعد فیض آباد پر گزشتہ 22 دنوں سے موجود مظاہرین نے واپسی شروع کردی ہے۔ دوسری جانب اسلام آباد دھرنا ختم کرنے کے اعلان کے بعد  تحریک لبیک یارسول اللہ نے کراچی میں جاری دھرنوں کو بھی ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

واضح رہے کہ  ہفتے کی صبح فیض آباد انٹر چینج پر دھرنا ختم کرنے کی آخری ڈیڈلائن گزرنے کے بعد پولیس اور ایف سی اہلکاروں کی بھاری نفری نے علاقے کو کلیئر کرنے کے لیے آپریشن کا آغاز کیا جس کے نتیجے میں مظاہرین اور اہلکاروں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جب کہ جھڑپوں کے بعد ملک بھر مذہبی جماعتوں کی جانب سے دھرنے اور احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔

بھارتی آبی دہشتگردی ،انڈس واٹر ٹریٹی وہ ستلج ،بیاس اور راوی کے 100فیصد پانی کا مالک نہیں :ضیا شاہد

لاہور (رپورٹنگ ٹیم) بھارت ستلج، بیاس اور راوی کا پانی سوفیصد بند نہیں کرسکتا، سندھ طاس کا معاہد ہ 1960 میں ہوا تھا،یہ تاثر غلط ہے کہ ہم نے دریا بیچ دیئے، ہم نے تو دریاﺅں کے زرعی پانی کا معاہدہ کیا تھا،سندھ ،جہلم اور چناب کا زرعی پانی پاکستان کے حصے میں آیا اور ستلج،راوی اور بیاس کا زرعی پانی انڈیا کے پاس چلا گیا،مگر بھارت ستلج ،راوی اور بیاس کا سارا پانی بند کر کے دریاﺅں کو مار رہا ہے ہم بھارت کی آبی دہشت گردی پر چپ نہیں بیٹھیں گے ان خیالات کا اظہار معروف دانشور صحافی و چیف ایگزیکٹیو خبریں گروپ ضیاشاہد نے نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام ایک سیمینار میں بطور مہمان خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا انڈیا تویہ بھی زیادتی کر رہا ہے کہ ہمارے حصے میں آنے والے دریاﺅں پر بھی زراعت کے لئے ڈیم بنا رہا ہے، لیکن ہمارے کسی نئے ڈیم کے خلاف مہم چلاتا ہے اور یہ پروپیگنڈا بھی کرتا ہے کہ پاکستان کو پانی کی ضرورت ہی نہیں کیونکہ یہ ڈیم نہیں بناتا اور پانی سمندر میں پھینک کر ضائع کرتا ہے انہوں نے کہایہ انٹرنیشنل لا ءہے کہ دریاوں میں تھوڑا تھوڑا پانی چھوڑا جاتا ہے کیونکہ مکمل پانی بند ہونے کی وجہ سے پینے کا پانے بہت نیچے چلا جاتا ہے اورآبی حیات اور ماحولیات کی بھی تباہی ہوجاتی ہے،ستلج مکمل خشک ہو چکا ہے، راوی اور بیاس میں پانی مکمل بند ہے، پاکستان بننے سے پہلے نواب آف بہاولپور نے ستلج ویلی پروجیکٹ کے تحت چولستان میں کچھ نہریں بنائیں، مگر ستلج کے مکمل بند ہونے کی وجہ سے وہ نہریں بھی تباہ ہوگئی ہیں اور بہاولپور،رحیم یار خان اور بہاولنگر اور پاکپتن،ساہیوال اور لودھراں متاثر ہوئے ہیں، نواب آف بہاولپور نے کہا تھا، چولستان اور ریاست کے باقی اضلاع پاکستان کی فوڈ باسکٹ ہوگی مگر پانی نہ پہنچنے کی وجہ سے لاکھوں ایکڑ رقبہ بنجر پڑا ہے، بیکانیر ریاست اور بہاولپور کے درمیان بھی پانی لینے کا معاہدہ ہوا۔ انڈیا نے ستلج بند کیا تو ساری نہروں کا رخ راجھستان کی طرف موڑ کر اسے سرسبز شاداب بنا دیا گیا جبکہ ہماراچولستان ٹوٹل بنجر ہوچکا ہے ۔محکمہ صحت کی رپورٹ ہے کہ بہاولنگر میں گردے کی بیماریاں بڑھ رہی ہیں، آرسینک کی مقدار بڑھ گئی ہے اب کرنا کیا ہے؟جبکہ راوی تو سیوریج کا دریا بن چکا ہے،جس کا ایک گھونٹ بھی منہ کو نہیں لگایا جاسکتا۔ انہوں نے کہا 1970ءکے انٹرنیشنل واٹر کنونشن رولز کے مطابق بھی کوئی ملک دریاﺅں کو مکمل بند نہیں کرسکتا ،اس لیے بھارت کو مجبور کیا جائے کہ وہ کم از کم بیس فیصد پانی ان دریاﺅں میں چھوڑے، ضیاشاہد نے کہا ذوالفقار علی بھٹو نے شملہ معاہدہ پر جانے سے قبل ایک ملاقات میں کہا تھا کہ معاہدے صرف کاغذ کا ٹکڑا ہوتے ہیں جنہیں کسی وقت بھی پھاڑا جاسکتا ہے لیکن ہمیں سندھ طاس معاہدے کوپھاڑنا تو نہیں چاہیئے مگر انڈیا پر اتنا عوامی پریشر ڈالا جائے کہ وہ ان دریاﺅں میں پانی چھوڑنے پر مجبور ہوجائے،تقریب کی نظامت کے فرائض سکرٹری شاہد رشید نے ادا کیے، تقریب میں شرکاءکی کثیر تعداد موجود تھی جن میں مختلف یونیورسٹیز اور کالجز کے طلباءوطالبات بھی شامل تھے۔ انہوں نے کہا کہ انڈس واٹر ٹریٹی میں واضح طور پر درج ہے کہ بھارت جہلم چناب اور سندھ جن بھارتی علاقوں سے گزرتا ہے وہاں اسے پینے کےلئے پانی، ماحولیات کےلئے پانی اور آبی حیات کے لئے پانی لینے اور استعمال کرنے کا حق حاصل ہے۔ سوال یہ ہے کہ وہ جب اپنے لئے اسی معاہدے کے تحت یہ تینوں قسم کا پانی جائز قرار دیتا ہے جو پاکستان کے حصے میں آنے والے دریاﺅں سے لیا جا رہا ہے تو ہمارے غیر زرعی استعمال کےلئے ستلج بیاس اور راوی سے ماحولیات، آبی حیات اور پینے کا پانی کیوں بند کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1970 کے انٹرنیشنل واٹر معاہدے کے تحت دریا کے زیریں حصے میں خواہ وہ کسی ملک کے حصے میں ہو 100فیصد پانی بند نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے کاشتکاروں اور شہریوں سے اپیل کی کہ جو سہولت جہلم ستلج اور بیراج سے حاصل کر رہا ہے وہی سہولت بیاس اور راوی میں پانی چھوڑ کر پاکستانیوں کو دی جائے۔ انہوں نے کہا یہ بات بھی غلط ہے کہ ہم نے دو دریا بھارت کے ہاتھ بیچ دئیے تھے۔ سندھ طاس معاہدہ میں صاف درج ہے کہ یہ دریاﺅں کا معاہدہ نہیں جنہیں پورا کسی ایک ملک کے سپرد کیا جا سکے بلکہ زرعی صاف پانی کا معاہدہ ہے چنانچہ بھارت راوی اور ستلج کا جو حصہ ہمارے ملک میں سے گزرتا ہے اس میں آبی حیات ماحولیات اور پینے کےلئے پانی چھوڑنے پر مجبور ہے اور ہم انٹرنیشنل کنونشن کے بتائے ہوئے قوانین کے تحت عالمی عدالت میں جا سکتے ہیں جو اب پوری دنیا کے ہر ملک میں تسلیم کیے جاتے ہیں۔ ضیاشاہد نے کہا کہ 100فیصد پانی کی بندش سے ستلج اور راوی سے ری چارجنگ ختم ہو گئی ہے اور پانی بہت نیچے چلا گیا ہے۔ ریاست بہاولپور کے تین اضلاع میں پانی 100 فٹ سے زیادہ گہرے پانی میں بھی سنکھیا کی آمد شروع ہو گئی ہے جس سے جگر گردے کے امراض اور یرقان اور کینسر تیزی سے پھیل رہے ہیں۔ انہوں نے پاکستانی عوام سے اپیل کی کہ اس صورتحال کو بھارت کی آبی جارحیت نہ کہا جائے بلکہ یہ آبی دہشتگردی ہے۔ جو ہمیں پینے کا پانی، درختوں، سبزے اور آبی حیات سے محروم کر رہی ہے۔ پاکستانی اور بین الاقوامی عدالتوں میں مقدمے دائر کریں۔

سعودی عرب: کرپشن کے الزام میں گرفتارشہزادوں کیلئے فائیوسٹارہوٹل شاہی جیل قرار

ریاض(ویب ڈیسک): سعودی عرب حکومت نے کرپشن کے الزام میں گرفتارشہزادوں کیلئے فائیوسٹارہوٹل کوشاہی جیل کادرجہ دے دیا،جس میں 11شہزادے،38وزراء اور دیگراہم لوگوں کو نظربند کردیاگیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سعودی پولیس نے کرپشن کے الزام میں گرفتارسعودی شہزادوں کوفائیوسٹارہوٹل میں نظربندکردیا۔اب تک شاہی ہوٹل میں11شہزادے،38وزراء اور دیگراہم لوگ نظربند ہیں۔ہوٹل کے تمام لینڈ لائن نمبربھی کاٹ دیے گئے۔ ہوٹل میں مقیم تمام افرادکوجلد ہوٹل سے جانے کی ہدیات کردی گئی۔سکیورٹی اہلکار نے تصدیق کی ہے کہ ریاض نے فائیوسٹارہوٹل میں شہزادوں کونظربند کیاگیاہے۔ترجمان ہوٹل کے مطابق صورتحال کاجائزہ لے رہے ابھی کچھ نہیں کہہ سکتے۔واضح رہے دوسری جانب سعودی عرب میں کرپشن کیخلاف ایکشن پرسعودی سٹاک مارکیٹ میں مندی کا رجحان پیداہوگیا،سعودی اسٹاک مارکیٹ میں منافع کی شرح1.5فیصد تک گرگئی ہے۔سعودی عرب میں کرپشن کیخلاف ایکشن پرسعودی سٹاک مارکیٹ میں منافع کی شرح1.5فیصد تک گرگئی ہے۔اسٹاک مارکیٹ میں مسلسل مندی کارجحان دیکھنے میں آرہاہے۔اسٹاک مارکیٹ میں شہزادہ الولید طلال کی کمپنی کے شیئر9.9 فیصد گرگئے۔ شہزادہ الولید طلال کو کرپشن الزام میں گرفتارکیے جانے کابھی امکان ہے۔یاد رہے سعودی علما ء نے اپنے فتویٰ میں کرپشن کے خلاف حکومت اقدام کی بھرپور حمایت کا اعلان کردیا ہے اور کہا ہے کہ کرپشن کے خلاف جنگ مذہبی فریضہ ہے، جس سے لڑنا دہشت گردی سے مقابلے جتنا اہم ہے۔امریکی میڈیا رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے دہشت گردی اور اس کی معاونت کے خلاف نئے قوانین کا اعلان کردیا ہے۔علماء کرام کا کہناہے کہ سعودی عرب میں بادشاہ اور ولی عہد کو بدنام کرنے یا ان کی توہین کونے والے شخص کو 5 سے 10 برس قید کی سزا دی جائے گی۔ رپورٹ کے مطابق نئے قوانین کے تحت اسلحہ ، دھماکا خیز مواد کے ساتھ دہشت گردی کرنے والے کو 10 سے 30 برس قید ہوگی جبکہ سعودی عرب میں دہشت گردی یا اس کی فنڈنگ کرنے والے کو سزائے موت دی جاسکے گی۔اسلحہ اور ٹیلی کمیونی کیشن آلات کے ذریعے دہشت گردی کی تربیت لینے والوں کو 20 سے 30 جبکہ اکیڈمک ،سماجی یا میڈیا کے ذریعے اپنے اسٹیٹس کا غلط استعمال کرنے والے کو 15 برس قید ہوگی۔

جلال آباد میں قتل کیے گئے پاکستانی سفارتکار کی میت اسلام آباد پہنچا دی گئی

خیبرایجنسی (ویب ڈیسک) جلال آباد میں قتل کئے گئے پاکستانی سفارتکار رانا نیئر اقبال کا جسد خاکی اسلام آباد پہنچا دیا گیا، ان کی تدفین بعد نماز عصر کی جائے گی۔ رانا نیئر اقبال کو گزشتہ روز اس وقت گولیاں ماری گئی تھیں جب وہ مغرب کی نماز کے بعد گھر جا رہےتھے۔

تفصیلات کے مطابق جلال آباد میں قتل کیے گئے پاکستانی قونصل خانے کے اسسٹنٹ پرائیویٹ سیکرٹری رانا نیئراقبال کا جسد خاکی اسلام آباد ان کی رہائش گا ہ پہنچا دیا گیا۔ تدفین بعد نماز عصر اسلام آباد کے ایچ ایٹ قبرستان میں کی جائے گی۔ اس سےقبل رانا نیئراقبال کی میت طورخم گیٹ پر پاکستانی حکام کے حوالے کر دی گئی۔ میت کو طورخم پولیٹیکل انتظامیہ اور ایف سی فرنٹیئر کور کے حکام کے حوالے کیا گیا جہاں ان کے لئے دعا کی گئی۔ طورخم پر سکیورٹی کے خصوصی انتظامات کئے گئے تھے۔ سفارتکار کو ایمبولینس کے ذریعے طورخم سے لنڈی کوتل پہنچا دیا گیا، جہاں ان کی میت لنڈی کوتل سے پشاور منتقل کر دی گئی۔

حکومت پاکستان نے واقعے پر شدید ردعمل کا اظہارکرتے ہوئے افغان حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ قتل میں ملوث افراد کو فوری طور پر پکڑا جائے۔

خبریں کی سلور جوبلی پر صدر پاکستان کا چیف ایڈیٹر ضیا شاہد ، ایڈیٹر امتنان شاہد کو خط، ضیا شاہد اور امتنان شاہد کی کارکردگی قابل تقلید ہے

صدرمملکت ممنون حسین نے چیف ایڈیٹر خبریں ضیا شاہد اور ایڈیٹر امتنان شاہد کے نام خط لکھا ہے کہ ضیا شاہد نے ایک عام صحافی کے طور پر اپنے کیرئیر کا آغاز کیا لیکن دنوں ہی میں ملک گیر شہرت حاصل کر لی،،ضیا شاہد اور امتنان شاہد کی شبانہ روز محنت نے خبریں کو ایک منفرد اخبار بنا دیا جسے ہر شخص پڑھتا اور اس کی خبر پر یقینا کرتا ہے،،ضیا شاہد اور امتنان شاہد کی کارکردگی کسی بھی صورت ،،مولانا محمد علی جوہر ،،مولانا ظفر علی خان اور ان جیسے دیگر بڑے صحافیوں سے کم نہیں اور وہ امید کرتے ہیں کہ مستقبل میں بھی خبریں اخبار ان کا ادارہ ایسے ہی صحافتی میدان میں ترقی کی منازل طے کرتا رہے گا۔