Tag Archives: Khabrain

خبریں ہیلپ لائن کی کا وشوںسے 80 سالہ خاتون کو انصاف کیسے ملا، دیکھئے خبر

وھاڑی (شیخ خالد مسعود ساجد تصاویر جاوید شاہ) وھاڑی پولیس نے سوسائٹی فار ہیومن رائٹس اور خبریں ٹیم کے ہمراہ مکہ ٹاون وھاڑی میں بیٹے اور پوتوں کے گھر میں قائم ٹارچر سیل میں 5سال سے محبوس 80سالہ خاتون کو انتہائی ناگفتہ بہ حالت میں برآمد کر کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ھسپتال وھاڑی میں داخل کروا دیا خاتون کو ملنے کے لئے 5سال سے ترسنے والی بیٹیاں ماں کی حالت دیکھ کر ششدر رہ گئیں خبریں کو جھولیاں اٹھا کر دعائیں ڈی پی او عمر سعید ملک نے پولیس تھانہ صدر وھاڑی کو کاروائی کا حکم دے دیا، واقعات کے مطابق وھاڑی شہر کی نواحی آبادی 11ڈبلیو بی مکہ ٹاون کے رھائشیوں نے روزنامہ خبریں میں ھیلپ لائن کے بارے میں شائع ہونے والے اشتہار کو پڑھ کر خبریں کے چیف ایڈیٹر ضیا شاھد صاحب کو بذریعہ خط بتایا کہ مکہ ٹاو¿ن میں ایک گھر میں 80سالہ خاتون قید ہے جس کو کئی سال سے اسکے بیٹے اور پوتوں نے حبس بے جا میں رکھا گیا ہے جسے علاج معالجہ کی سہولتوں سے بھی محروم کردیا گیا ہے کو انسانیت کے ناطے برآمد کروانا اجر عظیم ہوگا جس پر چیف ایڈیٹر خبریں ضیا شاھد صاحب جو سوسائیٹی فار ہیومن رائٹس کے بانی بھی ہیں نے فوری طور پر خبریں گروپ آف نیوز پیپرز چینل 5کے وھاڑی میں بیوروچیف شیخ خالد مسعود ساجد کو وہ خط فارورڈ کرتے ہوئے سوسائیٹی فار ہیومن رائٹس کے ذریعے ڈی پی او وھاڑی کو درخواست دے کر قانونی طریقے سے برآمد کروائیں جس پر شیخ خالد مسعود ساجد نے سوسائیٹی فار ہیومن رائٹس تحصیل وھاڑی کے صدر فیاض احمد بھٹی جنرل سیکریٹری عامر رفیق چوھدری ایڈووکیٹ ضلعی جنرل سیکریٹری خاتون نوشین ملک اور سیکریٹری اطلاعات نور محمد مان کے ہمراہ ڈی پی او عمر سعید ملک سے ملاقات کی اور تمام حالات سے آگاہ کر کے محبوسہ کو برآمد کروانے کی درخواست دی جنہوں نے پولیس تھانہ صدر وھاڑی اور ایس ایچ او سٹی وھاڑی کو کاروائی حسب ضابطہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے لیڈی کانسٹیبل ہمراہ لے جانے کا حکم دیا جس پر پولیس کی دو لیڈی کانسٹیبل سمیت بھاری نفری کے ہمراہ خب اھالیان محلہ کی نشاندہی پر غلام رسول جو گورنمنٹ سکول شرقی 9/11ڈبلیو بی کے ٹیچر تھے جنہوں نے حال ہی میں ریٹائرمنٹ لی ہے کے گھر کا دروازہ کھٹکھٹایا جو کافی دیر کے بعد کھلا جس پر دونوں خاتون کانسٹیبلان اور سوسائیٹی فار ہیومن رائٹس کی خاتون ضلعی جنرل سیکرٹری نوشین ملک گھر داخل ہوئیں تو انہیں معلوم ہوا ماسٹر غلام رسول اپنی اہلیہ 5جوان بچوں طاہر رسول، مجاھد رسول، شاھد رسول، چراغ رسول اور ایاز رسول اور دیگر اھل خانہ کے ہمراہ صاف ستھرے کمروں پر مشمل گھر میں رھائش پذیر ہے گھر کی چھت پر3ڈیش انٹینا لگے ہوئے ہیں جبکہ دوسری طرف تہہ خانہ نما بدبودار کمرہ جو جانوروں کے باندھنے والے کمرے سے بھی بدتر ٹارچر سیل نما کمرے میں جہاں نہ پنکھا نہ بجلی نہ دروازے نہ کھڑکیاں جس میں ٹوٹی ہوے پرانے گندگی سے بھرے فرش اور اکھڑی ہوئی دیواریں جس میں کسی انسان کا چند منٹ کے لئے رہنا محال ہو میں ایک ٹوٹی چارپائی پر صدیوں سے گندے کھیس اور انسانی گندگی سے نچڑے پھٹے ہوئے کپڑوں میں ملبوس ماسٹر غلام رسول کی ماں جو بغیر علاج اور خوراک کی بدترین کمی کے باعث ھڈیوں کا ڈھانچہ بنی پڑی تھی جسے دیکھ کر پولیس کی لیڈی کانسٹیبل اور سوسائٹی فار ہیومن رائٹس کی خاتون نوشین ملک کی چیخیں نکل گئیں جس پر سوسائٹی کے دیگر عہدیداروں اور پولیس نے بڑی مشکل سے خاتون کو باہر نکالا اور ریسکیو 1122کی ایمبولینس پر ڈی پی او آفس پہنچایا جہاں پر ڈی پی او عمر سعید ملک نے اپنے آفس کے باہر ایمبولنس میں پڑی ھڈیوں کا ڈھانچہ 80سالہ خاتون حاجراں بی بی کو بازیاب کروانے کے لئے نشاندہی کرنے پر خبریں گروپ اور سوسائٹی فار ہیومن رائٹس کے کردار کی تعریف کی اس موقع پر خبریں گروپ کے لیگل ایڈوائزر احتشام الحق صدیقی ایڈووکیٹ اور لبنی احتشام ایڈووکیٹ اور ایس ایچ او تھانہ صدر وھاڑی رانا محمد ادریس کو خاتون کا علاج کروانے اور حسب ضابطہ کاروائی کرنے کا حکم دیا جس پر پولیس خبریں اور سوسائٹی کے عہدیداران نے خاتون کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال وہاڑی داخل کروا دیا ایم ایس ڈاکٹر محمد فاروق نے ایمرجنسی ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر وسیم کو ہدایت کی کہ خاتون کو فوری طور پر طبی امداد دیکر میڈیکل وارڈ میں داخل کو دیا جائے اسطرح خاتون کی دو بیٹیاں رضیہ اور صفیہ بھی پہنچ گئیں اور ماں کو اس حالت میں دیکھ کر رو دیں اور چیف ایڈیٹر خبریں گروپ و بانی سوسائیٹی فار ہیومن رائٹس ضیا شاھد صاحب، ایڈیٹر امتنان شاھد اور انکی ٹیم کا شکریہ ادا کیا اور انکی درازی عمر اور خبریں کی ترقی کے لئے دعا کی اس موقع پر رضیہ بی بی نے بتایا کہ 5سال قبل ہماری ماں حاجراں بی بی کو عدالت میں یہ بیان دیکر ہمارے بھائی غلام رسول نے اپنے ساتھ لے جانے کا فیصلہ کروایا تھا کہ وہ ماں کو تمام تر سہولتیں اور علاج بھی کروائےگا مگر بھائی اور انکے بچوں نے ماں کے ساتھ جانوروں سے بھی بدتر سلوک کیا انہوں نے الزام لگایا کہ والدہ کے نام پراپرٹی بھی بھائی غلام رسول نے سفید کاغذات پر انگھوٹھے لگوا کر اپنے نام کروالی ہے جس کی وجہ سے والدہ کو کسی اور رشتہ داروں یا بیٹیوں کو نہی ملنے دیا تاکہ پراپرٹی منتقلی کے بارے میں بھانڈہ پھوٹ نہ جائے دوسری جانب غلام رسول نے اپنے بیٹوں کے ہمراہ خبریں کو بتایا کہ رضیہ اور صفیہ نے انکے خلاف پہلے بھی جھوٹے مقدمے کروائے تھے جو غلط ثابت ہونے پر خارج ہوئے انہوں نے بتایا کہ عدالت نے 5سال قبل بھی والدہ کو انکی مرضی کے مطابق میرے سپرد کیا تھا۔

 

خبریں ہیلپ لائن مظلوم خاندان کو انصاف دلانے مخدوم رشید پہنچ گئی

مخدوم رشید (احتشام الحق ) تھانہ مخدوم خورشید کے علاقہ 12ایم آر میں 9سالہ ماہ نور اور 6سالہ مناہل ڈیڑھ ماہ پہلے ہنستے کھیلتے گھر سے اپنے رشتہ داروں کے گھر سے موبائل چارجر لینے نکلیں ، لیکن ڈیڑھ ماہ بعد ان کی ہڈیاں اور ڈھانچہ اور کپڑے ملے، اور ان کے سر دھڑ سے جدا تھے، اگر 9سالہ ماہ نور اور 6سالہ مناہل جس دن لاپتہ ہوئی تھیں اگر پولیس تھانہ مخدوم رشید صحیح تفتیش کرتی تو شاید آج معصوم مناہل اور ماہ نور ہمارے درمیان ہوتیں، حقیقت تو یہ ہے کہ معصوم ماہ نور اور مناہل سیاسی اثر و رسوخ ،کرپٹ اور غیر موثر تفتیش عمل کی بھینٹ چڑھ گئی ہیں، اگر بروقت موثر تفتیش ہوتی تو معصوم چراغ نہ بجھتے، معصوم ماہ نور اور مناہل تھانہ مخدوم رشید کے علاقہ 12ایم آر میں رہتی تھیں، ماہ نور اور مناہل کاوالد محمد زبیر محنت مزدوری کرکے اپنے بچوں کا پیٹ پالتا تھا، 29اگست کی رات تقریباً 7:30بجے رات والدین نے مناہل اور ماہ نور کو رشتہ داروں کے گھر موبائل کا چارجر لینے بھیجا، لیکن جب کافی دیر ہوگئی تو والد زبیر پریشان ہوگیا، اور اپنی بچیوں کا پتہ کرنے نکلا تو اس نے دیکھا کہ چارجر گلی میں پڑا ہے اور اس کی معصوم بچیاں غائب تھیں، انہیں 12ایم آر میں رہنے والے محمد ارشد جاوید جوکہ مسلم لیگ (ن) کا جنرل کونسلر ہے ، عدنان ساجد اور اشفاق پر شک گذرا، کیونکہ کچھ دن پہلے بھری پنچائت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں دی تھیں، بچیوں کے والد زبیر اپنے بھائی اور معززین علاقہ کے ساتھ ملزمان کے گھر گئے اور کہا کہ ہماری بچیاں غائب ہیں ، ہمیں اپنے گھر کی تلاشی دیں، لیکن انہوں نے بچیوں کے والد کو گالیاں دیں اور دھکے بھی دیئے، واقعہ کی اطلاع مقامی پولیس کو رات 8:00بجے دی گئی تو پولیس تھانہ مخدوم رشید روائتی رویہ اختیار کرتے ہوئے 3گھنٹے تاخیر سے پہنچی ، اس اسی اثناءمیں بچیاں غائب ہو چکی تھیں، والد زبیر کے مطابق پہلے تو پولیس کو میری بات پر یقین نہیں ہوا ، اور تین دن مجھ سے ہی پوچھ گچھ کرتے رہے ، کیونکہ دوسری طرف ملزمان میں مسلم لیگ (ن) کا جنرل کونسلر محمد ارشد جاوید بھی شامل تھا، تو پولیس پر اس وجہ سے کافی دباو¿ تھا، جس کی وجہ سے واقعہ کی فوری طور پر ایف آئی آر درج نہ ہوئی، اور جب بھی ہم ایس ڈی پی او مخدوم رشید خاور زمان لودھی کے پاس جاتے تو وہ سیاسی دباو¿ کا کہہ کر ہمیں واپس بھیج دیتا، اور ہماری داد رسی نہ ہوئی، واقعہ کی ایف آئی آر میں تاخیر کی وجہ مقامی سیاست اور خاص طور پر رائے منصب علی خان کا ہاتھ تھا، لیکن جب 3دن بچیاں نہ ملیں تو پولیس نے ساجد اور اشفاق اور نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کردی، جبکہ مقتول ماہ نور اور مناہل کے والد کے مطابق میں نے درخواست 4ملزمان محمد ارشد جاوید، ( جنرل کونسلر) ساجد ، عدنان اور اشفاق کے خلاف دی تھی، لیکن دو افراد کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کرنا پولیس کی مجبوری اور سیاسی اثر و رسوخ کی نشاندہی کرتا ہے، لیکن 28ستمبر کو تو محمد زبیر پر قیامت ہی ٹوٹ پڑی ، کہ کپاس کے کھیتوں میں عورتوں نے دو بچوں کی ہڈیاں ، ڈھانچے ، کپڑے اور جوتے دیکھے تھے، ان کے سر دھڑ سے جدا تھے، جب محمد زبیر اور ان کے گھر والے وہاں پہنچے تو انہوں نے کپڑوں اور جوتوں سے پہچان لیا کہ یہ میری ہی 9سالہ ماہ نور اور 6سالہ مناہل کی لاشیں تھیں، جب پولیس کو بچیوں کی لاشیں مل گئیں تو پولیس تھانہ مخدوم رشید میں دوسرے دو ملزمان محمد ارشد اور عدنان کا نام بھی ایف آئی آر میں ڈال دیااور گرفتار کرلیا، لیکن والد زبیر اور دیگر رشتہ داروں کے مطابق ملزمان گرفتار تو ہیں لیکن و ہ تھانہ میں گھر کی طرح رہ رہے ہیں، ہماری معصوم بچیاں قتل ہوگئی ہیں، اس کے باوجود بھی پولیس تھانہ مخدوم رشید ملزمان کی صحیح طرح تفتیش نہیں کررہی، بچیوں کے والد محمد زبیر اور دیگر رشتہ داروں نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف ، آر پی او ملتان اور سی پی او ملتان سے درخواست کی ہے کہ ان کی معصوم بچیوں کا بڑی بے دردی سے قتل ہوا ہے، ان کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے تاکہ ہمیں انصاف مل سکے، اور یہ صرف صحیح تفتیش کے ذریعہ ہی ممکن ہے، معصوم بچیوں کے قتل کے پس پردہ حقائق کچھ بھی ہوں لیکن ایک بات تو سچ ہے کہ اگر پولیس تھانہ مخدوم رشید اپنی ذمہ داری کا مظاہرہ کرتی اور بروقت صحیح تفتیش کرتی تو شاید 9سالہ ماہ نور اور 6سالہ مناہل کو موت کے منہ سے بچایا جاسکتا تھا، اور وہ سیاسی اثرورسوخ اور پولیس کے روائتی رویہ کی بھینٹ نہ چڑھتیں۔

 

پاک فوج نے یرغمال بنائے گئے 5 غیرملکیوں کو بازیاب کرا لیا

راولپنڈی: آئی ایس پی آر کے مطابق، بازیاب ہونے والوں میں 1 کینیڈین شہری، اس کی امریکی نژاد بیوی اور تین بچے شامل ہیں۔ ان تمام افراد کو افغان دہشتگردوں نے 2012ء میں اغوا کیا تھا۔ امریکی خفیہ اداروں نے کل پاکستان کو ان یرغمال بنائے گئے افراد کے افغانستان سے پاکستان منتقل کئے جانے کی اطلاع دی تھی اور آج پاک فوج نے انہیں دہشتگردوں سے بازیاب کرا لیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق، امریکی خفیہ اداروں نے ایک روز پہلے یرغمال خاندان کی افغانستان سے پاکستان منتقلی کی اطلاع دی۔ دہشتگردوں نے مغویوں کو کرم ایجنسی کے ذریعے پاکستان منتقل کیا تو پاکستانی فورسز نے خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر کامیاب آپریشن کیا اور پانچوں افراد کو بازیاب کرا لیا۔عسکری ترجمان کا کہنا ہے کہ کامیاب آپریشن سے اس عزم کا اعادہ ہوتا ہے کہ پاکستان دہشتگردی کے خلاف امریکہ کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتا ہے۔ بازیاب کرائے گئے خاندان کو واپس ان کے ملک بھجوایا جا رہا ہے۔

چیف جسٹس سمیت دیگر ججوں کو یرغمال بنانے کی کوشش ،پولیس اور رینجرز پہنچ گئی

لاہور(آن لائن)لاہورہائیکورٹ میں ملتان بار کے صدر شیرزمان قریشی کیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران وکلاء نے چیف جسٹس عدالت پر دھاوا بول دیا ،عدالت کا درواز توڑ دیا، ججوں کو یرغمال بنا لیا گیا ، ججوں کو بچانے اور وکلاء کو منتشر کرنے کیلئے پولیس اور رینجرز میدان کود پڑھے ، آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج سے وکلاء کی درگت بنائی۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے فل بینچ نے ملتان بار توہین عدالت کیس کی سماعت کی۔ فل بینچ نے منگل کوملتان ہائی کورٹ بار کے صدر شیر زمان کو ہر حال میں گرفتار کرکے  پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران لاہور ہائی کورٹ بار اور دیگر اضلاع کے وکلا ہائی کورٹ پہنچ گئے اور ہنگامہ آرائی شروع کردی جبکہ سیکیورٹی پر تعینات ایک پولیس اہلکار کو بھی پھینٹی لگادی۔وکلا کی ہنگامہ آرائی کے پیش نظر پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری لاہور ہائیکورٹ میں موجود ہے ۔ پہلے مرحلے میں پولیس کی سیکیورتی تعینات کی گئی ہے جبکہ اگلے مرحلے یعنی چیف جسٹس کی عدالت کے باہر رینجرز کے دستے تعینات کیے گئے ہیں۔ وکلا نے جی پی او چوک اور احاطہ عدالت میں شدید ہنگامہ آرائی کی ہے جبکہ کچھ مشتعل وکلا نے چیف جسٹس کی عدالت کو جانے والے راستے کا گیٹ بھی توڑ دیا ہے۔ پولیس اور رینجرز کی سخت سیکیورٹی کے باعث وکلا نے پولیس پر پتھراؤ کردیا،احتجاجی وکلا کو منتشر کرنے کے لئے پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ کی جس پر وکلا مزید مشتعل ہوگئے جس کے بعد پولیس نے واٹر کینن کا بھی استعمال کیا۔ پولیس کی جانب سے آنسو گیس کی شیلنگ کیے جانے پر وکلا بکھر گئے تاہم اب دوبارہ سپریم کورٹ رجسٹری لاہور کے باہر اکٹھے ہوگئے ہیں۔ احتجاج کے دوران وکلا نے ایک عام آدمی کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا جسے بچانے والے دو پولیس اہلکاروں کو بھی وکیلوں کے عتاب کا شکار بننا پڑا۔خیال رہے کہ چند روز قبل ہائی کورٹ ملتان بینچ میںجسٹس قاسم خان کیس کی سماعت کر رہے تھے کہ اس دوران شیر زمان قریشی اور معزز جج کے درمیان تلخ کلامی ہوئی جس کے بعد وکلا نے کمرہ عدالت کے باہر لگی جج کے نام کی تختی کو اکھاڑ کر پیروں تلے روندا۔دوسری جانب چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس منصور علی خان نے عدالتی تقدس مجروح کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے ملتان بار کے صدر شیر زمان قریشی کو پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔

نیب کا شریف خاندان اوراسحاق ڈار کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ

قومی احتساب بیورو (نیب) نے پاناما کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں شریف خاندان اور اسحاق ڈار کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔سپریم کورٹ نے پاناما کیس کے فیصلے میں میاں نوازشریف، حسن، حسین، مریم نواز، کیپٹن (ر) صفدر اور اسحاق ڈار کے خلاف نیب ریفرنس دائر کرنے کا حکم دیا ہے۔سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد قومی احتساب بیورو(نیب) کے چیرمین نیب قمر زمان چوہدری کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں ڈپٹی چیرمین نیب امتیاز تاجور اور پراسیکیوٹر جنرل وقار کریم بھی شریک ہوئے جب کہ نیب کے پراسیکیوشن ونگ نے افسران کو پاناما کیس فیصلے کے حوالے سے بریفنگ دی۔اجلاس میں پاناما کیس کے فیصلے پر عملدرآمد کرنے کے حوالے سے طریقہ کار پر غور کیا گیا۔نیب کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں شریف خاندان اور اسحاق ڈار کے خلاف ریفرنسز دائر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جو عدالتی فیصلے کے 6 ہفتوں کے اندر دائر کیے جائیں گے جب کہ ریفرنس فیصلے کے پیراگراف 9 میں درج کمپنیوں سے متعلق ہوگا۔اعلامیے کے مطابق ریفرنس ایون فیلڈ پراپرٹیز فلیٹ نمبر 16، 16 اے، 17، 17 اے، پارک لندن سے متعلق ہے اور عزیزیہ اسٹیل مل اور ہل میٹل اسٹیبلشمنٹ کےقیام پر ریفرنس دائر کیا جائے گا۔ اعلامیے میں بتایا گیا ہےکہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زیادہ اثاثے رکھنے کا ریفرنس دائر ہوگا۔اعلامیےکے مطابق ریفرنسز جے آئی ٹی کی رپورٹ اور اکٹھےکیے گئے موادکی روشنی میں دائر ہوں گے جن میں نیب اور ایف آئی اے کے پاس موجود اثاثوں کے رکارڈ کو استعمال کیاجاسکتا ہے جب کہ ریفرنسز میں باہمی قانونی معاونت سے حاصل مواد بھی استعمال ہوگا۔نیب اعلامیے کے مطابق ریفرنسز اسلام آباد اور راولپنڈی کی احتساب عدالتوں میں دائر کیےجائیں گے جس کے لیے تمام افسران کو سارے عمل کو مستعد اور پیشہ ورانہ انداز میں دیکھنےکی ہدایت کی گئی ہے۔دوسری جانب ذرائع نے بتایا کہ پہلے چیرمین نیب کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جو کئی گھنٹے جاری رہا جب کہ یہ اجلاس ختم ہونے کے بعد ایگزیکٹو بورد کا اجلاس ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ پاناما کیس میں سپریم کورٹ کےفیصلے پر من و عن عمل کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ نیب کی جانب سے میاں نوازشریف، حسن، حسین، مریم نواز، ان کے شوہر کیپٹن (ر) صفدر اور اسحاق ڈار کے خلاف ریفرنسز دائر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جن کی نگرانی نیب راولپنڈی کرے گا۔

چین کا سرحدی خلاف ورزی پر امریکی جنگی جہازوں کیساتھ ایسا اقدام کہ سب دنگ رہ گئے

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) چین کے شہر کنگ داو سے 80 ناٹیکل میل دور ہتھیاروں سے لیس چینی جہاز نے امریکی جہازوں کو بھاگنے پر مجبور کر دیا۔ تاہم دونوں ممالک کے درمیان ہونے والا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے اس سے قبل بھی ایسے واقعات پیش آچکے ہیں۔ خبررساں ادارے رائٹرز نے امریکی اہلکاروں کے حوالے سے کہا ہے کہ چین کے2 جنگی جہازوں نے مشرقی چین کے سمندر میں امریکی بحریہ کے ایک جاسوس طیارے کو علاقے سے نکلنے پر مجبور کر دیا۔ اس کارروائی کے دوران چین کا ایک جنگی جہاز امریکی بحریہ کے جہاز سے محض 300 فٹ (91 میٹر) کے فاصلے تک پہنچ گیا تھا۔ چینی جنگی جہاز J-10 اتوار کے روز امریکہ کے جہاز EP-3 کے انتہائی قریب پہنچ گیا تھا جس کے باعث امریکی جہاز فوری طور پر اپنا رخ تبدیل کر نے پر مجبور ہو گیا۔ خبررساں ادارے کے مطابق امریکی اہلکاروں نے یہ بات شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتائی کیونکہ انہیں ایسی اطلاعات پبلک کو فراہم کرنے کا اختیار نہیں تھا۔ واضح رہے کہ گزشتہ مئی میں بھی چین کے مشرقی سمندر میں چین کے SU-30 جہاز نے ایک امریکی جاسوس طیاروں کو راستہ بدلنے پر مجبور کر دیا تھا جو بین الاقوامی فضا میں تابکاری کے اثرات کا جائزہ لے رہا تھا۔

ملکی سیاست میں بھونچال،پانامہ فیصلے کے بعد عمران خان کا دھماکہ دار اعلان

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے وزیراعظم کے استعفیٰ کے لئے سڑکوں پر آنے کا فیصلہ کرتے ہوئے 28 اپریل کو جلسے کا اعلان کیا ہے۔پارلیمنٹ ہاو¿س میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز سپریم کورٹ کے ججز نے وزیراعظم کے حوالے سے جو تاریخی ریمارکس دیئے وہ اس سے پہلے کبھی نہیں سنے، سپریم کورٹ کے سینئر ججز نے کہا کہ نوازشریف نا اہل ہیں کیونکہ انہوں نے جھوٹ بولا جب کہ دنیا کے کسی ملک میں اگر ججز کی جانب سے وزیر اعظم کے لیے اس طرح کی رائے دی جاتی ہے تو وزیراعظم کی پارٹی کے ممبران ہی ان سے استعفیٰ کا مطالبہ کر دیتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ ججزکی جانب سے نوازشریف کے لیے ان ریمارکس کے بعد پارٹی ممبران کیسے عوام کے پاس جائیں گے، ڈیوڈ کیمرون کوکیا ضرورت تھی استعفی دینے کی لیکن اس نے کہا کہ میرا وزیراعظم رہنے کا اخلاقی جوازختم ہوگیا، سپریم کورٹ نے قطری کا خط بھی مسترد کردیا۔عمران خان نے کہا کہ عدالت نے ہمارے الزامات پر جے آئی ٹی بنائی ہے، ایک طرف سپریم کورٹ کہتی ہے کہ انصاف کے ادارے مفلوج ہو گئے ہیں، نیب کی کارکردگی سب کے سامنے ہے تو اب یہ ہی ادارے نواز شریف کے وزیراعظم ہوتے ہوئے کیسے تحقیقات کریں گے، اداروں نے کام کرنا ہوتا تو نوازشریف کب کے پکڑے جا چکے ہوتے۔

آرمی چیف کی سربراہی میں کور کمانڈرز کانفرنس، کلبھوشن کے معاملے پر غور

راولپنڈی (ویب ڈیسک) آئی ایس پی آر کے مطابق، راولپنڈی میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سربراہی میں کور کمانڈرز کانفرنس منعقد ہوئی جس میں کلبھوشن یادیو کے معاملے پر غور کیا گیا اور اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ ریاست کے خلاف کارروائیوں پر سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔کورکمانڈر کانفرنس میں پاکستان دشمنوں کو واضح پیغام دیا گیا کہ پاکستان کی سلامتی پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا ،کلبھوشن یادیو کو سزائے موت کے اعلان کے بعد آنے والے بیانات کا جائزہ بھی لیا گیا ،افواج پاکستان کی طرف سے بین الاقوامی قوتوں کوواضح پیغام دیا گیا کہ قوم کی خاطر کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کیا جا ئیگا ۔آئی ایس پی آر کے مطابق، کانفرنس میں ملکی سکیورٹی صورتحال کا بھی جائزہ لیا گیا۔

امام کعبہ اتوار کے روز لاہور کی کس مسجد میں امامت کروائیں گے

لاہور (وقائع نگار) تاریخی عالمگیری بادشاہی مسجد لاہور مےںامام کعبہ الشیخ صالح بن محمد آل طالب بروز اتوار (9) اپریل 2017نماز مغرب کی امامت اور بعد ازاں عظیم اجتماع سے خطاب کریںگے، ان خیالات کا اظہار خطیب بادشاہی مسجد مولانا سید عبد الخبیر آزاد نے علماءکرام اور منتظمین پرو گرام بسلسلہ آمد امام کعبہ ،سے گفتگو کے دوران کیا اور بتلایا کہ پاکستان اور خصوصا اہل لاہور کیلئے یہ مسرت اور خوشی کا باعث ہے کہ حرمین الشریفین کے امام الشیخ صالح بن محمد بن ابراہیم آل طالب حفظہ اللہ لاہور بادشاہی مسجد مےں تشریف لا رہے ہےں ،اور باد شاہی مسجد مےں تاریخی اجتماع سے خطاب کریں گے، اور امت مسلمہ خصوصا پاکستان کے استحکام امن و سلامتی اور ترقی کیلئے خصوصی دُعا فرمائیں گے، تمام اہل اسلام سے اپیل ہے کہ وہ جوق در جوق اژدھام اوررش سے بچنے کیلئے با وضو ہو کر پہلے ہی سے نماز عصر کے وقت باد شاہی مسجد لاہور مےں پہنچ جائےں، اپنے ہمراہ کسی قسم کا سامان و غیرہ ہر گز ساتھ نہ لائیں۔

اوورسیز کیخلاف یورپی یونین کا سخت ترین فیصلہ

برسلز (نیوز ایجنسیاں) یورپی یونین کی رکن ریاستوں نے اس بلاک کی بیرونی سرحدوں کی نگرانی مزید سخت بنا دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ برسلز میں ہونے والے یونین کے ایک وزارتی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ آئندہ یونین کے شینگن زون کی بیرونی سرحدوں سے گزر کر اس بلاک میں داخل ہونے والے تمام افراد کے ذاتی کوائف کی الیکٹرانک جانچ پڑتال کی جائے گی۔ یورپی وزراءنے یہ فیصلہ بھی کیا کہ اس عمل سے استثنٰی کی واحد صورت یہ ہو گی کہ اس نگرانی کیوجہ سے سرحدی آمد و رفت بہت بری طرح متاثر ہونے کا خطرہ ہو اور اس حوالے سے نمونے کے طور پر کی جانے والی اتفاقیہ چیکنگ کے نتائج بھی منفی نہ ہوں۔ ان نئے اقدامات کے ذریعے یونین اپنے رکن ملکوں میں دہشت گردی کے بڑھتے خطرات کا مقابلہ کرنا چاہتی ہے۔