تازہ تر ین

آنسو، لہو لہو!!

سجادوریا……..گمان
وہ اےک لمحہ جو قےامت بپا کر دےتا ہے،وہ اےک لمحہ جو خوشےوں کو دُکھوں مےں بدل دےتا ہے۔اس موضوع پر قلم اُٹھانے کی ہمت کی تو ذہن بنجر ،کئی بار بےٹھا اور کئی بار اُٹھا۔اس کا احساس انسان کو اس وقت نہیں ہو تا جب وہ آسُودہ حال اور خوشیوں مےں گھرا ہوتا ہے ۔اسی طرح کی صورتحال کے پس منظر مےں ہی شاعر نے لکھا ہو گاکہ
تُوآسُودہ راحت ہے ،تجھے کےا معلوم
دُکھ تو انسان کی بنےاد ہلا سکتا ہے
جناب قمر زمان کائرہ کا اےک جملہ ےہ حقیقت آشکار کرتا چلا گےا ، وہ کہہ رہے تھے ،اےک لمحہ زندگی کا رخ موڑ دےتا ہے ،ہمارے بےٹے تو واپس نہیں آئےں گے لےکن ہمےں اس دُکھ کے ساتھ ہی جینا ہو گا،وہ اللہ کی عطا کردہ نعمتےں تھیں جو واپس لے لی گئیں،وہ اتنا عرصہ ہی ہمارے ساتھ رہنے آئے تھے۔اللہ کا شکر اداکر رہے تھے اس اندوہناک موت کے بعد صابر نظر آئے۔اللہ پاک ان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ےہ تو پورا جہان جانتا ہے کہ ان کے دل کا شیشہ تو شدت غم کی حدت سے پورا پگھل گےا ہو گا۔جناب قمر زمان کائرہ اےک سلیقہ مند ،سمجھدار اور خوبصورت شخصیت ہےں ،ان کی شخصیت کی خوبی ہے کہ مخالفین بھی ان کا احترام کرتے ہےں ،کائرہ صاحب کا اسلوب بہت سُلجھا ہوا ہے وہ ہمےشہ دلیل کی بنےاد پر بات کرتے ہےں ،چیخ ،چنگھاڑ ان کا خاصہ نہیں ہے۔جناب قمر زمان کائرہ کا بےٹا اُسامہ قمر اور اسکا دوست حمزہ بٹ اےک کار حادثے مےں جاں بحق ہو گئے ۔اےک پرےس کانفرنس کے دوران ان کو خبر دی گئی تو انہوں نے استقامت اور صبر سے میڈیا پرسنز کا شکریہ ادا کیا۔مےں محسوس کر سکتا ہوں کہ اس دن لالہ موسیٰ ان کو ہزاروں میلوں دورلگا ہوگا۔ وقت تو جےسے رُک گےا ہو گا۔لالہ موسیٰ پہنچ کر ان کے ضبط کا بندھ ٹوٹ گےا اور اپنوں کے بہتے آنسوﺅں کا سےلاب ان کے صبر کو بھی ساتھ بہا لے گےا۔کائرہ صاحب مےں آپ سے کبھی ملا نہیں لےکن آ پ کے درد کی ٹیسیں محسوس کر رہا ہوں ۔لالہ موسیٰ کی فضا تو غمگین اور سوگوار تھی ہی پورے ملک اور قوم نے اس صدمے اور رنج کو محسوس کیا،اللہ پاک آپ کو صبر عطا فرمائے۔اسی طرح چیف اےڈیٹر خبرےں جناب ضےا شاہد صاحب کے صاحبزادے جناب عدنان شاہد صاحب کی اچانک وفات نے بھی جناب ضےا شاہد کی دنےا بدل کر رکھ دی۔اےک دُکھ ہے کہ جسے سینے مےں لئے اس کی ٹیسوں کی حلاوت کے ساتھ جیے جانا ہے۔جناب ضےا شاہد ،محترمہ ےاسمین شاہد کو تو عدنان صاحب کے دُکھ نے بوڑھا کر دیا ،اس عالیشان ،عالی استقامت جوڑے نے اپنی زندگی کو اپنے بےٹے کے دکھ کی حلاوت مےں جینے کے راستے پر اُستوار کر لیا ہے۔عدنان صاحب کی جدائی بھی اےک لمحے ہی کی بے رحم انگڑائی تھی۔جناب عدنان صاحب کو اللہ پاک جنت الفردوس کی مسلسل برستی رحمتوںسے مستفید رکھے اور ضےا شاہد فےملی کو صبر جمیل کی طاقت سے توانا رکھے۔عدنان صاحب کی وفات کا منظر جناب ضےا شاہد ےوں لکھتے ہےںکہ”جب لندن مےں اےک روزہ قےام کے دوران وہ ٹکٹوں پر اسٹیکر لگوانے گےا اور کچھ دےر بعد ہمےں اس کے ہسپتال جانے کی اطلاع ملی،مےں اور مےری بیوی ہسپتال گئے تو عدنان بستر پر پُرسکون چہرے سے لےٹا تھا۔مےں نے اسے کہا کہ بےٹا ! اُٹھو۔لےکن وہ نہیں اُٹھا اور مےرے کزن نے بتا ےا کہ وہ ہمےں چھوڑ کر جا چکا ہے۔نہ وہ کسی پر بوجھ بنا نہ کسی کو دکھ دیابس خاموشی سے اللہ کے پاس چلا گےا۔بطور انسان ہم سب مےں غلطےاں،کوتاہیاں ہوتی ہےں،لےکن مےرا بےٹا بڑا آدمی تھا،جس کا ثبوت اسکی موت کے بعد پوری برادری نے اپنی دعاو¾ں کے ساتھ دیا۔وہ مجھے نئے سبق سکھلا گےا کہ اصل راستہ محبت اور پےار کا ہے اور نرمی کے ساتھ ہر کسی کے دکھ بانٹے جا سکتے ہےں۔اللہ نے جو آزمائش مجھے دی ہے اسے جھےلنے کا حوصلہ دے ،ہمت دے ،صبر دے“ آمین۔
سابق وفاقی وزیر تعلیم جناب بلیغ الرحمان صاحب بھی اس شدید صدمے اور حادثے کا شکا ر ہو چکے ہےں ،اےک ٹرےفک حادثے مےں انکی زوجہ محترمہ اور معصوم بےٹے کا انتقال ہو چکا ہے،اللہ پاک مرحومین کو جنت نصیب کرے اور جناب بلیغ الرحمان کو صبر عطا فرمائے،ان سے ملاقات کے لئے جب مےں وفاقی وزیر تعلیم کے دفتر مےں اپنے دوست جناب اجمل ملک کے ساتھ داخل ہوا تو بہت محبت اور خوشی سے استقبال کیا ،حالانکہ مےری ان سے پہلی ملاقات تھی اور کوئی شناسائی بھی نہیں تھی۔جناب بلیغ الرحمان صاحب بہت عمدہ اور محبت کرنے والی شخصیت ہےں ۔اللہ ان کو صدمہ برداشت کرنے کی ہمت عطا فرمائے۔پیپلز پارٹی کی شہلا رضا اور روبینہ قائم خوانی بھی اپنی جواں سال اولادوں کے دکھوں اور صدموں کو برداشت کر رہی ہےں،مےں کبھی ان سے نہیں ملا ،لےکن ان محترم و بہادر خواتین کے دکھ کو محسوس کرتا ہوں ،اللہ پاک ان کو ہمت عطا فرمائے،مےں جانتا ہوں کہ اس دکھ کی جڑےں بہت گہری ہوتی ہےں ،والدےن کی روح مےں اُتر جاتی ہےں۔لےکن رب کی رضا کے سامنے سر ِتسلیم خم ہی کرنا پڑتا ہے۔ہائے اے موت تجھے موت کےوں نہیں آ جاتی،کس کس سانحے کا ذکر کروں۔ڈاکٹر شےر افگن خان نےازی مرحوم مےانوالی کا نام،مےانوالی کی شان اور پہچان تھے۔ڈاکٹر صاحب کو اللہ جنت مےں گھر دے مےرے بڑے مہربان تھے،مےں نے نےا نےا صحافت مےں قدم رکھا ،کالم پڑھتے ،خوش ہوتے ، اےسے حوصلہ افزائی کرتے مجھ اےسے طفلِ مکتب کو اک دم احساس ہوتا کہ مےں تو کالم نگار بن گےا ہوں۔دال ماش بڑے شوق سے کھاتے،آپ بھی پہنچ گئے ،اےک بار پوچھتے ”ڈال کھاسو“ آپ نے اگر نہ بول دیا تو دوبارہ نہ کہتے کہ آو¾ کھا لو۔آئین ان کا من پسند موضوع بحث ہوتا کئی بار دےکھا کہ صحافی اور وکیل شاہد اورکزئی سے آئینی موشگافیوں سے گھنٹوں بحث کرتے۔جب کبھی ہار جاتے تو مسکرا دےتے اور کہتے ےہ نقطہ مےں نے نہیں سوچا تھا۔ڈاکٹر صاحب اک عظیم شخصیت تھے ،انکو بھی اپنے جواں سال بےٹے بےرم خان کی کار حادثے مےں موت کا غم کھا گےا۔مےرے دوست ڈاکٹر عطااللہ تانی خےل جو ڈاکٹر شےر افگن کے ساتھ سالوں رہے بتاتے ہےں کہ بےرم خان کی موت پر بہت روئے،کسی نے میانوالی مےں ’ بےرم سائیکل ورکس‘ کے نام سائیکل مرمت کی دکان بنائی ہوئی تھی،ڈاکٹر صاحب میانوالی جاتے تو اس شاپ پر بےٹھ جاتے اس سے باتےں کرتے،اس بےرم سائیکل ورکس پر وقت گزار کر تسکین محسوس کرتے۔ انہوں نے کار کمپنی کے خلاف سپریم کورٹ مےں کےس کر رکھا تھا ،لےکن کچھ نہ ہوا۔ڈاکٹر صاحب اللہ آپکو جنت کی رحمتوں سے مستفید رکھے آپ اپنے بےرم کو ملنے پہنچ گئے ہےں۔اس طرح کے حادثے مجھے بہت دکھی کر دےتے ہےںکہ اےسے ہی بے رحم ٹرک نے مےرے جواں سال بھائی امتےاز ورےاہ کو مجھ سے چھین لیا ۔تب جو قےامت مےرے خاندان پر گزری ،ہم سمجھتے کہ اب ”جئیں گے“ کےسے؟ اتنے آنسو بہے کہ آنکھےں خشک ہو گئیں ۔ اب سالوں بعد کئی اور اپنے جےسے دکھی دےکھے ہےں تو اےسی کسی موت کی خبر سے مےری آنکھےںپھر سے بھیگ جاتی ہےں۔بڑھتی عمر کی حساسیت ہے ےا پھر پرانے دکھ احساسات مےںبرقی رو کا بہاو¾ بنانے لگے ہےں۔وہ احباب جن کا ذکر نہیں کر سکا ،انکے لئے بھی دعاﺅں کا تحفہ پےش کرتا ہوں۔جناب قمر زمان کائرہ ،ضےا شاہد اور بلیغ الرحمان صاحب کے جذبات کی ترجمانی کے چند اشعار پےش کرتا ہوں ۔
مالک سے ،بھرے گھر کے اُجڑ جانے کو پوچھو
ماں باپ سے قسمت کے بگڑ جانے کو پوچھو
گھر والوں سے اس تفرقہ پڑ جا نے کو پوچھو
ےعقوب سے ےوسف کے بچھڑ جانے کو پوچھو
اللہ دکھائے نہ الم نور نظر کا
بہہ جاتا ہے آنکھوں سے لہو قلب و جگر کا
(کالم نگارقومی امورپرلکھتے ہیں)
٭….٭….٭


اہم خبریں





دلچسپ و عجیب
کالم
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved