تازہ تر ین

چولستان جیپ ریلی

خدا یار خان چنڑ
بہاولپورچولستان جیپ ریلی قلعہ دراوڑ پر 13 فروری سے لے کر15فروری تک رہے گی۔ یہ جیپ ریلی پندرہویں ہوگی۔ اس جیپ ریلی کی شروعات چنددوستوں نے کی تھی۔ 2004ءمیں میاں مزمل رشیدعباسی ایم پی اے تھے انہوں نے پرپوزل بنائی تھی ان کے ساتھ ڈائریکٹرBRD ڈاکٹرراحیل صدیقی عرفان علی MDٹورازم ڈاکٹرنوراللہ قمر،میاں فیض الرشیدعباسی،چوہدری محمودمجیدان لوگوں کی کوشش سے 2005ءمیں پہلی چولستان جیپ ریلی منعقدہوئی۔آہستہ آہستہ یہ جیپ ریلی اتنی ترقی کرگئی کہ نیشنل سے انٹرنیشنل بن گئی ہے۔ بہاول پورجیپ ریلی میں باہرکے ممالک کے لوگ بھی حصہ لیتے ہیں۔ اس ریلی کوانٹرنیشنل بنانے میں سابق کمشنربہاول پورظفرثاقب نے بھی بڑی محنت کی ہے۔ عوام کی سہولیات کےلئے بھرپوراقدام کئے تھے۔ پہلے تقریب رونمائی صرف بہاول پور سرکٹ ہاﺅس میں ہوتی تھی اب ایک تقریب لاہورمیں بھی ہوئی ہے ۔مقامی لوگوں نے ناراضگی کااظہارکیاہے کہ تقریب بہاول پورمیں ہونی چاہیے تھی۔ موجودہ بہاول پورکمشنرآصف اقبال کی کاوش سے لاہورکے بعدجیپ ریلی کی تقریب رونمائی بہاول پورDHAمیں منعقدہوگی جس میں علاقہ کے لوگ بھرپورشرکت کریں گے۔ اس کے علاوہ کمشنربہاول پورآصف اقبال کی کاوش سے بہاولپورمیں پہلی بارٹریڈفیئرسٹال لگ رہے ہیں جس میں چیمبرآف کامرس بہاول پور،فیصل آباد،سیالکوٹ ،چیمبرآف کامرس لاہورشرکت کررہے ہیں ۔بہاول پورمیں ایک بہت بڑا میوزیکل پروگرام رکھاگیاہے اس میں ملک کے نامورگلوکاروں کے علاوہ سرائیکی خطہ کے مقامی فنکاروں اورگلوکاروں کوزیادہ اہمیت دی جارہی ہے۔ اس کے علاوہ قلعہ ڈراورپرایک بہت بڑی میوزیکل نائٹ ہورہی ہے جس میں ملک کے نامورگلوکاروں کے علاوہ ابرارالحق بھی آرہے ہیں۔ وہ بھی چولستانی عوام میں خوشیاں بکھیرنے میں بھرپورکرداراداکریں گے اوراس دفعہ پہلی بارسرائیکی تنظیمیں بھی متحرک نظرآرہی ہیں۔ ملک فرازنون ،عبدالرشیدکھیتران،اقبال بلوچ ،ملک امتیازچنڑ،دیوانہ بلوچ ،ملک راشدعزیزبھٹہ یہ سب مل کرایک رات کاچولستان میں بہت بڑاپروگرام منعقدکروارہے ہیں جس میں اونٹ گھوڑا ڈانس اور مقامی سرائیکی فنکاراورگلوکاراپنے فن کامظاہرہ کریں گے اورخاص طورپراس ایونٹ میں سرائیکی کلچرکوخوب اجاگرکیاجائے گا۔اس پروگرام میں مختلف یونیورسٹیوں سے سرائیکی لڑکے اورلڑکیاں بھی شرکت کریں گے اپنی سرائیکی اورچولستانی رسم ورواج اورسرائیکی نیلی اجرک کوپروموٹ کرنے میں بھرپورکرداراداکریں گے ۔اس کے علاوہ بحالی صوبہ بہاولپورکے لیڈران بھی اس جیپ ریلی ایونٹ کوکامیاب کرانے میں اپنارول اداکررہے ہیں۔
بہاول پورخطہ میں جتنی بھی فلاحی تنظیمیں ہیں سب کی سب اس ایونٹ میں بھرپورشرکت کررہی ہیں اورجگہ جگہ مہمانوں کوخوش آمدیدکے بینرزبھی آویزاں نظرآرہے ہیں اوررضاکارانہ طورپردورسے آئے مہمانوں کی سہولیات کے لیے جگہ جگہ استقبالیہ کیمپ بھی لگنے شروع ہوگئے ہیں۔ تین دن چولستان میں چولستانیوں کے لیے جشن کاسماںہوتاہے۔ پورے پاکستان کے کونے کونے سے لوگ اس جیپ ریلی میں شرکت کرتے ہیں خاص طورپرجنوبی پنجاب کے لوگ اکثریت سے کیمپینگ کرتے ہیں کیونکہ جنوبی پنجاب کے لوگوں نے میزبانی کے فرائض سرانجام دیناہوتے ہیں۔ قلعہ ڈراورسے لے کرقلعہ مروٹ تک سارے چولستان میں کیمپ ہی کیمپ لگ جاتے ہیں کیمپوں کولائٹنگ سے خوب سجایاجاتاہے ۔رات کوجدھربھی دیکھوروہی دولہن کی کاروپ دھارلیتی ہے، پوری روہی جگمگااٹھتی ہے۔ مقامی لوگ اس ایونٹ کاسال بھرانتظارکرتے ہیں کیونکہ مقامی چولستانی لوگوں کواس کے علاوہ کوئی تفریح میسرنہیں ہے۔ یہ واحدایونٹ جیپ ریلی ہے جس میں مقامی لوگ شرکت کرکے خوب خوشیاں مناتے ہیں حالانکہ مقامی لوگوں کودھوڑاورمٹی کے علاوہ اورکچھ نہیں ملتامگرپھربھی وہ لوگ دورسے آنے والے مہمانوں کی بڑی عزت کرتے ہیں ۔ان کوکوئی بھی مشکل پیش آئے توخوب مددکرتے ہیں۔ آج تک مقامی لوگوں نے کسی مہمان کوتنگ نہیں جھگڑانہیں کیا کیونکہ بہاول پوردھرتی کے لوگ بڑے مہمان نوازاورپیارمحبت کرنے والے لوگ ہیں خودکو تکلیف میں ڈال لیتے ہیں اورمہمانوں کوتکلیف نہیں ہونے دیتے ۔آنے والے مہمانوں کوبھی ان مقامی لوگوں کاخیال کرناچاہیے بہت بڑی اورقیمتی گاڑیوں میں بیٹھ کرمقامی لوگوں کی عزت نفس مجروح کرنے کی بجائے ان کے ساتھ پیارسے پیش آناچاہیے تاکہ یہ مقامی لوگ پہلے سے بھی زیادہ تابعداری کریں گے۔ کچھ امیرزادوں کے بگڑے ہوئے نوجوان مقامی غریب لوگوں کی دل آزاری کرتے ہیں ان کونچلے درجے کی مخلوق سمجھتے ہیں جوکہ سراسرغلط ہے مقامی لوگوں کے تعاون کے بغیرتویہ ایونٹ کامیاب نہیں ہوسکتا ،آنے والے مہمانوں کوان کاخاص خیال رکھناچاہیے۔ جب وہ آتے ہیں اپنے اپنے کیمپ سجاکرخودتوانجوائے یاعیاشی کرکے چلے جاتے ہیں بعدمیں ساری گندگی اورغلاظت کاسامنامقامی لوگوں کوکرناپڑتاہے۔
اس دفعہ یہ بھی خبرچل رہی ہے کہ عمران خان وزیراعظم پاکستان کی آمد بھی متوقع ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدارتوپہلے بھی آتے رہتے ہیں۔ اس ایونٹ کی طرف بھرپورتوجہ دینی چاہیے ۔مقامی لوگوں کے لیے کوئی روزگارمیسرہونا چاہیے۔ ان تین دنوں میں لاکھوں کی تعدادمیں بکرے حلال ہوتے ہیں یہاں مقامی لوگوں کے لیے تین دن بکرمنڈی کااہتمام ہوناچاہیے تاکہ مقامی لوگوں کواس کافائدہ حاصل ہوناچاہیے اورگورنمنٹ کوخاص طورپرپانی وافرمقدارمیں انتظام کرنا چاہیے اورایمرجنسی کی صورت میں ایک ہسپتال کی بھی اشدضرورت ہوتی ہے ۔احمدپورشرقیہ سے لے کرقلعہ ڈراورتک ون وے روڈہوناچاہیے جوکئی کئی گھنٹے ٹریفک پھنسی رہتی ہے ۔جولوگ دورسے فیملیوں کے ساتھ آتے ہیں ان کوبڑی پریشانی ہوتی ہے۔ ڈبل سڑک نہ ہونے کی وجہ سے اکثرگاڑیاں ریت میں پھنس جاتی ہیں ان کونکالنابہت مشکل ہوجاتاہے۔ یہ پاکستان کی واحدجیپ ریلی ہے جس میں گاڑیاں بہت زیادہ تعدادمیں ہوتی ہیں اوردنیاکی ہرطرح کی جیپ چولستان میں دیکھنے کوملتی ہے۔ یہ بہاول پورچولستان جیپ ریلی پاکستانیوں کے لیے بہت بڑاتحفہ ہے۔
(کالم نگارسیاسی وسماجی امورپرلکھتے ہیں)
٭….٭….٭


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved