تازہ تر ین

فجی کا شہزادہ

نوین روما
ٹی وی سکرےن پر اےک جارحانہ فوٹےج دےکھی جس مےں اےک 46 سالہ کالے آدمی کو اےک گورا آفےسر اپنے گھٹنے کے زور سے اےسا بے بس کےے ہوئے تھا کہ وہ ہل نہےں پارہا تھا۔ جارج فلائےڈ کو 9 منٹ تک اس پولےس آفےسر نے ہلنے نہےں دےا اور آخری3 منٹ مےں وہ مکمل ہوش و حواس کھو چکا تھا۔ اپنے موبائل کی سکرےن پر اس منظر کو زوم کر کے جارج تک لے آئی ۔جارج کو جےسے ہی دےکھا تو مےں کئی سال ماضی مےں لوٹ گئی جہاں پنجاب ےونےورسٹی کی لائبرےری مےں ڈرتے ہوئے کچھ کتابوں کو الٹ پلٹ کر دےکھ رہی تھی تو ےکدم مےری نظر سامنے کرسی پر بےٹھے ہوئے اےک نو جوان پر پڑی جو مےز پر اخبار رکھے بڑے پر وقار انداز سے اسے پڑھ رہا تھا، اس کے آگے اور بھی اخبار پڑے ہوئے تھے۔ مےں مےز کے قرےب پہنچی اور سوچ رہی تھی کہ کوئی اخبار ہی پڑھ لوں تو اس نے فوراً مےری طرف دےکھا اور جان لےا کہ مجھے اخبار چاہئے۔ چھ فٹ سے بھی زےادہ لمبے ، چوڑے شانوں والے، گول عےنک سے بولتی آنکھوں والے خوبرو نو جوان نے جسے آج بھی مےں سےاہ فارم، کالا، بلےک ےا نےگرو کہنے کو تےار نہےں ہوںانتہا ئی لکھنوئی انداز کی اردو مےں کہا محترمہ کےا آپ اخبار پڑھنا چاہتی ہےں؟ تو مےں اور کنفےوژہو گئی ۔ےہ شمشےر علی سے مےری پہلی ملاقات تھی ۔بعد میں علم ہوا کہ وہ کتنا صاحب علم ہے، اسلام کے بارے مےں اتنے خوبصورت انداز سے بات کرتا کہ اےک عالم دےن دےکھائی دےتا ۔پوری دنےا کے مختلف موضوعات پر سےر حاصل گفتگو کرتا ۔بہت عمدہ کپڑے پہنتا ۔بہادر اور بے باک تھا۔ اردو زبان بہت شفاف اور کمال خوبصورتی سے بولتا۔ ہم انار کلی کی گلےوں مےں گھومتے ،چاٹ پکوڑےاں کھاتے اور کتنی ہی دےر بس اسٹاپ پر بےٹھ کر آنے جانے والوں کو تکتے ۔ مےری ےہ دوستی مےرے کچھ ےونےورسٹی فےلوز کو کھٹکتی تھی اور وہ بار ہا اس کا ذکر بھی کرتے حالانکہ ان کا تعلق مےرے ڈےپارٹمنٹ سے بھی نہےں ہوتا تھا بلکہ اےک نے تو ےہاں تک کہہ ڈالا روما آپ کوا نار کلی کی چپس کھاتے فلاں دن دےکھا تھا وہ فجی کا شہزادہ آپ کے ساتھ تھا۔ لےکن مجھے اےسی باتوں سے کوئی فرق نہےں پڑتا۔اس کا نظرےہ ہمارے ملک کے بارے مےں بڑا اچھا تھا ۔وہ اشرفےہ کو ملک کے استحصال کا سبب جانتاتھا اور مڈل کلاس کو پسند کرتا تھا۔ شمشےر کے چچا اسلام آباد مےں فجی کے سفارت خانے مےں بڑے عہدے پر فائز تھے ےہ بات اس نے بہت بعد مےںبتائی وہ اپنی امارت کا کوئی رعب نہےں ڈالنا چاہتا تھا پھر ےونےورسٹی کے بعد زماں و مکاں مےں اےسے بدلاﺅ آئے کہ اس دوڑ دھوپ مےں شمشےر کہےں کھو گےا پھر اس سے کوئی رابطہ نہ ہو سکابس اچھی ےادےں رہ گئےں ۔
جب مےں نے جارج فلائےڈ کو اےسے زمےن پر بے ےارو مددگار پڑے دےکھا تو مجھے بے اختےار شمشےر ےاد آگےا۔ اس پولےس آفےسر کا کےا نام ہے مےں ےاد بھی نہےں رکھنا چاہتی ۔مجھے اگر ےاد ہے تو صرف اس کا گھٹنا جو ڈےوٹی نہےں دے رہا تھا بلکہ صرف نفرت تھی جو مجھے اس کی آنکھوں مےں نظر آرہی تھی اور اےک ہاتھ اپنی پےنٹ کی جےب مےں تھا ےعنی وہ گورے کا تفاخر ، غرور ،گھمنڈ جو اس کو سب سے اعلیٰ بناتا ہے اور وہ اپنے اس انداز سے بتانا چاہ رہا تھا کہ دےکھو مےری شان و شوکت کہ مےں اس کو قتل کر رہا ہوں تو پھر بھی اپنے مخصوص جاہ و جلال سے۔ مےں نے غلاموں کی تارےخ پڑھتے ہوئے اےک تصوےر دےکھی جس مےں اےک حبشی غلام کو زندہ جلاےا جا رہا تھا اور اس کے ارد گرد بے شمار گورے سوٹ بوٹ پہن کر بڑے فخر سے مختلف سٹائل بنا کر کھڑے تھے اور مسکرا رہے تھے ، گورے کی کالے سے نفرت کی ےہ کہانی کوئی نئی بات نہےں ہے بلکہ ےہ تو ازل سے ہے، غلام در غلام بنتے رہے ہےں۔ ہمارے پےارے آقا نے اس تفرےق کو ختم کےا اورفر ماےا کہ کالے کو گورے پر اور گورے کو کالے پر کوئی فوقےت حاصل نہےں ہے ۔
لیکن بدقسمتی سے ےہ کالے اور گورے کا چکر اےک وبا کی طرح ہمارے گھروں مےں بھی پایا جاتاہے۔ گورے رنگ کا رعب ہمارے معاشرے مےں اےسا ہے کہ گھر مےں اےک دو بندے تو اس کے شکار ہوتے ہی ہےں۔ ےو نےورسٹی سے فراغت کے کچھ عرصے بعد مےں کسی کام سے اپنے کےمپس گئی تو مےری ملاقات اےک سادہ سی دھان پان سی لڑکی سے ہوئی۔ مےں نے اسے شمشےر کے ساتھ اےک مرتبہ بےٹھے دےکھا تھا۔ بات کرنے پر اس نے مجھے بتاےا کہ وہ اور شمشےر اےک دوسرے کو پسند کرتے تھے کےوں کہ شمشےر کے نزدےک انسان کا کردار اس کی صلاحےتےں اور اس کی سادگی ہر اک شے سے بڑھ کر تھی حالانکہ وہ فجی کے اےک معتبر خاندان سے تعلق رکھتا تھا لےکن اس لڑکی کے ماں باپ نے شمشےر سے اس کے رشتے کو نسلی تعصب کی بنا پر مسترد کر دےا۔ ان سب باتوں نے مجھے بہت افسردہ کےا۔ جےسے ہی مےں اپنے مادر علمی پہنچی تو سب وےسا تھاآنکھوں مےں آنسو تھے ۔ بر آمد ے کی سےڑھےوں پر جہاں شمشےر بےٹھا کرتا تھا مجھے اس کی وہی مخصوص خوشبو بھی آئی اور وہ خوشبو رنگ نسل کے تعصب سے پاک تھی جو مجھے ےہ بتا رہی تھی کہ احترام آدمےت ہی اس دنےا کی سب سے بڑی خوبصورتی ہے۔
(کالم نگارقومی و سماجی موضوعات پرلکھتی ہیں)
٭….٭….٭


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved