All posts by asif azam

https://www.facebook.com/asif.azam.33821

عمران….کرکٹ‘سوشل ورک اور سیاست…. 4

ضیا شاہد
قارئین میں مخالفین کی اِن شکایات کی تفصیل میں نہیں جاﺅں گا کہ عمران خان کی جوانی کیسی تھی‘ پلے بوائے کے طور پر ان کا امیج کیسے بنا‘ سیتا وائٹ سے شادی کے بغیر ان کی بچی کے معاملات کیسے سامنے آئے۔ سیاسی مخالفت کی بنیاد پر مسلم لیگ ن کے میڈیا انچارج خلیل ملک جنہوں نے کویت میں ہنگاموں کے بعد پاکستان واپسی اختیار کی تھی اور خبریں کی کالم نویسی سے اپنی محنت اور قابلیت کے باعث مسلم لیگ ن کے میڈیا سیل میں کیونکر پہنچے تھے۔ میں ان تفصیلات میں بھی نہیں جاﺅں گا کہ مسلم لیگ کے میڈیا سیل ہی سے پہلی بار سیتا وائٹ کا سکینڈل کس طرح پاکستانی اخبارات میں چھپوایا گیا تھا۔ میں اس بحث میں بھی نہیں پڑوں گا کہ دوسرے اخبارات کے ساتھ یہ داستان خبریں میں چھپی تو عمران نے کس طرح غصے اور رنج کا اظہار کیا تھا کہ ساری دنیا چھاپتی مگر تم نے میرے خلاف خبر کیوں شائع کی۔ میں برادرم یوسف صلی سے عمران کی دوستی کے قصے بھی بیان نہیں کروں گا اور میں الزامات کا ذکر بھی نہیں چھیڑوں گا‘ جو یوسف صلی کی دوسری بیوی انبساط خان نے اخباروں میں چھپوائے اور اپنے شوہر کے ساتھ صلی کی معروف حویلی میں جو ٹیکسالی گیٹ میں واقع ہے‘ رنگین مجلسوں کے انکشافات کیے‘ وہ سچ تھے یا جھوٹ کہ انبساط کی جب تک یوسف صلی سے صلح رہی شاید اسے نہ صلی سے کوئی شکایت تھی اور نہ ”چاچو“ عمران سے‘ مگر جونہی لڑائی ہوئی انبساط خان نے شوہر پر بدمعاشی اور عمران خان پر ہیومینیٹی کے الزامات کی بارش کر دی۔ میں عمران کے حوالے سے بیشمار اچھے‘ برے واقعات کا واقف بھی ہوں اور ناقد بھی‘ لیکن یہ امر بھی حیرت انگیز ہے کہ عمران نے جس کا امیج ایک پلے بوائے سے زیادہ کچھ نہیں تھا اور کرکٹ کے حوالے سے اس کی عشق و محبت کی داستانیں انگلستان ہی نہیں بھارت تک پھیلی ہوئی تھیں جہاں معروف فلمی اداکاراﺅں زینت امان اور ریکھا سے اسے منسوب کیا جاتا رہا۔ میں صرف ایک بات کا ذکر ضروری سمجھتا ہوں کہ خود عمران نے کبھی اپنے آپ کو پارسا قرار نہیں دیا۔ اس نے تسلیم کیا کہ زندگی کا ایک بڑا حصہ ایسے واقعات سے بھرا ہوا ہے جو شاید اخلاقیات کی نظر میں پسندیدہ نہیں تھے‘ لیکن یہی عمران جب اللہ سے توبہ کرتا ہے‘ دینِ اسلام کی طرف راغب ہوتا ہے‘ قرآن و حدیث اور مذہبی کتابوں کا مطالعہ کرتا ہے‘ کچھ بزرگوں سے روحانیت کے حوالے سے مسلسل رابطہ رکھتا ہے جو جیسا کہ میں نے پہلے کہا تھا‘ وہ اپنی زبردست قوت ارادی سے اپنی زندگی کا رخ تبدیل کرنے میں کامیاب ہو جاتا ہے۔ اس مسئلے پر اس کی خود نوشت کتاب کا اردو ترجمہ بھی ہو چکا ہے۔ ”پلے بوائے کرکٹر“ سے سچا اور کھرا مسلمان بننے کی روداد اس میں شامل ہے جو آپ خود پڑھ سکتے ہیں اور اگر قارئین چاہیں تو میں اس کتاب کے متعلقہ حصے بھی اپنے اخبار میں چھاپ سکتا ہوں۔
عمران ہمیشہ سے انتہا پسند رہا ہے‘ چنانچہ یہ زندگی چھوڑ کر جب اس نے اپنا گھر آباد کرنا چاہا تو سب سے پہلے لندن کے دولت مند یہودی گولڈ سمتھ کی بیٹی جمیما یا جمائماکا ذکر آتا ہے۔ یہ بہت متمول‘ معروف اور مالدار خاندان ہے۔ عمران نے جب شادی کا فیصلہ کیا تو اپنی ہونے والی بیوی کو قائل کیا کہ وہ اسلام قبول کرے جو اس نے کیا۔ گولڈ سمتھ کی بیٹی کا نام جمائما خان رکھا گیا۔ یہ خبر سب سے پہلے مجھے ہمارے مشترکہ دوست محمد علی درانی نے دی‘ بہت سے پاکستانیوں کی طرح مجھے بھی یہ سن کر کوئی خوشی نہ ہوئی۔ میں نے درانی سے کہا‘ لوگ پہلے ہی اس کے دشمن ہیں جن میں حاسدین کی تعداد بہت زیادہ ہے‘ جمائما کے والد کے یہودی ہونے کے باعث مخالفین کوموقع مل جائے گا کہ عمران پر چڑھائی کر سکیں۔ دُرانی نے کہا سب کچھ طے ہو چکا ہے اور عمران کے خاندان کے لوگ بھی وہاں جا کر جمائما سے مل چکے ہیں۔ شادی کی تاریخ سر پر ہے البتہ ولیمہ لاہور میں ہو گا۔ دُرانی ہی سے میں نے عمران خان کا لندن کا نمبر لیا اور خود بھی اُسے فون کیا مگر اُس نے بتایا کہ سب کچھ طے ہو چکا تھا اور سوائے مبارکباد دینے کے میں کوئی اعتراض نہ کر سکا۔
لاہور کینٹ میں گیریژن کلب کے سامنے جہاں آج کل ملک ریاض کا ”مال آف لاہور“ واقع ہے‘ جمائما کی شادی میں مہمانوں کا استقبال کرنے والوں میں اپنے دوست درانی کے ساتھ میں بھی شامل تھا اور ہم سب کی دعا تھی کہ یہ شادی کامیاب رہے۔
میں ان دنوں کی یادوں کو تازہ نہیں کرنا چاہتا کیونکہ یہ داستان طویل ہو جائے گی تاہم صرف چند باتوں کا ذکر ضروری معلوم ہوتا ہے جن سے آج کے عمران خان کو سمجھنے میں مدد ملے گی۔
میں نے اپنی یادداشتوں کو تاریخ اور سن وار نہیں لکھا اس لئے آپ کو کوئی پرانی بات پہلے اور کوئی نئی بات بعد میں نظر آئے گی، میں نے صرف اُن واقعات کا ذکر کیا ہے جن سے آج کے باغی سیاستدان عمران کی شخصیت کو سمجھنے میں مدد مل سکتی ہے۔
عمران کے زمان پارک والے گھر میں کمبائن فیملی سسٹم ہوتا تھا‘ ان کی ایک بہن اور بہنوئی بھی ساتھ رہتے تھے‘ اندر داخل ہوتے ہی دائیں ہاتھ جو سیڑھیاں ہیں وہ ایک چھوٹے سے لاﺅنج اور ملحقہ بیڈ روم میں کھلتی ہیں۔ ایک دن ہم پہلے فلور پرلاﺅنج میں بیٹھے تھے جس کے سامنے وہ بیڈ روم ہے جہاں جمائما خان کا قیام تھا‘ سچی بات ہے کہ لوگ کچھ بھی کہیں‘ میں جمائما خان کا آج بھی احترام کرتا ہوں اور میرے خیال میں نازونعم میں پلی ہوئی اس برطانوی لڑکی نے اپنے شوہر کی خوشی کیلئے زندگی کی ساری راحتیں قربان کر دیں۔ برطانیہ میں شاید کوئی سوچ بھی نہ سکتا ہو کہ گولڈ سمتھ کی بیٹی لاہور کے ایک سادہ سے گھر میں ایک بیڈ روم میں رہتی ہے‘ جس کے سامنے چھوٹا سا لاﺅنج ہے‘ میں نے عمران سے پوچھا ”ہماری بھابی پاکستانی کھانوں سے گھبراتی تو نہیں“ ظاہر ہے ہم سرخ مرچ کا بکثرت استعمال کرتے ہیں۔ عمران کی شخصیت کو سمجھنے کیلئے ضروری ہے کہ یقینا وہ لندن یا دنیا کے کسی بھی بڑے شہر میں مغربی انداز زندگی اپناتا ہو‘ مغربی کھانے کھاتا ہو‘ رہن سہن یورپین ہو‘ لیکن پاکستان میں ہمیشہ میں نے اسے میانوالی کا ایک اکھڑ پٹھان پایا‘ جو قدرتی طور پر بولتا ہے تو بالعموم ڈپلومیسی‘ بناوٹ اور مصنوعی اخلاقیات سے کوسوں دور ہوتا ہے اور جس طرح اکثر پنجابی اپنے دیہات میں ”جٹ بُوٹ“ کھردرے اور مصنوعی اخلاقیات سے کوسوں دور ہوتے ہیں بالکل اسی طرح عمران بھی اول و آخر پٹھان ہے‘ زیادہ تر کرتا شلوار یا قمیض شلوار پہنتا ہے‘ بڑی ہیوی قسم کی پٹھانی چپل استعمال کرتا ہے‘ جس روز کا میں ذکر کر رہا ہوں اس نے اپنے مخصوص لہجے میں کہا ”ضیا کھانا کھا کرجانا“ کھانا آیا تو تندور کی روٹیاں تھیں اور آلو گوشت تھا جس میں شاید کوئی سبزی بھی تھی‘ میں نے خاص طور پر پوچھا کہ کیا بھابی کو بھی یہی کھلاتے ہو‘ عمران نے اثبات میں جواب دیا اور کہا اسے پاکستانی کھانے بہت پسند ہیں۔ میں نے کہا خدا کا خوف کرو‘ ہو سکتا ہے وہ تکلف میں شکایت نہ کرتی ہو لیکن ان کے لیے کوئی کک رکھو‘ جو ان کی پسند کی ویسٹرن ڈشز بنا سکے‘ لیکن عمران نے جواب دیا‘ ”وہ پاکستانی کھانے پسند کرتی ہے اور اب اسے یہیں رہنا ہے۔“ میرا عمر بھر کا تجربہ یہی ہے کہ عمران سے بحث کرنا بیکار ہے‘ جو بات ایک مرتبہ اس کے دل میں آ جائے اسے نکالنا بہت مشکل ہوتاہے۔

اسلام آباد بند کرنے کی سازش،باشعور عوام نے لاتعلق رہ کر ناکام بنا یا:شہباز شریف

لاہور(نیو زڈیسک )وزےراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشرےف سے جمعےت علماءپاکستان کے مرکزی صدر پےر اعجاز ہاشمی نے ملاقات کی،مرکزی جنرل سےکرٹری جمعےت علماءپاکستان اوےس نورانی بھی اس موقع پر موجود تھے ۔وزےراعلیٰ محمدشہبازشرےف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انتشار اورہٹ دھرمی کی سےاست نے ملک کوبے پناہ نقصان پہنچاےا ہے اورپاکستان کے 20کروڑ عوام باربار کے احتجاج اورافراتفری کی سےاست سے بےزار ہوچکے ہےں ۔انہوںنے کہا کہ اسلام آباد کو بند کرنے کی سازش رےاست پر حملے کے مترادف تھی۔پاکستان کے باشعور عوام نے دھرنوں سے لاتعلق رہ کر ملک کی ترقی کےخلاف سازش کو ناکام بناےا ہے ۔دھرنوں کے شوقےن عناصر نے قو م کے بچوں کے مستقبل کو داو¿پرلگارکھا تھا۔انہوںنے کہا کہ پاکستان دہائےوں بعد ترقی و خوشحالی کی منزل کی طرف رواں دواں ہوا ہے اورےہی وجہ ہے کہ عوام کی خوشحالی کے مخالفےن کو ملک وقوم کی ترقی کے سفر پر تکلےف ہورہی ہے ۔انہوںنے کہا کہ ترقےاتی منصوبوں مےں اپنی منفی سےاست کے ذرےعے رکاوٹےں ڈالنے والوں کو عوام کی فلاح سے کوئی سروکار نہےں ۔رواداری کے جذبات کو فروغ دےنے سے ہی معاشرے آگے بڑھتے ہےں ۔دنےا مےں وہی قومےں زندہ رہتی ہے جو بحرانوں سے نمٹنے کےلئے دانشمندی کا مظاہرہ کرتی ہے ۔لاک ڈاو¿ن درحقےقت ترقی کے سفر کا لاک ڈاو¿ن تھا جسے عوام نے ناکام بناےا ۔منفی اور انتشار کی سےاست قوموں کی ترقی کے عظےم مقصد کے حصول مےں رکاوٹ بنتی ہے ۔ملک کی خوشحالی کا راستہ روکنے کی ناپاک کوششےںکرنےوالے قوم سے مخلص نہےں ہوسکتے۔انہوںنے کہا کہ چےن نے پاکستان مےں اربوں ڈالر کی سرماےہ کاری کر کے ہماری آئندہ نسلوں پر احسان کےا ہے۔قوموں کی تارےخ مےں اےسے مواقع آتے ہےں جو ان کی تارےخ کا دھارابدل دےتے ہےں ۔چےن کی اربوں ڈالر کی سرماےہ کاری بھی پاکستان کی ترقی اورخوشحالی کےلئے اللہ تعالیٰ نے اےک موقع فراہم کےا ہے۔وزےراعظم نوازشرےف کی قےادت مےں پاکستان بھر مےں ترقےاتی منصوبوں کا جال بچھا دےاگےاہے۔ انہوںنے کہا کہ محنت ،امانت ،دےانت کو شعار بنا کرترقےاتی منصوبے نہاےت شفاف طرےقے سے مکمل کےے جارہے ہےں۔ پاکستان مسلم لےگ(ن) کی قےادت ملک کو مسائل سے نکالنے کےلئے عوام کی توقعات اورامےدوں پر پورا اترے گی۔ترقےاتی منصوبوں کی تکمےل سے پوری قوم اورہماری آئندہ نسلوں کو فائدہ ہوگا۔جمعےت علماءپاکستان کے مرکزی صدر پےر اعجاز ہاشمی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم ملک مےں افراتفری کی سےاست کے خلاف ہےں۔امن اورپرسکون فضائ، تےزرفتار ترقی اورمعاشی سرگرمےوں کے فروغ کےلئے ضروری ہے ۔باہمی اتحادا ورےگانگت کی قوت سے ہی ملک وقوم کوفائدہ پہنچے گا ۔

پرویز خٹک کیخلاف قرار داد جمع۔۔۔

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ایم کیوایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار، علی رضاعابدی، سلمان بلوچ اورخالد مقبول صدیقی سمیت دیگرکی جانب سے وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویزخٹک کے خلاف قومی اسمبلی سیکریٹریٹ میں قرارداد جمع کرائی گئی ہے۔قرارداد میں کہا گیا ہے کہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویزخٹک نے غیرذمہ دارانہ بیانات دیے، ان بیانات سے صوبائیت اوربین الاصوبائی نفرتیں بڑھانے کی کوشش کی گئی، انہوں نے ملکی سا لمیت اورسیکیورٹی کے خلاف قابل مذمت دھمکیاں دیں، اس لئے ایوان مطالبہ کرتا ہے کہ پرویزخٹک کو وزارت اعلیٰ اور صوبائی اسمبلی کی رکنیت سے نا اہل کیا جائے اوران کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت کارروائی کی جائے۔

معاوضوں کا تنازعہ….

ڈھاکہ(ویب ڈیسک)بی پی ایل کا جب سے آغاز ہوا ادائیگیوں کے تنازع نے اسے لپیٹ میں لیا ہوا ہے، اسی وجہ سے ایونٹ میں تعطل بھی آ چکا، اب چوتھے ایڈیشن سے ایک روز قبل پھر معاوضوں کا تنازع کھڑا ہوا جب رنگپور رائیڈرز کے کچھ کھلاڑی معاوضے کی پہلی قسط نہ ملنے پربورڈ کے چیف ایگزیکٹیو نظام الدین چوہدری کے پاس چلے گئے۔قواعد وضوابط کے تحت تمام فرنچائزز کے لیے لازم ہے کہ وہ ایونٹ کے آغاز سے قبل ہی پلیئرز کو 50 فیصد ادائیگی کردیں، 20 فیصد دوران ایونٹ اور باقی 30 فیصد اختتام کے ایک ماہ کے اندر کرنا ہے، مگر رنگپور کے پلیئرز کا کہنا ہے کہ انھیں ابھی تک کوئی رقم نہیں ملی، انھوں نے کہاکہ وہ اپنی ٹیم کے مالک تک سے ناواقف ہیں، انھیں معلوم ہی نہیں کہ رابطہ کس سے کرنا ہے۔واضح رہے کہ یہ ٹیم سہانا گروپ کی ملکیت ہے جس نے ابتدائی 2 ایڈیشنز میں سلہٹ رائلز کے نام سے ٹیم لی ہوئی تھی مگر پلیئرز اور آفیشلز کو ادائیگی نہ کرنے کی وجہ سے اسے ڈراپ کردیا گیا، اب وہی مالکان نئے نام سے فرنچائز لے چکے ہیں، پہلے اس ٹیم کا چیئرمین ضیا العالم کو بنایا مگر پھر ہٹا دیا گیا، جس پر انھوں نے بورڈ سے شکایت کی تھی کہ ان سے بڑی رقم لے کر چیئرمین کا عہدہ دیا گیا اور پھر ہٹا دیا۔

آئی سی سی نے کھلاڑیوں کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری کردی

دبئی(ویب ڈیسک)آئی سی سی جانب سے جاری کھلاڑیوں کی نئی ٹیسٹ رینکنگ کے مطابق بلے بازوں میں آسٹریلین ٹیم کے کپتان اسٹیون اسمتھ بدستور پہلے نمبر پر ہیں جب کہ ہاشم آملہ دوسرے سے تیسرے نمبر پر آ گئے ہیں۔ یونس خان تیسرے ٹیسٹ میں ناقص کاکردگی کے باعث 3 درجے تنزلی کے بعد دوسرے سے پانچویں نمبر پر آ گئے ہیں۔ اس کے علاوہ اسد شفیق بھی 4 درجے تنزلی کے بعد 13 ویں سے 17 ویں نمبر پر آ گئے ہیں جب کہ مصباح الحق 10 ویں اور اظہر علی بدستور 12 ویں نمبر پر موجود ہیں۔ بلے بازوں کی رینکنگ میں تیسرا نمبر نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن کا ہے جب کہ پاکستان کے خلاف شارجہ ٹیسٹ کی دونوں اننگز میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ویسٹ انڈیز کے کھلاڑی کریگ برتھ ویٹ 13 درجے ترقی کے بعد کیرئیر کی بہترین 19 ویں پوزیشن پر پہنچ گئے ہیں۔

پارکنگ فیس وصول کرنے سے روک دیا گیا

سندھ (ویب ڈیسک)سندھ ہائی کورٹ میں کراچی کنٹونمنٹ بورڈ کی جانب سے پارکنگ فیس وصولی کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی جس میں ہائی کورٹ کے 2 رکنی بنچ نے صوبے کے تمام کنٹونمنٹ بورڈز کو درخواست کے فیصلے تک پارکنگ فیس وصولی سے روک دیا اور پارکنگ فیس کی وصولی کا نوٹیفیکشن بھی معطل کردیا۔درخواست کی سماعت کے موقع پر درخواست گزار کے وکیل صلاح الدین گنڈا پور ایڈوکیٹ نے موقف اپنایا کہ ہائی کورٹ اس سےقبل بھی قرار دے چکی ہے کہ ایگزیکٹو افسر کے پاس فیس وصولی کا اختیار نہیں تاہم کنٹونمنٹ بورڈ کار پر 200 اور موٹر سائیکل پر 50 روپے پارکنگ فیس وصول کر رہا ہے، عدالت نے درخواست گزار کا موقف سننے کے بعد ڈپٹی اٹارنی جنرل اور دیگر سے 15 پندرہ نومبر تک جواب طلب کرلیا ہے۔واضح رہے کہ سی بریز پلازہ ویلفیئر ایسوسی ایشن نے کراچی کنٹونمنٹ بورڈ کے ایگزیکٹو افسر کی جانب سے پارکنگ فیس عائد کیے جانے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

شہبازشریف سے جواب طلب

اسلام اآباد(ویب ڈیسک) اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت کے جج کامران بشارت مفتی نے وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کے خلاف جہانگیر ترین کے 30 ارب روپے ہرجانے کے دعوے کی سماعت کی۔سماعت کے دوران جہانگیرترین کے وکیل نے کہا کہ شہباز شریف نے ان کے موکل جہانگیر ترین پر قرضے معاف کرانے کے جھوٹے الزام لگائے، جس سے ان کی ساکھ کو نقصان پہنچا۔ جہانگیر ترین نے جھوٹے اور بے بنیاد الزامات پر وزیر اعلیٰ کو سیکشن 8 کے تحت نوٹسز بھیجے گئے لیکن ان کی جانب سے معافی نہیں مانگی گئی۔ عدالت نے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو 12 نومبر کے لیے نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے جواب بھی طلب کرلیا ہے۔