All posts by Daily Khabrain

وزیراعظم نے بڑا اعلان کر دیا

اسلام آباد (نامہ نگار خصوصی) وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ کارک ملکوں کی شرکت ترقی کے خواب کو حقیقت میں بدلے گی جس سے رکن ممالک میں تعاون غربت کے خاتمے کے لئے اہم ثابت ہوگا‘ علاقائی روابط میں مضبوطی کے لئے مواصلاتی نظام کی ترقی ضروری ہے‘ کارک پروگرام کا تصور 1996 میں پیش ہوا تھا۔ بدھ کو وسط ایشیائی علاقائی اقتصادی تعاون تنظیم کارک کے پندرھویں اجلاس کے موقع پر وزیراعظم محمد نواز شریف خطاب کررہے تھے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پندرھویں اجلاس میں شرکت کے لئے آنے والے مندوبین کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ کارک ملکوں کی شرکت ترقی کے خواب کو حقیقت میں بدلے گی اور رکن ممالک میں تعاون غربت کے خاتمے کے لئے اہم ثابت ہوگا۔ وزیراعظم نے کہا کہ مضبوط علاقائی روابط کیلئے مواصلاتی نظام کی ترقی ضروری ہے،باہمی تعاون سے ہی غربت کا خاتمہ ممکن ہے ، وسط ایشیائی علاقائی اقتصادی تنظیم کے رکن ممالک میں تعاون غربت کے خاتمے میں مدد گار ثابت ہو گا ،کاریک ملکوں کی شراکت ترقی کے خواب کو حقیقت میں بدلے گی ۔وسط ایشیائی علاقائی اقتصادی تنظیم کاریک کے 15ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ کاریک پروگرام کا تصور 1996میں پیش کیا گیا جس کا مقصد رکن ملکوں میں پائیدار ترقی کے اہداف حاصل کرنا ہے اور علاقائی روابط میں مضبوطی کے لیے مواصلاتی نظام کی ترقی ضروری ہے۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم نواز شریف کا مزید کہنا تھا کہ کاریک ملکوں کی شراکت ترقی کے خواب کو حقیقت میں بدلے گی اور رکن ممالک میں تعاون غربت کے خاتمے میں مددگار ثابت ہوگا ۔۔ان کا کہنا تھا کہ علاقائی روابط میں مضبوطی کے لیے مواصلاتی نظام کی ترقی ضروری ہے ،کاریک وسط ایشیائی ممالک کی منڈیوں تک پہنچنے کا ذریعہ ہے ۔وزیراعظم نے کہا کہ کاریک وسط ایشیائی منڈیوں تک پہنچنے کا اہم منصوبہ اور رکن ممالک میں تعاون بڑھانے کے لیے اہم فورم ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کاریک ملکوں میں اہم ادارہ ہے ۔

شہباز شریف نے کہا تھا کرپشن ثابت ہوجائے تو سیاست چھوڑ دونگا، ہمارے پاس تمام ثبوت موجود ہیں: چیئرمین پی ٹی آئی

اسلام آباد(آن لائن، آئی این پی)پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) پر کرپشن کے مزید الزامات عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ کینیڈین شہری جاوید صادق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے فرنٹ مین ہیں ¾4 منصوبوں میں 26 ارب 55 کروڑ کی کرپشن ہوئی اور نیو اسلام آباد کا کٹریکٹ بھی جاوید صادق کو ہی ملا ہے ¾ دو نومبر سے قبل مزید انکشافات کرینگے ¾ جب 10 لاکھ لوگ جب اسلام آباد میں آجائیں گے تو لاک ڈاو¿ن تو خود بخود ہوجائے گا ¾سب سے پہلے آزاد عدلیہ کیلئے جدوجہد کی ¾ کرپشن کی جنگ پاکستان کی جنگ ہے ¾ طاقتور کو قانون کے تحت لانا ہو۔ اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے دعویٰ کیا کہ جاوید صادق اب تک 15 ارب روپے کمیشن وصول کرچکے ہیں اور پنجاب حکومت کی ہر ڈیل کے پیچھے یہ صاحب ہوتے ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین نے مزید الزام عائد کیا کہ 4 منصوبوں میں 26 ارب 55 کروڑ کی کرپشن ہوئی اور نیو اسلام آباد کا کنٹریکٹ بھی جاوید صادق کو ہی ملا ہے۔عمران خان نے کہاکہ دو نومبر کے دھرنے سے قبل وہ جاوید صادق کے حوالے سے مزید انکشافات کریں گے۔انہوںنے کہاکہ حکمران سمجھتے ہیں کہ کرپشن قانونی اور احتجاج غیر قانونی ہے ¾اگر پرامن احتجاج روکنے کے لیے پکڑ دھکڑ کی گئی تو سخت رد عمل کا سامنا کرنا پڑے گا۔ساتھ ہی عمران خان نے کہا کہ جب 10 لاکھ لوگ جب اسلام آباد میں آجائیں گے تو لاک ڈاو¿ن تو خود بخود ہوجائے گا۔قبل ازیں اسلام آباد ہائی کورٹ بار سے خطاب میں پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم سے لے کرپٹواری تک سب قانون کے تحت ہیں تاہم ملک میں جمہوریت نہیں بادشاہت قائم ہے، وزیراعظم نے پارلیمنٹ میں سب کے سامنے جھوٹ بولا اور کہا کہ خود کو احتساب کےلئے پیش کرتے ہیں، نواز شریف کہتے ہیں کہ فلیٹ2005میں لئےاور کلثوم نوازکہتی ہیں کہ 90ءکی دہائی میں فلیٹ لیے ¾ حسین نواز نے سب کےسامنے کہا کہ یہ مریم کی کمپنیز ہیں۔ انہوں نے کہا 4 حلقے اس لیے نہیں کھولے جارہے تھے کیونکہ دھاندلی ہوئی تھی جس کا نواز شریف نے ہری پور میں جلسے کے دوران تسلیم کیا اور الیکشن میں جو جیتا اس نے اور جو ہارا اس نے دھاندلی کاکہا ¾ جوڈیشل کمیشن نےالیکشن کمیشن کے خلاف نوٹس دیے اور 40 کوتاہیوں کی نشاندہی کی۔سربراہ تحریک انصاف نے کہاکہ نواز شریف پر نیب میں 14 کیسز ہیں لہذا اگر نیب اور ایف بی آر اگر ٹھیک ہوں گے تو سب ٹھیک ہو گا تاہم نوازشریف اور خورشید شاہ نے مل کر نیب کا سربراہ مقررکیا۔عمران خان نے کہا کہ خورشید شاہ اورنواز شریف کے خلاف نیب میں کیسز ہیں لہذا خورشید شاہ کیسے نیب کے سربراہ کی مخالفت کریں گے۔ انہوںنے کہاکہ ملک میں الیکشن ہوتے ہیں تاہم جمہوریت نہیں آتی لہذا دھرنا صاف اور شفاف الیکشن کےلئے دیا تیسری دنیا میں کونسا ڈکٹیٹر ہے جو الیکشن نہیں کرواتا۔عمران خان نے کہا کہ پاکستانی قوم پر کرپٹ مافیا اور چور بیٹھے ہیں،20 سال سے جدو جہد کررہاہوں سب سے لڑائی نہ لڑوں تو کیا کروں لہذا 2 نومبر کو کسی پارٹی کی تحریک نہیں پورے ملک کی تحریک ہے اور اس دن کرپٹ الیون سے میچ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت اور احتساب ایک ہی چیز ہے ¾جمہوریت میں پرامن احتجاج ہرکسی کاحق ہے اور ہم جمہوریت ڈی ریل کیے بغیر احتساب چاہتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ کینسر کا علاج بہت مہنگا ہے، 8 سے 10 لاکھ روپے میں ہوتا ہے تاہم شوکت خانم میں 75 فیصد مریضوں کا علاج مفت ہوتا ہے اور شوکت خانم ہسپتال 4 سو کروڑ روپے خسارہ کرتا ہے ¾ کے پی کے کی 60 فیصد آبادی کو ہیلتھ انشورنس پر لے آئے۔انہوںنے کہاکہ سب سے پہلے آزاد عدلیہ کیلئے جدوجہد کی ¾ کرپشن کی جنگ پاکستان کی جنگ ہے ، طاقتور کو قانون کے تحت لانا ہو گا جب وزیر اعظم کرپشن کرتا ہے تو ملک اور اداروں کو تباہ کرتا ہے مگر حکومت دھاندلی کی تحقیقات کیلئے تیار نہیں تاہم کرپشن میں حکومت کو ہر صورت جوا ب دینا ہو گا ۔ حکومت اپنی کرپشن بچانے کیلئے کام کر رہی ہے ۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ نواز شریف نے پارلیمنٹ میں جھوٹ بولا ، ملک چلانے کیلئے قرضے لے لے کر ملک کو گروی رکھ دیا گیا ہے ¾ تمام دروازوں پر گئے مگر انصاف نہیں ملا عمران خان نے کہا کہ جب مشر ف نے مجھے 8دن کیلئے جیل بھیجا تو وہاں کو ئی امیر آدمی قید نہیں تھا بلکہ سارے غریب تھے ¾حکمران پیسہ لوٹ کر باہر لے جا رہے ہیں مگر حکومتی وزیر کہتا ہے کہ عوام کرپشن کو بھول جائےگی ۔” جب بھی تقریر کرتا ہوں تو جلسے میں ڈیزل ڈیزل کے نعرے شروع ہو جاتے ہیں“ ۔ دو نومبر کو نواز شریف ، آصف زرداری اور مولانا فضل الرحما ن کی کرپٹ الیون سے میچ ہو گا ۔ عمران خان نے کہا کہ شہباز شریف نے کہا کہ مجھ پر کرپشن ثابت ہوجائے تو سیاست چھوڑ دونگا لوگ اب ان کی کرپشن ی داستانیں سنا رہے ہیں ایک فیکٹری سے تیس فیکٹریاں کیسے لگ گئیں جاوید صادق شہباز شریف کا دست راست ہے جاوید صادق سرمایہ کاروں کو کنٹریکٹس دیکر کمیشن لیتے ہیں جاوید صادق کینیڈا کا شہری ہے حکمران جاوید صادق سے مل کر کمیشن لے رہے ہیں اور کنٹریکٹ پر حکومت کو کمیشن دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جاوید صادق کو نیو اسلام آباد ایئرپورٹ پر کنٹریکٹ دیا گیا قائد اعظم سولر پارک میں انہیں سات فیصد کنسلٹنس کا کنٹریکٹ ملا ہے دونوں بھائیوں کیلئے کرپشن کرنا قانونی ہے دونوں بھائیوں کیلئے کرپشن کیخلاف احتجاج کرنان غیر قانونی ہے ملتان سکھر موٹر وے پندرہ ارب روپے کی کمیشن لی گئی ہمارے پاس کنٹریکٹس کی کاپیاں اور ان کی تصاویر ہیں۔عمران خان نے کہا کہ دو قومی نظریہ کے مطابق ہمیں دنیا کی امامت کرنا تھی لیکن میاں نواز شریف نے اتنی لوٹ مار کی ہے ایسے شخص کو دیکھ کر اسلام قبول کون کرے گا؟ انہوں نے کہا کہ یہی حال مولانا فضل الرحمن کا ہے میں آپ عوام سے پوچھتا ہوں کہ کیا مولانا فضل الرحمن کو دیکھ کر کوئی اسلام قبول کرے گا؟ میں جلسہ میں تقریر شروع کرتا ہوں تو پورا جلسہ ڈیزل ڈیزل کے نعرے لگانا شروع ہو جاتا ہے۔عمران خان نے کہا ہے کہ دو نومبر کوفیصلہ ہوگا پاکستان میں جمہوریت رہے گی یابادشاہت، جمہوریت ڈی ریل کئے بغیر پاناما کا احتساب چاہتے ہیں، جمہوریت ڈی ریل کئے بغیر پاناما کا احتساب چاہتے ہیں، پاناما پیپرز الزامات نہیں ثبوت ہیں، وزیراعظم رنگے ہاتھوں پکڑے گئے ہیں، وزیراعظم نے آج تک کلبھوشن یادیو کا نام نہیں لیا۔انہوں نے کہا کہ ٹی وی پر موٹوگینگ کے جھوٹ بول بول کر منہ لال ہوجاتا ہے، میری جدوجہد وزیر اعظم بننے کیلئے نہیں، پاکستان میں انتخابات تو ہتے ہیں لیکن ملک میں بادشاہت ہے، عدلیہ آزاد ہوگی تو ملک میں کرپشن کیخلاف کاروائی ہوگی۔انکا مزید کہنا تھا کہ ہم کہتے تھے دھاندلی ہوئی ہے ، چار حلقے کھولے جائیں ، چار قانون توڑنے والا وزیر اعظم رہ سکتا ہے ، جب وزیر اعظم کرپشن کرتا ہے تو ملک کے ادارے تباہ کرتا ہے، ملک کرپشن سے نہیں عدلیہ اور اداروں کی تباہی سے ختم ہوتے ہیں۔عمران خان نے خورشید شاہ کو ڈبل شاہ قرار دے دیا۔کپتان نے خواجہ آصف کو بھی آڑے ہاتھوں لے لیا اور کہا کہ خواجہ آصف کہتا ہے فکر نہ کریں لوگ پاناما کو بھول جائیں گے ، بے شرم آدمی تمہارے باپ کا پیسہ ہے جو بھول جائیں گے۔

شہباز شریف نے بڑا اعلان کر دیا

لاہور (ویب ڈیسک) وزیر اعلی شہباز شریف نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات کا جواب دیتے ہوئے کہا مجھ پر جھوٹے اور بے بنیاد الزامات لگائے گئے جبکہ عمران خان نے ماضی میں بلند و بانگ الزامات لگائے لیکن ثبوت کوئی نہیں دیا۔انہوں نے کہا عمران خان نے میٹرو بس پر 70 ارب لگنے کا دعویٰ کیا تھا اس کے علاوہ اتفاق فاو¿نڈری کا سریا لگنے کا الزام لگا حالانکہ کے وہ کئی سالوں سے بند ہے۔مجھ پر جتنے الزام لگے آج تک ایک دھیلے کا ثبوت نہیں دیا گیا۔شہباز شریف نے کہا عمران خان اسلام آباد کو بند نہیں کرنا چاہتے بلکہ سی پیک کو بند کرنا چاہتے ہیں۔ سی پیک کیخلاف سازشوں میں یہ مودی سے بھی آگے نکل گئے۔2014 کے دھرنے کی وجہ سے چینی صدر پاکستان کا دورہ نہیں کر سکے تھے ۔انہوں نے اپنی پریس کانفرنس میں کہا تحریک انصاف کو پاناما لیکس کے غبارے سے ہوا نکلنے کے بعد انھیں کچھ اور چاہیے تھا جس کیلئے آج جھوٹ کا سہارا لیا گیا۔مختلف منصوبوں کی شفاف ٹینڈرنگ کی وجہ سے 112 ارب روپے کو بچایا گیا۔وزیر اعلی نے کہا خان صاحب نے جھوٹ کی انتہا کر دی اور جاوید صادق کو میرا فرنٹ مین قرار دے دیا۔ جاوید صادق میرے جاننے والے ہیں جبکہ ارفع کریم ٹاور کا ٹھیکہ پرویز الہی کے دور میں دیا گیا۔شہباز شریف نے کہا عمران خان نے 26 ارب روپے کی کرپشن کا الزام لگایا اب میں ان کے خلاف 26 ارب روپے ہرجانے کا دعویٰ دائر کروں گا۔جاوید صادق پاکستان میں چینی کمپنی کے نمائندے ہیں اور انہوں نے چینی کمپنی کی طرف سے بڈ دی تھی اگر وہ میرے فرنٹ مین تھے تو انھیں کنٹریکٹ ملنا چاہیے تھا۔انہوں نے کہا عمران خان مخالفت میں پاک چین کا رشتہ بھی بھول گئے جبکہ خود ان کے ساتھ قرضے معاف کرانے والا شخص کھڑا ہے۔وزیر اعلی نے کہا یہ لوگ منصوبوں کی تکمیل نہیں چاہتے اور 2018 کے الیکشن سے بھاگ رہے ہیں انہیں پتا ہے کہ 2018 میں ملک اندھیروں سے نکل جائے گا۔ شہباز شریف نے بتایا کہ عمران خان کو 14 دن کا نوٹس دوں گا جواب آئے نہ آئے عدالت جاو¿ں گا اگر میرے خلاف فیصلہ آیا تو فیملی سمیت سیاست سے تائب ہو جاو¿ں گا۔ان کیخلاف فیصلہ آیا تو قوم سزا تجویز کرے گی۔

بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنرکی دفتر خارجہ طلبی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) دفتر خارجہ نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو طلب کرکے کنٹرول لائن اور ورکنگ باو¿نڈری پر جنگ بندی معاہدے کی مسلسل خلاف ورزی اور اشتعال انگیزی کے نتیجے میں جانی نقصان پر شدید احتجاج کیاہے۔ذرائع دفترخارجہ کے مطابق خصوصی ڈیسک برائے امور جنوبی ایشیا کے سربراہ نے احتجاجی مراسلہ بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کے حوالے کیا جس میں کہا گیا کہ بھارت ورکنگ باو¿نڈری اور لائن آف کنٹرول پر جنگ بندی کے معاہدے کی مسلسل خلاف ورزی کررہا ہے جس کے باعث 21 اکتوبر سے اب تک 4 پاکستانی شہری شہید ہوچکے ہیں۔

افغانی خاتون مونا لیزا ”شربت گلہ“ گرفتار

اسلام آباد (ویب ڈیسک) غیر قانونی طریقے سے پاکستانی شناختی کارڈ بنوانے والی افغان خاتون شربت گلہ کو آج صبح نوتھیہ کے علاقے میں اس کے گھر کے قریب سے گرفتار کیا گیا جب کہ اس کے شوہر اور دو بچوں کی گرفتاری کے لئے ایف آئی اے کی ٹیموں نے چھاپہ مار کارروائی شروع کر رکھی ہے۔

دھرنے سے قابل شیخ رشید بڑی مشکل میں پھنس گئے

راولپنڈی(ویب ڈیسک) متروکہ وقف املاک نے شیخ رشید کی لال حویلی سے متصل جگہ کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے 15 روز میں خالی کرنے کا حکم دیا ہے۔متروکہ وقف املاک کی جانب سے شیخ رشید کو جاری نوٹس میں کہا گیا ہے کہ لال حویلی سے متصل جگہ غیر قانونی اور تجاوزات میں شامل ہے اس لئے اسے خالی کیا جائے، لال حویلی کے ذمہ رقوم بھی ادا نہیں کی جا رہیں، اگر 15 روز میں کوئی قابل اطمینان جواب داخل نہ کرایا گیا تو لال حویلی کو خالی کرا لیا جائے گا۔دوسری جانب شیخ رشید کا متروکہ وقف املاک کی جانب سے جاری نوٹس پر ردعمل میں کہنا تھا کہ 28 تاریخ کو لال حویلی میں ایک بڑا سیاسی شو ہونے جا رہا ہے جس میں عمران خان اور طاہر القادری بھی شریک ہوں گے، سیاسی شو کو ناکام بنانے کے لئے ہمیں انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ انہیں جاری کیا گیا نوٹس بلا جواز ہے، وہ کسی نوٹس کو نہیں مانتے اور نہ ہی لال حویلی خالی کریں گے کیونکہ یہ حویلی ان کے آباو¿ اجداد کی نشانی ہے۔ شیخ رشیدکیچینل ۵ سے خصوصی گفتگو۔

کھلاڑیوں کے پش اپس لگانے کا معاملہ قومی اسمبلی تک جا پہنچا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سیاستدانوں کو قومی ٹیم کے جیت کی خوشی میں پش اپس لگانے میں بھی سازش نظر آنے لگی ہے اور کھلاڑیوں کے پش اپس لگانے کا معاملہ قومی اسمبلی تک جا پہنچا۔قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے بین الصوبائی رابطہ کے اجلاس میں حکومتی رکن رانا محمد افضل خان نے قومی کھلاڑیوں کے پش اپس لگانے پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ کھلاڑی جیت کر تو پش اپس لگاتے ہیں لیکن ہارنے پر خاموشی کیوں اختیار کرتے ہیں، کھلاڑی پش اپس لگا کر دنیا کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں جب کہ چوہدری نذیر نے رائے دی کہ کھلاڑی جیت کر شکرانے کے نوافل ادا کرتے تو زیادہ بہتر ہوتا۔

جمہوریت ڈی ریل کیے بغیر احتساب چاہتے ہیں

اسلام آباد(ویب ڈیسک)عمران خان کا کہنا ہے کہ 2 نومبر کو کسی پارٹی کی تحریک نہیں پورے ملک کی تحریک ہے اور اس دن کرپٹ الیون سے میچ ہوگا جب کہ ہم جمہوریت ڈی ریل کیے بغیر احتساب چاہتے ہیں۔اسلام آباد ہائی کورٹ بار سے خطاب میں پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم سے لے کرپٹواری تک سب قانون کے تحت ہیں لیکن ملک میں جمہوریت نہیں بادشاہت قائم ہے، وزیراعظم نے پارلیمنٹ میں سب کے سامنے جھوٹ بولا اور کہا کہ خود کو احتساب کے لیے پیش کرتے ہیں، نواز شریف کہتے ہیں کہ فلیٹ2005میں لئےاور کلثوم نوازکہتی ہیں کہ 90ئ کی دہائی میں فلیٹ لیے جب کہ حسین نواز نےسب کےسامنے کہا کہ یہ مریم کی کمپنیز ہیں۔ انہوں نے کہا 4 حلقے اس لیے نہیں کھولے جارہے تھے کیونکہ دھاندلی ہوئی تھی جس کا نواز شریف نے ہری پور میں جلسے کے دوران تسیلم بھی کیا اور الیکشن میں جو جیتا اس نے اور جو ہارا اس نے بھی دھاندلی کاکہا جب کہ جوڈیشل کمیشن نےالیکشن کمیشن کے خلاف نوٹس دیے اور 40 کوتاہیوں کی نشاندہی کی۔سربراہ تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ نواز شریف پر نیب میں 14 کیسز ہیں لہذا اگر نیب اور ایف بی آر اگر ٹھیک ہوں گے تو سب ٹھیک ہو گا لیکن نوازشریف اور خورشید شاہ نے مل کر نیب کا سربراہ مقررکیا۔عمران خان نے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کو ڈبل شاہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ خورشید شاہ اورنواز شریف کے خلاف نیب میں کیسز ہیں لہذا خورشید شاہ کیسے نیب کے سربراہ کی مخالفت کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں الیکشن ہوتے ہیں لیکن جمہوریت نہیں ا?تی لہذا دھرنا صاف اور شفاف الیکشن کے لیے دیا جب کہ تیسری دنیا میں کونسا ڈکٹیٹر ہے جو الیکشن نہیں کرواتا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستانی قوم پر کرپٹ مافیا اور چور بیٹھے ہیں،20 سال سے جدو جہد کررہاہوں سب سے لڑائی نہ لڑوں تو کیا کروں لہذا 2 نومبر کو کسی پارٹی کی تحریک نہیں پورے ملک کی تحریک ہے اور اس دن کرپٹ الیون سے میچ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت اور احتساب ایک ہی چیز ہے ، جمہوریت میں پرامن احتجاج ہرکسی کاحق ہے اور ہم جمہوریت ڈی ریل کیے بغیر احتساب چاہتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ کینسر کا علاج بہت مہنگا ہے، 8 سے 10 لاکھ روپے میں ہوتا ہے لیکن شوکت خانم میں 75 فیصد مریضوں کا علاج مفت ہوتا ہے اور شوکت خانم ہسپتال 4 سو کروڑ روپے خسارہ کرتا ہے جب کہ کے پی کے کی 60 فیصد آبادی کو ہیلتھ انشورنس پر لے آئے۔

پاکستان کو کرپشن کی حقیقت اور تاثر دونوں کا خاتمہ کرنا ہوگا،سربراہ آئی ایم ایف

اسلام آباد (ویب ڈیسک)اسلام آباد میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کرسٹین لے گارڈ نے کہا کہ آئی ایم ایف کی معاونت سے چلائے جانے والے معاشی اصلاحاتی پروگرام کی کامیاب تکمیل پر وہ پاکستان کو مبارکباد پیش کرتی ہیں۔ بہتر معاشی استحکام اور ساتھ ہی طاقت ور بیرونی بفرز اور مضبوط سرکاری مالیات سے معیشت کو ایک ٹھوس بنیاد فراہم ہوگی، بہت سی ٹیکس مستثنیات اور رعایات ختم کر دی گئی ہیں اور بلند ٹیکس محاصل سے سرکاری سرمایہ کاری اور سماجی اخراجات میں اضافہ ممکن ہوا ہے۔ تین سال پہلے کے مقابلے میں ہدفی سماجی معاونت سے فائدہ اٹھانے والے غریب خاندانوں کی تعداد 1.5 ملین بڑھ گئی ہے۔ بجلی کی بندش کا سلسلہ بتدریج کم ہوا ہے اور بجلی کے سیکٹر کی مالی کارکردگی مضبوط ہو رہی ہے۔ کاروباری ماحول کو بہتر بنانے کے لئے ایک ملک گیر حکمت عملی نافذ کی جا رہی ہے۔کرسٹین لا گارڈ نے کہا کہ پاکستان نے بہت کچھ حاصل کرلیا گیا ہے اور کافی کچھ حاصل کرنا ابھی باقی ہے سو یہ پاکستان کے لئے ایک سنہری موقع ہے کہ وہ باقی ماندہ معاشی چیلنجوں سے بھرپور طور پر نمٹے اور نجی شعبے میں مزید روزگار پیدا کرنے اور معاشرے کے تمام طبقات کے معیار زندگی کو بلند کرنے کی بنیاد ڈالے۔ مستقبل کے معاشی دھچکوں کے لئے مناسب تیاری کی خاطر مالیاتی اور بیرونی کشنز کی تعمیر کے ذریعے لچک میں مزید مضبوطی لانے کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیا۔ بلند اور زیادہ پائیدار نمو کے لئے توانائی کے سیکٹر اور ٹیکس پالیسی اور انتظام میں ضروری ڈھانچہ جاتی اصلاحات کی تکمیل، سرکاری انٹر پرائزز میں نقصانات کے خاتمے اور گورننس میں بہتری اور ایک متحرک اور برآمدات کے رجحان والے نجی شعبے کو پروان چڑھانے کے لئے مسلسل کاوشوں کی ضرورت ہوگی۔ ساتھ ہی ساتھ صحت، تعلیم، صنفی فرق کے خاتمے اور سماجی تحفظ کی فراہمی کو تقویت دینے پر مزید توجہ سے اس امر کو یقینی بنایا جا سکتا ہے کہ معیار زندگی میں اضافے کے فوائد سب تک پہنچیں۔عالمی مالیاتی ادارے کے سربراہ کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان کے پاس اپنے دیگر معاشی مسائل کو حل کرنے کا بہترین موقع ہے۔ نجی شعبے میں زیادہ سے زیادہ روزگار پیدا کرنے اور توانائی کے شعبے میں بھی اصلاحات کے لیے اقدامات کرے۔ پاکستان کو سرکاری اداروں کے خسارے کو کم کرنے اور برآمدات میں اضافے کی بھی ضرورت ہے۔ پاناما لیکس کے معاملے پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ تیزی سے ترقی کرتی ہوئی ٹیکنالوجی اور معلومات تک رسائی کی وجہ سے اب چھپنا اور راہ فرار اختیار کرنا ناممکن ہوچکا ہے، ’پاناما ہو یا بہاماس پیپرز احتساب اور شفافیت ہی آگے بڑھنے کا بہتر راستہ ہے۔ پاکستان میں کرپشن کی کوئی حقیقت یا کوئی تاثر بھی موجود ہے تو اسے ختم کرنا اور شفافیت اور احتساب کے اصولوں پر عملدرآمد کرنا ہوگا کیوں کہ کرپشن کا تاثر بھی معیشت اوربیرونی سرمایہ کاری کے لئے نقصان دہ ہے۔وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹینا لیگارڈے کا کہنا تھا کہ گزشتہ چند سالوں میں پاکستان نے نمایاں کامیابیاں حاصل کیں حکومت کی گورننس اور اقتصادی اعشاریئے بہتر ہوگئے ہیں جبکہ کرپشن کے خاتمے کے لئے کئے گئے اقدامات بھی حوصلہ افزا ہیں تاہم ایم ڈی آئی ایم ایف کا کہنا تھا کہ برآمدات ترقی کا اہم جزو ہے پاکستان کو برآمدات بڑھانے کےلئے علاقائی تجارت کو فروغ دینا ہوگا۔

دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں، جان کربی

امریکہ(ویب ڈیسک) امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان جان کربی نے کوئٹہ پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم کوئٹہ میں دہشتگردی کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے پولیس کیڈٹس کے لواحقین سے تعزیت اور زخمیوں کے اہل خانہ سے اظہار ہمدردی کرتے ہیں کیونکہ دہشت گردی کا نشانہ بننے والے افراد براہ راست عوام کی خدمت کے کیریئر سے وابستہ ہیں۔امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان جان کربی نے کہا ہے کہ اِس مشکل لمحے میں ہم پاکستان کے عوام اور حکومتِ پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ دہشت گردی کے خطرے سے نبرد آزما ہونے کے لئے ہم پاکستان اور خطے کے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر کام کرتے رہیں گے۔