تازہ تر ین

وفاقی،پنجاب کابینہ میں مزید تبدیلی کا عندیہ، کام کرنے والے ہی رہیں گے عمران خان

اسلام آباد (نامہ نگار خصوصی)کابینہ اراکین نے کہاہے کہ لاک ڈاﺅ ن کا فائدہ ہورہاہے ، عوام کو احتیاطی تدابیر اختیار کر نے کےلئے موثر مہم چلانا ہوگی جبکہ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ خود ریلیف اقدامات کی نگرانی کر رہا ہوں،غریب اور دیہاڑی دار طبقے کو سہولیات دینے میںکوئی رکاوٹ برداشت نہیں ہوگی،صوبوں کے ساتھ تعاون بڑھایا جائے،ضروری صنعتوں کو کھولنے سے لوگوں کا روزگار بحال ہوگا،کابینہ میں وہی رہے گا جو کارکردگی دکھائے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ میں خود ریلیف اقدامات کی نگرانی کر رہا ہوں،غریب اور دیہاڑی دار طبقے کو سہولیات دینے میںکوئی رکاوٹ برداشت نہیں ہوگی۔ گھر گھر راشن پہنچانے کی تجاویز پر بھی غور کیا گیا ۔ وزیراعظم نے کہاکہ صوبوں کے ساتھ تعاون بڑھایا جائے،ضروری صنعتوں کو کھولنے سے لوگوں کا روزگار بحال ہوگا۔ ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ میں چینی اور اٹا بحران کی انکوائری رپورٹ پر بحث ہوئی ، بعض وزراءنے رائے دی کہ جب انکوائری کمیٹی کو کمیشن میں تبدیل کردیا گیا تو کمیشن کی رپورٹ کا انتظار کیا جاتا۔وزیراعظم نے جواب دیاکہ میری ہدایت پر انکوائری کمیٹی کی رپورٹس جاری کی گئیں،عوام سے رپورٹس پبلک کرنے کا وعدہ پورا کردیا۔عمران خان نے کہاکہ 25 اپریل کو کمیشن۔کی رپورٹ سامنے آنے پر سخت ایکشن لوں گا،جو بھی ملوث ہوا سخت سزا دی جائے گی۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے وفاقی اور پنجاب کابینہ میں مزید تبدیلیوں کا عندیہ دے دیا۔وزیراعظم نے کہاکہ آٹا چینی بحران کے زمہ داروں کا تعین کمیشن کرے گا۔وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ کابینہ ہو یا میری انتظامی ٹیم ،بہتری کےلئے پر قدم اٹھایا جائے گا۔ذرائع کے مطابق کابینہ میں وہی رہے گا جو کارکردگی دکھائے گا۔ذرائع کے مطابق کابینہ میں ردوبدل کے اقدام پر اکثریت نے وزیراعظم کو سراہا۔ وزیر اعظم نے کہاکہ شروع دن سے کہہ رہا ہوں کرپشن پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا،گڈ گورننس اور شفافیت کو یقینی تحریک انصاف کے منشور کا حصہ ہے۔ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نے کچھی کینال منصوبے میں کرپشن کی تحقیقات نیب کے حوالے کرنے کی منظوری دے دی۔ وزیراعظم عمران خان نے ایک بارپھر واضح کیا ہے کہ آٹا چینی بحران میں جو بھی ملوث ہوا اس کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔ منگل کو وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کرونا وائرس کی موجودہ صورتحال پر بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم عمران خان نے وفاقی اور پنجاب کابینہ میں مزید تبدیلیوں کا عندیہ دےدیا۔ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہوا، اس موقع پر کچھی کینال منصوبے کی تحقیقات قومی احتساب بیورو (نیب) کے سپرد کرنے کی منظوری دی گئی۔وزیراعظم نے دوران اجلاس کہا کہ چینی بحران کے ذمے داروں کا تعین کمیشن کرے گا۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ کابینہ ہو یا میری انتظامی ٹیم، بہتری کے لیے ہر قدم اٹھایا جائےگا۔انہوں نے کہا کہ ذمے داروں کو سخت سزا دینے کا عوام سے وعدہ کررکھا ہے۔یاد رہے کہ ہفتہ 4 اپریل کو ایف آئی اے کی چینی پر رپورٹ منظر عام پر آئی، وزیراعظم نے اتوار کو 25 اپریل کو کارروائی کرنے کا اعلان کیا۔گزشتہ روز( پیر) کو وزیراعظم نے جہانگیر ترین کو ان کے عہدے سے برطرف کیا اور ساتھ ہی وفاقی کابینہ میں شامل ارکان کے عہدے بھی تبدیل کردیئے۔


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved