تازہ تر ین

نواز شریف دور حکومت میں بیت المال میں اربوں کی کرپشن ،مستحقین کونظرانداز کرکے کتنی بھاری رقم سیاسی سفارش پر تقسیم کی گئی؟تہلکہ خیز انکشاف سامنے آگیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) نواز شریف دور حکومت کے دوران پاکستان بیت المال کی جانب سے 2ارب 39کروڑ روپے سے زائد کی رقومات مستحقین کونظرانداز کرکے سیاسی سفارش پر تقسیم کرنے کا انکشاف ہوا ہے ،مالی سال 2017/18کے دوران بیت المال کے ہیڈا?فس کی جانب سے دیگر صوبوں میں قائم دفاتر کو نظر انداز کرکے اربوں روپے تقسیم کئے گئے۔ ا?ڈٹ حکام نے معاملے کی مکمل انکوائری اور ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کی سفارش کی ہے۔ا?ڈٹ حکام کی جانب سے جاری ہونے والے دستاویزات کے مطابق مالی سال 2017/18کے دوران 1ارب39کروڑ 82لاکھ روپے میرٹ کے برخلاف سیاسی شخصیات کی سفارشپر ترجیحی بنیادوں پر دئیے گئے ہیں اور بیت المال کی انتظامیہ حقیقی مستحقین کو امداد فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔ دستاویزات کے مطابق پاکستان بیت المال کی جانب سے مالی سال 2017/18کے دوران 2ارب روپے ا?ئی ایف اے پروگرام کیلئے مختص کئے گئے جس کے تحت مستحقین کو صحت ،تعلیم اور دیگر اخراجات کیلئے رقومات فراہم کرنی تھی تاہم بیت المال کے حکام نے1ارب روپے چاروں صوبوں میں قائم دفاتر کیلئے مختص کردیا جبکہ بقایا 1ارب روپے ہیڈ ا?فس کیلئے مختص کردیا جسے سیاسی شخصیات کی جانب سے دی گئی سفارشات کی بنیاد پر تقسیم کیا گیا جبکہ وفاقی دارلحکومت سمیت ملک کے 7مقامات پر قائم ریجنل ا?فسز کیلئے مختص 1ارب روپے ان دفاتر میں مستحقین کی جانب سے مالی امداد سمیت تعلیم اورصحت کیلئے جمع کرائی گئی درخواستوں کے مقابلے میں بہت کم نکلا۔ا?ڈٹ حکام کے مطابق ہیڈا?فس کا کام رقومات تقسیم کرنا نہیں بلکہ چاروں صوبوں سمیت ا?زاد کشمیر گلگت بلتستان اور اسلام ا?باد میں قائم ریجنل دفاتر کے انتظامی امور پر نظر رکھنا ہے اور ہیڈا?فس کی جانب سے اربوں روپے کے بجٹ کی تقسیم سے چاروں صوبوں میں مستحقین کی حق تلفی ہوئی ہے۔ ا?ڈٹ حکام نے ہیڈا?فس کی جانب سے رقومات کی تقسیم پر اعتراضات عائد کرتے ہوئے معاملے کی تحقیقات کرنے کی سفارش کی ہے۔


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved