تازہ تر ین

جب تک مودی برسر اقتدار ہیں، پاک بھارت سیریز کا امکان نہیں، شاہد آفریدی

(ویب ڈیسک)قومی ٹیم کے سابق کپتان شاہد خان آفریدی نے کہا ہے کہ جب تک نریندر مودی بھارت کے وزیر اعظم ہیں اس وقت تک پاکستان اور بھارت کے کرکٹ تعلقات بحال نہیں ہو سکتے۔

نریندر مودی کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے پاک ۔ بھارت تعلقات مسلسل بد سے بدتر ہوتے جا رہے ہیں اور گزشتہ سال دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات اس حد تک کشیدہ ہو گئے تھے کہ سرحدوں پر فوجیں تعینات کر دی گئی تھیں۔

گزشتہ سال بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات بدترین شکل اختیار کر گئے تھے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان 2008 کے ممبئی حملوں کے بعد سے اب تک کوئی دوطرفہ سیریز نہیں کھیلی گئی، 13-2012 میں دونوں ملکوں کے درمیان مختصر سیریز کھیلی گئی لیکن نریندر مودی کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے صورتحال مسلسل کشیدہ ہے۔

عرب خبر رساں ادارے ‘عرب نیوز’ کو انٹرویو دیتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ حکومت پاکستان مسلسل تیار ہے لیکن بھارت کی موجودہ حکومت کو دیکھتے ہوئے دونوں ملکوں کے درمیان کرکٹ تعلقات کی بحالی کا کوئی امکان نہیں، جب تک مودی برسر اقتدار ہیں، اس وقت تک مجھے ایسا ہوتا ممکن نظر نہیں آتا۔

آفریدی نے تسلیم کیا کہ کھیلوں کو دو ملکوں کے تعلقات کو بہتر بنانے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے خصوصاً ایک ایسی جگہ جہاں پاکستان اور بھارت دونوں کے لیے کرکٹ مذہب کا درجہ رکھتی ہے، لہٰذا میرا ماننا ہے کہ کھیلوں سے تعلقات بہتر ہو سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ 1987 میں بھی پاکستان اور بھارت کے تعلقات انتہائی کشیدہ تھے لیکن اس وقت کے صدر جنرل ضیاالحق نے کرکٹ ڈپلومیسی کو تعلقات کی بہتری کے لیے استعمال کیا جبکہ 2005 میں اس وقت کے صدر مملکت جنرل پرویز مشرف نے میچ دیکھنے کے لیے بھارت کا دورہ کیا تھا اور مذکورہ دورے کے نتیجے میں دونوں ملکوں نے کشمیر کی سرحد کھولنے پر اتفاق کیا تھا۔

‘عمران خان انتخابات سے قبل کیے گئے وعدے پورے کریں’

وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ بحیثت وزیر اعظم ہمیں ان سے یہ توقع نہیں رکھنی چاہیے کہ وہ دہائیوں پرانے مسئلوں کو چند سالوں میں ٹھیک کردیں گے۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ عمران خان انتخابات سے قبل کیے گئے اپنے وعدے پورے کریں، یہ ایک بہترین موقع ہے کیونکہ فوج اور عدلیہ آپ کے ساتھ ہے اور سب ایک پیج پر ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کامیابی کے لیے وزیر اعظم کے لیے موزوں وکٹ اور پچ ہے لہٰذا وزیر اعظم کو کامیابی کے لیے مضبوط ٹیم کی ضرورت ہے۔

سابق مایہ ناز آل راؤنڈر نے گینگ ریپ میں ملوث ملزمان کو سرعام سزا دینے کے موقف کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں سرعام پھانسی نہ دیں لیکن اس طرح کے جرائم میں ملوث ملزمان کو فوری طور پر کہیں اور پھانسی دیتے ہوئے مثال بنائیں۔


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved