تازہ تر ین

نواز ،زرداری نے نظام انصاف خراب کر کے لا قا نونیت سے فائدہ اٹھایا:عمران خان

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت لوگوں کو ریلیف اور انصاف کی فراہمی کے لیے ملک میں نظام عدل کو بہتر بنانے کے لیے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لانے کے لیے پرعزم ہے۔ وزیر اعظم نے سزا و جزا کے نظام کو مستحکم کرکے بدعنوان عناصر کے خلاف سخت کارروائی پر زور دیا۔

وزیر اعظم نے راوی اربن ڈویلپمنٹ پروجیکٹ میں رکاوٹوں کو دور کرنے کی ہدایت جاری کی اور والٹن ایئرپورٹ لاہور کو منتقل کرنے میں درپیش مسائل کو دور کرنے کے لیے کہا۔

عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی کے لیے عمران خان نے مقررہ مدت میں انتظامی اصلاحات پر عمل درآمد کی ضرورت پر زور دیا۔

 

وزیر اعظم نے صوبوں اور اسلام آباد میں فوجداری نظام اور سول پروسیجر کوڈ کے نفاذ سے متعلق ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ ‘گزشتہ حکومت نے نظام کو جوڑ کر لاقانونیت کا فائدہ اٹھایا’۔

بعدازاں رہائش، تعمیرات اور ترقی سے متعلق قومی رابطہ کمیٹی کے ہفتہ وار اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ لوگوں کی رہائشی ضروریات کا جائزہ لینے اور انہیں رہائش کی فراہمی کے لیے موثر منصوبہ بندی کے لیے اراضی کے ریکارڈ کی ڈیجیٹلائزیشن بہت ضروری ہے۔

چیئرمین نیا پاکستان ہاوسنگ اتھارٹی لیفٹننٹ جنرل (ر) انور علی حیدر نے لینڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹائزیشن کے ضمن میں صوبوں کی سرویئر جنرل آف پاکستان کو ڈیٹا کی فراہمی کے حوالے سے کارکردگی پر آگاہ کیا۔

صوبائی چیف سکریٹریز نے اجلاس کو صوبوں کی جانب سے اراضی ریکارڈ کو ڈیجیٹلائزیشن کے لیے اعداد و شمار کی فراہمی کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے لینڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹائزیشن کے ضمن میں ڈیٹا کی فراہمی کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ لینڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹائزیشن سے تعمیرات کے شعبے میں بہتر منصوبہ بندی اور قبضہ مافیا کی سرکوبی میں نمایاں بہتری سامنے آئے گی۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین جاوید غنی نے ٹیکس مراعات پیکیج، ایف بی آر پورٹل اور بلڈرز اور ڈویلپرز کی رجسٹریشن میں اضافے کا جائزہ پیش کرتے ہوئے اجلاس کو بتایا کہ ملک بھر میں اور بالخصوص پنجاب میں تعمیراتی سرگرمیوں میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے صوبے میں گرین ایریاز کے تحفظ کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات اور مستقبل کے ایکشن پلان پر عملدرآمد پر تفصیلی بریفنگ دی اور کہا کہ ماضی میں تعمیراتی منصوبوں، خصوصا ہاوسنگ اسکیموں کے بے ترتیب پھیلاو کی وجہ سے گرین ایریاز میں کمی اور ماحولیاتی آلودگی میں بتدریج اضافے کا سامنا کرنا پڑا۔

انہوں نے کہا کہ 2019 سے صوبائی حکومت نے تمام متعلقہ اداروں کی موثر کوارڈینیشن اور سول سوسائٹی کی شمولیت کی بدولت گرین ایریاز میں اضافے کاجامع ایکشن پلان مرتب کر کے اس پر عملدرآمد کا آغاز کر دیا ہے۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے اربن فاریسٹ لبرٹی مارکیٹ لاہور کی طرز پر صوبے کے مختلف شہروں میں اس سال اربن فاریسٹ منصوبوں کے قیام اور گرین کور میں اضافے کے ایکشن پلان پر عملدرآمد پر شرکا کو آگاہ کیا۔

اس کے علاوہ صوبے میں تعمیراتی منصوبوں میں گرین ایریاز کے تحفظ کے حوالے سے قوائد و ضوابط وضع کرنے کے حوالے سے بھی شرکا کو آگاہ کیا گیا۔

وزیراعظم کے مشیر برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم نے گرین بلڈنگ کوڈ کو ہاوسنگ اسکیموں کے ساتھ پائلٹ کرنے اور بڑے شہروں میں اربن فلڈنگ پر قابو پانے کے حوالے سے مشاورت پر اجلاس کو آگاہ کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے ماحولیاتی تحفظ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ماحولیاتی آلودگی کے اثرات بڑے شہروں میں خطرناک حد تک پہنچنے سے پہلے ہمیں بروقت اقدامات اٹھانے ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ماحولیاتی آلودگی ایک ‘خاموش قاتل’ ہے جس سے عوام الناس کی صحت پر برے اثرات مرتب ہوتے ہیں، موجودہ حکومت نے ماحولیاتی آلودگی کے برے اثرات کے پیش نظر ماحولیاتی تحفظ کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے ہیں۔

وزیراعظم نے تمام صوبوں میں شجر کاری مہم کے حوالے سے اقدامات، گرین ایریاز کے تحفظ کے لیے مربوط حکمت عملی اور مانیٹرنگ کا میکانزم وضع کرنے کی ہدایت کی۔

چیئرمین سی ڈی اے نے وفاقی دارالحکومت میں انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کے جاری منصوبوں پر پیشرفت اور مستقبل کے منصوبوں کے حوالے سے اجلاس کو بریفنگ دی۔

وزیراعظم عمران خان نے وفاقی دارالحکومت میں ملٹی اسٹوری کنسٹرکشن اور گرین ایریا کے تحفظ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے ہدایت کی کہ تعمیراتی منصوبوں میں گرین ایریاز کے تحفظ کا خاص خیال رکھا جائے۔


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved