تازہ تر ین

واپڈا یا سوئی گیس کی ٹیم بھی موجودہ ٹیسٹ سکواڈ کو شکست دے سکتی ہے:کامران اکمل

یہ ٹیسٹ کرکٹ ہے نہ کہ گریڈ 2 ایونٹ جہاں آپ کو’ ریلو کٹوں ‘کی ضرورت ہے: وکٹ کیپر بلے باز

لاہور (ویب ڈیسک ) وکٹ کیپر بلے باز کامران اکمل جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے لئے حالیہ اعلان کردہ قومی سکواڈ سے انتہائی ناخوش ہیں۔ جمعہ کو نومنتخب چیف سلیکٹر محمد وسیم کی جانب سے اعلان کردہ 20 کھلاڑیوں کے انتخاب کے بارے میں 39 سالہ کامران اکمل نے سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے انہوں نے کبھی اس طرح کا کمزور سکواڈ کبھی نہیں دیکھا تھا۔کامران اکمل کا کہنا تھا کہ وہ لکھ کر دے سکتے ہیں کہ واپڈا اور سوئی سدرن گیس کمپنی کی ٹیمیں بھی اس سکواڈ کو شکست دے سکتی ہیں، مجھے موقع ملے تو میں واپڈا کے کھلاڑیوں کی ایک ٹیم تیار کروں گا اور شرط لگا سکتا ہوں کہ وہ 4 دن کے اندر اس ٹیم کو شکست دے دیں گے۔ کامران اکمل کا مزید کہنا تھا کہ جنوبی افریقہ جیسی ٹاپ کلاس ٹیم کیخلاف سیریز کیلئے سکواڈ میں ایسے امتزاج کے کھلاڑیوں کو دیکھ کر وہ چونک گئے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ آپ صرف دو بیٹسمینوں بابراعظم اور اظہر علی کے ساتھ میچ نہیں جیت سکتے، بابراعظم ابھی انجری سے واپس آئے ہیں جبکہ اظہرعلی کی بیٹنگ جنوبی افریقہ کے بائیں ہاتھ کے سپنرز کے خلاف ڈانواڈول ہوسکتی ہے۔ کامران اکمل نے کہا کہ وہ حیرت زدہ ہیں کہ اس طرح کی ناتجربہ کار بیٹنگ لائن اپ جنوبی افریقہ کے بائولنگ اٹیک سے کیسے بچ پائے گی۔انہوں نے کہا کہ میں اعتراف کرتا ہوں کہ ہم مہمان ٹیم کے خلاف ٹرننگ پچ تیار کریں گے لیکن ان کے لیے بھی ہمیں مضبوط بیٹنگ لائن اپ درکار ہے۔ کامران اکمل نے کہا کہ میری رائے میں یہ پاکستان کی ٹیسٹ تاریخ میں سب سے زیادہ ناتجربہ کار بیٹنگ لائن ہے۔ قومی ٹیم کے اوپنر کا مزید کہنا تھا کہ طویل ترین فارمیٹ میں ٹیم کو آدھے بائولرز اور آدھے بلے بازوں کی نہیں بلکہ مکمل کھلاڑیوں کی ضرورت ہے ،یہ ٹیسٹ کرکٹ ہے نہ کہ گریڈ 2 ایونٹ جہاں آپ کو’ ریلو کٹوں ‘کی ضرورت ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ٹیم کا انتخاب حالیہ ماضی میں بھی ملکی کرکٹ کو درپیش ایک اہم مسئلہ رہا تھا


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved