تازہ تر ین

موسیٰ گیلانی کے مقابلے میں بہتر امیدوار ہوتا تو بیٹی کو انتخاب میں کھڑا نہ کرتا: شاہ محمود

ملتان: (ویب ڈیسک) تحریک انصاف کے وائس چیئرمین اور سابق وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود نے حلقہ این اے 157 سے بیٹی کو امیدوار نامزد کرنے پر تنقید کرنے والوں کو جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر پارٹی کے پاس موسیٰ گیلانی کا مقابلہ کرنے کے لیے کوئی بہتر امیدوار ہوتا تو یہ قدم میں کبھی نہ اٹھاتا۔
خیال رہے کہ یہ نشست ان کے بیٹے زین قریشی نے خالی کی تھی جنہوں نے پنجاب اسمبلی کے پی پی۔217 سے صوبائی اسمبلی کی نشست سے الیکشن لڑا تھا اور حال ہی میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار سلمان نعیم کو شکست دی تھی۔ اس حلقے میں ضمنی انتخاب کے لیے سابق وزیر خارجہ کی بیٹی مہر بانو قریشی، سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے سید علی موسیٰ گیلانی، انجینئر وسیم عباس اور سیف الرحمٰن قریشی سمیت 18 سے زائد امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے۔ اس پر پارٹی کے مقامی رہنما انجینئر وسیم عباس کی قیادت میں پی ٹی آئی کے کارکنوں کی بڑی تعداد نے پارٹی میں خاندانی سیاست کو فروغ دینے پر شاہ محمود اور خاندان کے خلاف الیکشن کمیشن آفس کے باہر مظاہرہ کیا تھا۔
ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بیٹی کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے-157 میں امیدوار نامزد کرنے پر پی ٹی آئی کارکنان کی تنقید سے متعلق سابق وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ مجھے کارکنان کے جذبات کا احترام ہے، میں نے دیانت داری سے پارٹی کے مفاد میں یہ فیصلہ کیا۔ یہ قدم میں نے شوق سے نہیں اٹھایا بلکہ صرف عمران خان کے بیانیے کو زندہ کرنے کے لیے ایک کٹھن اور مشکل فیصلہ کیا ہے، میں ان دوستوں سے رابطہ کر کے انہیں حالات سے آگاہ کروں گا اور جب ان کے سامنے تمام حقائق آئیں گے تو وہ سب عمران خان کے ٹکٹ کا احترام کریں گے۔
ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ حلقے میں انتخابی مہم کا آغاز عاشورہ کے بعد کریں گے، ہمارا ایک روایتی خاندان ہے، جب قوم پر مشکل وقت آتا ہے تو قوم کی بیٹیوں کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ ملک کی نصف آبادی خواتین پر مشتمل ہے، ان کے حقوق ہیں، ان کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں پر مہربانو بی بی جو صحافت سے بھی وابستہ رہی ہیں، ان کا کیس بہتر طریقے سے پیش کر سکیں گی۔ ہماری مشرقی روایات ہیں، میرا فرض ہے میں مہم چلاؤں گا، زین قریشی بھی مہم میں حصہ لیں گے اور خواتین کی حد تک مہر بانو ضرور مہم چلائیں گی۔
بلوچستان میں ہیلی کاپٹر حادثے میں فوجی افسران کی شہادت پر میں آن لائن مذموم مہم میں مبینہ طور پر پی ٹی آئی کارکنان کے ملوث ہونے کے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ یہ مسلم لیگ (ن) کا پروپیگنڈا ہے، یہ ان کا ڈس انفارمیشن سیل ہے جو کام کر رہا ہے جبکہ حقائق اس کے برعکس ہیں۔ ہم ان شہدا کو سلام پیش کرتے ہیں، چیئرمین پی ٹی آئی لیفٹیننٹ جنرل سرفراز علی کے اہلِ خانہ سے تعزیت کے لیے بھی گئے، اس حوالے سے ہماری پالیسی واضح ہے، انہوں نے جو قربانیاں دیں ہم اسے خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔


اہم خبریں





دلچسپ و عجیب
کالم
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2021 All Rights Reserved Dailykhabrain