All posts by Faisal Khan

پاکستان مذاکرات کیلئے مخلص لیکن بھارت پیچھے ہٹ رہا ہے، شاہ محمود قریشی

نیویارک(ویب ڈیسک) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان بھارت سے دوطرفہ مذاکرات کے لئے مخلص ہے لیکن بھارت پیچھے ہٹ رہا ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکا میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر تجانی محمد بندے، سلامتی کونسل کے صدر انکمبینٹ ویزلی نیبنزیا اور جنرل سیکریٹری انتونیو گوتریز سے الگ الگ ملاقاتیں کیں ہیں۔ ان ملاقاتوں میں مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی سے متعلق معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔سرکاری میڈیا کے مطابق انتونیو گوتریز سے ملاقات میں وزیرخارجہ نے امریکا ایران تنازع کی وجہ سے مشرق وسطیٰ میں پیدا ہونے والی کشیدگی ختم کرانے کے لئے پاکستانی اقدامات، اپنے حالیہ دورہ سعودی عرب و ایران اور خطے میں کشیدگی کم کرنے کے لئے وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایات سے آگاہ بھی کیا، انہوں نے کہا کہ مشرق وسطیٰ میں صورتحال سنگین ہے اورخطہ مزید کسی نئی محاذ آرائی کا متحمل نہیں ہوسکتا۔ جس پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے خطے میں قیام امن کیلئے پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔شاہ محمود قریشی نے اپنی ٹوئٹس میں کہا ہے کہ گزشتہ 5 ماہ کے دوران پاکستان کی درخواست پر چین کی حمایت کے باعث اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ارکان کو دوسری مرتبہ مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر بریفنگ دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی و سلامتی کونسل کے صدور اور جنرل سیکریٹری سے ملاقاتیں کی ہیں، جن میں انہوں نے 5 اگست 2019 کے بعد بے گناہ اور نہتے کشمیریوں پر بھارت کی ریاستی دہشت گردی سے آگاہ کیا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ مسئلہ کشمیر بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ تنازع ہے جو 7 دہائیوں سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ایجنڈے میں شامل ہے۔ عالمی فورمز میں ایک بار پھر عالمی فورمز کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق جلد از جلد اس بین الاقوامی تنازع کے حل کرنے کی اشد ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔دوسری جانب شاہ محمود قریشی نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا کہ 5 اگست 2019 سے 80 لاکھ کشمیریوں کو مسلسل کرفیو کا سامنا ہے، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں، مسئلہ کشمیر سلامتی کونسل کے ایجنڈے پر موجود ہے، کئی ملکوں کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش ہے اور کئی ملک دوطرفہ بات چیت پر زور دے رہے ہیں۔ پاکستان بھارت سے دوطرفہ مذاکرات کے لیے مخلص ہے لیکن بھارت پیچھے ہٹ رہا ہے۔

‘طالبان نے حملوں میں کمی پر آمادگی کا اظہار کردیا’،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

لاہور (ویب ڈیسک)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ طالبان نے افغانستان میں پرتشدد حملوں میں کمی پر ‘آمادگی’ کا اظہار کردیا۔شاہ محمود قریشی کے مذکورہ بیان کے بعد قیاس آرائیوں کا سلسلہ جاری ہے کہ امریکا اور طالبان کے مابین مذاکرات پر مبنی نئی پیش رفت کے نتائج قریب ہیں۔واضح رہے کہ طالبان اور امریکا کے مابین مذاکرات کئی مرتبہ تعطل کا شکار ہوئے ہیں۔واشنگٹن نے مطالبہ کیا تھا کہ تعطل شدہ مذاکرات سے قبل طالبان پرتشدد حملوں میں کمی لائیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک ویڈیو بیان میں کہا کہ ‘آج مثبت پیشرفت ہوئی ہے، طالبان نے تشدد کو کم کرنے کے لیے اپنی رضامندی ظاہر کردی ہے’۔انہوں نے مزید کہا کہ ‘(امریکا کی جانب سے) جو ایک مطالبہ تھا […] یہ امن معاہدے کی سمت ایک قدم ہے’۔اس ضمن میں وزیر خارجہ مزید تفصیلات بنانے سے گریزاں رہے۔دوسری جانب طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ طالبان ان تبصروں پر غور کر رہے ہیں۔یاد رہے کہ 8 ستمبر کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ اعلان کر کے سب کو حیران کردیا تھا کہ انہوں نے سینئر طالبان قیادت اور افغان صدر اشرف غنی کو کیمپ ڈیوڈ میں ملاقات کی دعوت دی تھی تاہم آخری لمحات میں انہوں نے طالبان کے ایک حملے میں ایک امریکی فوجی کی ہلاکت پر مذاکرات منسوخ کردیے تھے۔اس پر ردِ عمل دیتے ہوئے طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیا تاہم اب امریکا کو پہلے کے مقابلے میں زیادہ ’غیر معمولی نقصان‘ کا سامنا ہوگا لیکن پھر بھی مستقبل میں مذاکرات کے لیے دروازے کھلے رہیں گے۔امریکا کے ساتھ مذاکرات منسوخ ہونے کے بعد طالبان وفد 14 ستمبر کو روس بھی گیا تھا، جس کے بارے میں طالبان رہنما نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا تھا کہ دورے کا مقصد امریکا کے ساتھ مذاکرات بحال کرنے کی کوشش نہیں بلکہ امریکا کو افغانستان سے انخلا پر مجبور کرنے کے لیے علاقائی حمایت کا جائزہ لینا ہے۔بعد ازاں دسمبر 2019 میں دونوں فریقین کے مابین قطر میں مذاکرات دوبارہ شروع ہوئے لیکن افغانستان میں بگرام فوجی اڈے کے قریب ہونے والے ایک حملے کے بعد پھر مذاکرات تعطل کا شکار ہوگئے تھے۔طالبان نے اب تک افغان حکومت کے ساتھ مذاکرات کرنے سے انکار کیا ہے۔طالبان افغان حکومت کو غیر قانونی سمجھتی ہے اور خدشہ موجود ہے کہ امریکیوں کے ساتھ کسی بھی معاہدے سے قطع نظر افغان حکومت سے لڑائی جاری رہے گی۔

اگر نتائج نہیں ملے تو گھبرانا نہیں چاہیے،اچھے نتائج ملیں گے، مصباح الحق

لاہور(ویب ڈیسک) چیف سلیکٹر مصباح الحق کا کہنا ہے کہ اگر ہمیں رزلٹ نہیں ملے تو گھبرانا نہیں چاہیے، اچھے نتائج ملیں گے۔لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران ہیڈ کوچ وچیف سلیکٹر مصباح الحق نے کہا کہ شائقین کرکٹ کو پاکستان میں سیریز کی مبارکباد دیتا ہوں، دو دن کی محنت سے ٹیم بنائی ہے محمد حفیظ ابھی بھی پاکستان ٹیم کے لیے اچھا پرفارم کرسکتا ہے جب کہ کامران اکمل، سلمان بٹ سمیت ہرکھلاڑی کی پرفارمنس دیکھ رہے ہیں۔مصباح الحق کا کہنا تھا کہ اگر ہمیں رزلٹ نہیں ملے تو گھبرانا نہیں چاہیے، اچھے نتائج ملیں گے، ہم کوشش کررہے ہیں کہ ورلڈ کپ سے پہلے بہتر سے بہتر کمبی نیشن بنالیں، پاکستان سپر لیگ کے بعد کافی جواب ملیں گے اور ٹیم کی ایک شیپ بنتی دکھائی دے گی۔ایک سوال کے جواب میں ہیڈ کوچ نے کہا کہ ہم نے آسٹریلیا میں نئے کھلاڑیوں کو چانس دیا اور شاداب خان پر کام ہورہا ہے ، عثمان قادر کو بیک اپ کے لیے رکھا ہے۔

سعودی عرب خواتین کو بااختیار بنانے میں پاکستان و بھارت سے بھی آگے

ریاض (ویب ڈیسک)گزشتہ تین سال سے سعودی عرب میں اصلاحات کا سلسلہ جاری ہیں اور حکومت نے کئی اصلاحات متعارف کراتے ہوئے خواتین کو خود مختار بھی بنایا ہے۔سعودی عرب میں گزشتہ 2 سال کے دوران جہاں خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت دی گئی، وہیں خواتین

کو مرد حضرات کے ساتھ ملازمت کرنے، انہیں اداکاری کرنے، انہیں مرد سرپرست کی اجازت کے بغیر بیرون ملک کا دورہ کرنے سمیت کئی طرح کی آزادیاں دی گئی ہیں۔سعودی عرب کی ان ہی اقدامات کی وجہ سے عالمی بینک نے اسے خواتین سے متعلق اصلاحات بنانے اور انہیں خود مختار بنانے والا سب سے ’بہترین ملک‘ قرار دیا ہے۔عالمی بینک کی جانب سے جاری کردہ ’خواتین، تجارتی سرگرمیاں اور قوانین‘ کے نام سے جاری کردہ 2020 کی رپورٹ میں سعودی عرب کو خواتین کو خود مختار بنانے اور ان کے لیے اصلاحات بنانے کے

حوالے سے سب سے بہترین ملک قرار دیا ہے۔رپورٹ میں 2017 سے اب تک کے ان ممالک کا جائزہ لیا گیا ہے جنہوں نے گزشتہ 2 سال کے دوران خواتین کے حوالے سے زیادہ سے زیادہ قانونی سازی کرنے سمیت انہیں خود مختار بنانے کے حوالے سے عملی اقدامات کیے ہوں۔رپورٹ میں پاکستان، بھارت، بنگلادیش، سعودی عرب، امریکا، جرمنی، برطانیہ، فرانس، متحدہ عرب امارات، مصر، تھائی لینڈ، چین، جاپان، ترکی اور سنگاپور سمیت دنیا کے 190 ممالک میں 8 شعبہ جات کو دیکھا گیا ہے۔عالمی بینک نے شادی، بچوں کی پرورش، خواتین کے لیے کاروباری مواقع، صنعت و تجارت کی قیادت، ریٹائرمنٹ، صحت اور کام کی جگہ سے متعلق اصلاحات سمیت 8 شعبوں میں 190 ممالک کی پیمائش کی۔عالمی بینک نے تمام شعبہ جات میں اصلاحات کرنے والے ممالک کے لیے 100 نمبر رکھے جس میں سے سعودی عرب نے 70 سے زائد اور تقریبا 71 نمبر حاصل کیے۔سعودی عرب کے نمبرز حاصل کرنے کی رفتار میں 38 فیصد سے زائد اضافہ دیکھا گیا۔اس سے قبل سعودی عرب کے تمام 8 شعبہ جات میں 40 سے بھی کم نمبرز تھے تاہم 2017 کے بعد کی جانے والی اصلاحات کے بعد سعودی عرب نے 70 سے زائد نمبر حاصل کیے۔اگرچہ سعودی عرب مجموعی طور پر خواتین کی اصلاحات کے حوالے سے تقریبا 70 ممالک سے پیچھے ہے تاہم وہ گزشتہ 2 سال میں خواتین کے لیے اصلاحات و اقدامات کرنے کے حوالے سے سب سے پہلے نمبر پر ہے۔سعودی عرب سے آگے والے نمبرز پر موجود ممالک پہلے بھی اپنی اصلاحات کی وجہ سے آگے تھے تاہم سعودی عرب اصلاحات کی وجہ سے پاکستان، بنگلا دیش، مصر، متحدہ عرب امارات، ملائیشیا، تیونس، لبنان،سری لنکا اور ازبکستان جیسے ممالک سے آگے چلا گیا۔خواتین کو خودمختار بنانے اور ان کے لیے اصلاحات کرنے سمیت عالمی بینک کے 8 شعبوں میں پاکستان نے سعودی عرب سے بھی کم نمبر حاصل کیے اور پاکستان کے نمبرز 49 رہے۔بھارت کے نمبرز 74 رہے تاہم وہ گزشتہ 2 سال میں خواتین سے متعلق اصلاحات کرنے کے حوالے سے سعودی عرب سے پیچھے رہا۔اسی طرح بنگلادیش کے نمبرز بھی 49 رہے جبکہ تیونس کے 70، یو اے ای کے 56، لبنان کے 52، مصر کے 45، عراق 45، ایران 31، افغانستان 38 اور فلسطینی علاقے غزا کے 26 نمبرز رہے۔

صرف ٹویٹ کرنے سے عمران خان کی ناکامیاں چھپ نہیں سکتیں، شہبازشریف

لندن(ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کہا ہے کہ ٹویٹ کرنے سے عمران نیازی کی قومی مفادات کی نگہبانی میں ناکامی چھپ نہیں سکتی۔مقبوضہ جموں وکشمیر پر سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے پر چین کا شکریہ کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا کہنا تھا کہ چین کی قیادت کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ انہوں نے مقبوضہ جموں وکشمیر کے عوام کے حقوق کے لئے عملی کردارادا کیا۔شہبازشریف نے کہا کہ سلامتی کونسل مقبوضہ جموں وکشمیر کے عوام کے خودارادیت کے ناقابل تنسیخ حق کے وعدے کو پورا کرے، 162 دن سے زائد عرصہ سے مسلسل کرفیو ختم کرانے کے لئے بھارتی درندگی کے خلاف عملی اقدام اٹھایا جائے، سلامتی کونسل کے اجلاس نے جموں وکشمیر میں حالات معمول پر ہونے کا بھارتی پروپیگنڈہ دفن کردیا، مقبوضہ کشمیر کا مسلمہ متنازعہ ہے بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں، یہ سچائی بھارتی جھوٹ سے چھپ نہیں سکتی، کشمیر کے بہادر عوام نے تحریک آزادی کشمیر کے چراغ کی لو کم نہیں ہونے دی، آزادی مقبوضہ کشمیر کے عوام اور شکست بھارت کا مقدر ہے۔صدر مسلم لیگ (ن) کا کہنا تھا کہ ٹویٹ کرنے سے عمران نیازی کی قومی مفادات کی نگہبانی میں ناکامی چھپ نہیں سکتی، افسوس کے ساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ حکومت مقبوضہ کشمیر کے اہم ترین قومی معاملے پر مو¿ثر سفارتکاری نہیں کرسکی، لیکن ہم اور پوری پاکستانی عوام جموں وکشمیر کے مظلوم عوام کے حقوق کے لئے اپنا کردار پوری قوت سے ادا کرتے رہیں گے۔

خاتون ٹیوشن ٹیچر کو زیادتی میں ناکامی پر شاگرد نے قتل کردیا

کراچی(ویب ڈیسک) پولیس نے 10 روزقبل قتل ہونے والی خاتون ٹیچرکا معمہ حل کرتے ہوئے نوجوان شاگرد کوگرفتارکرلیا۔کراچی میں سرجانی انویسٹی گیشن پولیس نے 10 روزقبل خاتون کے قتل کا معمہ حل کرتے ہوئے شاگرد نوجوان کو گرفتارکرلیا جومقتولہ یاسمین سے ٹیوشن پڑھنے آتا تھا۔پولیس کے مطابق سرجانی ٹاﺅن کے علاقے سیکٹر36 بی میں 5 جنوری کو گھرسے خاتون کی گلا کٹی لاش ملی جس کا مقدمہ درج کرکے پولیس نے تحقیقات کی تو انکشاف ہوا کہ قتل کی واردات میں مقتولہ کا پڑوسی 19 سالہ محسن ملوث ہے جوپہلے اپنے بہن بھائیوں کے ہمراہ یاسمین کے گھرآیا تھا اور چائے پینے کے بعد چلا گیا۔گھرپریاسمین اکیلی تھی۔ یہ دیکھ کر ملزم واپس یاسمین کے گھر آیا اور اس کے ساتھ دست درازی کی کوشش کی تو خاتون نے مزاحمت کرتے ہوئے محلے داروں اور اس کی ماں کو بتانے کی دھمکی دی تو اس نے بدنامی کے خوف سے یاسمین کو تیز دھار آلے کے وارسے گلا کاٹ کر قتل کر دیا۔ملزم واقعے کو ڈکیتی کا روپ دینے کے لیے مقتولہ کا موبائل اور پرس چوری کر کے فرار ہوگیا تاہم پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے اس کی نشاندہی پر آلہ قتل بھی برآمد کرلیا۔

سلامتی کونسل میں مسئلہ کشمیر سے متعلق اجلاس پر بھارت تلملا اٹھا

نئی دہلی(ویب ڈیسک) ہمیشہ کی طرح ایک بار پھر بھارتی حکومت سلامتی کونسل میں مسئلہ کشمیر سے متعلق اجلاس پر تلملا اٹھی ہے۔پاکستان اور چین کی کاوشوں کے بعد سلامتی کونسل میں مسئلہ کشمیر سے متعلق اجلاس پر بھارتی حکومت تلملا اٹھی، بھارتی حکومت نے ہمیشہ کی طرح کشمیر کے مسئلے پر روائیتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ چین مستقبل میں مسئلہ کشمیر سے متعلق اس طرح کے اقدامات سے پرہیز کرے۔گزشتہ روز پاکستان اور بھارت کے درمیان 70 سال سے زائد دیرینہ مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل کا اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر غور کیا گیا۔ گزشتہ برس اگست 2019 کے بعد مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل کا منعقد ہونے والا یہ تیسرا اہم اجلاس ہے جس کے لیے پاکستان نے دوست ملک چین کے ساتھ مسلسل کوششیں کیں اور یہ اجلاس عمل میں آیا۔واضح رہے مقبوضہ جموں و کشمیر اس وقت شدید لاک ڈاﺅن کا شکار ہے جہاں تحریرو تقریر پر پابندی کے ساتھ ساتھ انٹرنیٹ بھی بند ہے اور درجنوں کشمیریوں کو بھارتی افواج نے شہید کیا ہے جب کہ بھارتی فوجیوں کے زیرِ حراست افراد کی تعداد ہزاروں میں پہنچ چکی ہے۔

فیصل واوڈا کی کسی بھی ٹاک شو میں شرکت پر پابندی عائد

لاہور (و یب ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے نجی چینل کے پروگرام میں فوجی بوٹ لانے پر وفاقی وزیر فیصل واڈا پر کسی بھی ٹاک شو پر آئندہ دو ہفتوں کے لیے شرکت پر پابندی عائد کردی۔اس ضمن میں وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے ٹویٹ میں تصدیق کی کہ وزیراعظم نے وفاقی وزیر سے نجی ٹی وی کے ٹاک شو میں ان کے رویے پر وضاحت بھی طلب کرلی۔انہوں نے ٹویٹ میں کہا کہ ‘وزیراعظم نے فیصل واڈا کی کسی بھی ٹاک شو پر آئندہ دو ہفتوں کے لیے شرکت پر پابندی عائد کردی ہے’۔واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اور وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واڈا کو نجی چینل کے پروگرام میں ‘فوجی بوٹ’ لانے پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔دوران گفتگو صورتحال اس وقت انتہائی مضحکہ خیز ہوگئی جب فیصل واڈا نے ‘فوجی بوٹ’ میز پر رکھتے ہوئے کہا تھا کہ ‘مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی نے لیٹ کر بوٹ کو عزت دی ہے’۔انہوں نے کہا تھا کہ ‘یہ ہے آج کی جمہوری مسلم لیگ، لیٹ کر چوم کر بوٹ کو عزت دو’۔اس موقع پر پروگرام کے میزبان کاشف عباسی نے کہا تھا کہ ‘میں تو سمجھا کہ آپ بندوق لے آئے ہیں، یہ تو بندوق سے بھی زیادہ خطرناک چیز لائے ہیں۔’علاوہ ازیں پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں وفاقی وزیر فیصل واڈا کی جانب سے غیراخلاقی حرکت اور ریاستی ادارے کے وقار کو مجروح کرنے کی کوشش پر پروگرام اور اس کے میزبان پر 60دن کی پابندی عائد کردی ہے۔پیمرا نے وفاقی وزیر کی اس حرکت کا نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ پروگرام کے دوران فیصل واڈا کی جانب سے اٹھائے گئے اعتراضات انتہائی غیرسنجیدہ اور توہین آمیز تھے بلکہ انہوں نے ایک ریاستی ادارے کے وقار کو مجروح کرنے کی بھی کوشش کی۔دوسری جانب نجی چینل کے ٹاک شو میں فوجی بوٹ دکھا کر قومی ادارے کی ساکھ کو مجروح کرنے کی کوشش پر وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واڈا کے خلاف مقدمے کے اندراج کی درخواست سماعت کے لیے منظور کر لی گئی۔مقامی وکیل رانا نعمان ایڈووکیٹ اور مدثر چوہدری ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر درخواست میں ایس ایچ او تھانہ پرانی انار کلی کو فریق بنایا گیا ہے۔درخواست گزاروں نے موقف اپنایا کہ فیصل واڈا نے ٹاک شو میں فوجی بوٹ دکھا کر قومی سلامتی کے اداروں کی تضحیک کی اور ان کا یہ عمل اداروں کی ساکھ متاثر کرنے کے مترادف ہے۔فیصل واڈا کو ان کے اس عمل پر سوشل میڈیا پر تنقید کا سامنا ہے اور ‘ٹوئٹر’ پر PTIDisrespectsArmy# ٹاپ ٹرینڈ بن گیا تھا۔ سینئر صحافیوں سمیت متعدد ٹوئٹ صارفین نے فیصل واڈا کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔صحافی مہر بخاری نے کہا تھا کہ ‘جب قانون کی بالا دستی نہ رہے، جب ریاستی ادارے اپنا اعتماد کھو دیں تو عوامی نمائندے قرآن پاک پر حلف لے کر الزام سے بری ہونے کی کوشش کرتے ہیں اور وفاقی وزیر ٹی وی پر دوران پروگرام بوٹ دکھاتے ہیں’

میجر جنرل آصف غفور کا تبادلہ، بابر افتخار نئے ڈی جی آئی ایس پی آر تعینات

راولپنڈی (ویب ڈیسک)پاک فوج میں تقرر اور تبادلے کرتے ہوئے میجر جنرل بابر افتخار کو شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کا ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) تعینات کر دیا گیا ہے۔دوسری جانب میجر جنرل آصف غفور کا تبادلہ کرکے انہیں جی او سی 40 ڈویژن (اوکاڑہ) تعینات کردیا گیا۔بعد ازاں میجر جنرل آصف غفور نے سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹوئٹر آئی ایس پی آر کے اکاﺅنٹ پر اپنے پیغام میں کہا کہ الحمداللہ، ان سب کا شکریہ جن کے ساتھ میں اپنے دور میں منسلک رہا، میں تمام میڈیا کا شکر گزار ہوں، پاکستانی عوام کی محبت اور سپورٹ پر ان کا بھی تہہ دل سے شکر گزار ہوں۔انہوں نے نئے ڈی جی آیس پی آر کے لیے نیک خواہشات کا بھی اظہار کیا۔علاوہ ازیں انہوں نے ٹوئٹر پر اپنے ذاتی اکاو¿نٹ پر ایک پیغام میں کہا کہ آپ کی محبت اور حمایت کا شکریہ، مضبوط رہتے ہوئے پاکستان کے لیے اپنا کام جاری رکھیں۔
میجر جنرل بابر افتخار کا تعارف
میجر جنرل بابر افتخار نے 1990 میں کمیشن حاصل کیا تھا، انہوں نے کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج کوئٹہ، نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد اور رائل کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج اردن سے گریجویٹ کیا۔انہیں کمانڈ اور تربیت کا وسیع تجربہ حاصل ہے، انہوں نے بریگیڈ میجر کے طور پر آرمرڈ بریگیڈ، وزیرستان میں انفنٹری ڈویڑن کے بریگیڈیئر اسٹاف اور چیف آف اسٹاف کور ہیڈکواٹرز میں خدمات انجام دیں۔علاوہ ازیں وہ شمالی وزیرستان میں آرمرڈ بریگیڈ اور انفنٹری بریگیڈ کے کمانڈر کے طور پر بھی تعینات رہے۔بعد ازاں انہوں نے پاکستان ملٹری اکیڈمی اور نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد میں فکلٹی ممبر کے طور پر بھی خدمات انجام دیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر تعیناتی سے قبل وہ آرمرڈ ڈویژن کی کمانڈ کررہے تھے۔بابر افتخار کے 4 بیٹے ہیں جبکہ انہیں مطالعے کا شوق اور گالف ان کا مشغلہ ہے۔
میجر جنرل آصف غفور کا تعارف
خیال رہے کہ 15 دسمبر 2016 کو میجر جنرل آصف غفور کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کا ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) مقرر کیا گیا تھا۔اس وقت عسکری ذرائع حوالے سے ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ میجر جنرل غفور آرٹیلری رجمنٹ سے تعلق رکھتے ہیں اور انہیں ا?پریشنر کا وسیع تجربہ حاصل ہے جبکہ وہ آپریشن المیزان میں ایک یونٹ کی کمانڈ بھی کرچکے ہیں۔وہ ملٹری آپریشنز ڈائریکٹوریٹ میں بھی خدمات انجام دے چکے ہیں جبکہ قومی ایکشن پلان (نیپ) کی تکمیل میں بھی شامل رہے ہیں۔خیال رہے کہ اس سے قبل لیفٹیننٹ جنرل عاصم باجوہ ڈی جی آئی ایس پی آر تھے، جن کو ترقی دے کر جی ایچ کیو میں انسپکٹر جنرل آف آرمز تعینات کردیا گیا تھا۔

سمندروں میں ہر سیکنڈ کے دوران پانچ ’حرارتی ایٹم بم‘ پھٹ رہے ہیں، ماہرین

بیجنگ(ویب ڈیسک) ماحولیاتی تبدیلی اور عالمی تپش (گلوبل وارمنگ) جیسے مسائل جتنی تیزی کے ساتھ ہمارے قابو سے باہر ہورہے ہیں انہیں دیکھ کر یوں لگتا ہے جیسے اس صدی کے اختتام تک یہ دنیا انسانوں کےلیے ناقابلِ رہائش ہو کر رہ جائے گی۔تیزی سے گرماتے ہوئے ماحول کی وجہ سے موسموں میں بھی سختی بڑھتی جارہی ہے، خاص طور پر گرمی میں۔ یہ جاننے کےلیے کہ ہم اپنی زمین کو کس رفتار سے گرما رہے ہیں، چائنیز اکیڈمی ا?ف سائنسز کے ماہرین نے 1950 کے عشرے سے لے کر 2019 تک زمینی درجہ حرارت میں اضافے کا مطالعہ کیا اور اندازہ لگایا کہ اس پورے عرصے میں ہم کس قدر حرارت (گرمی) اپنے معتدل سیارے کی فضاو¿ں میں شامل کرچکے ہیں۔یہ عدد اتنا بڑا اور غیر معمولی ہے کہ اسے سمجھنا بھی بے حد مشکل ہے؛ اور یہ ہے ”228 سیکسٹیلیئن“ جول، یعنی 2280 ارب کھرب جول! اگر آپ واقعی میں جاننا چاہتے ہیں کہ یہ عدد کتنا بڑا ہے تو پھر 2280 میں صفر (0) کے ساتھ مزید 21 عدد صفر لگا دیجئے۔دوسری جنگِ عظیم کے دوران جاپانی شہر ہیروشیما کو خاک کا ڈھیر بنانے والے امریکی ایٹم بم سے جو توانائی خارج ہوئی، وہ 63,000,000,000,000 جول تھی۔ اگر اس بم سے خارج ہونے والی توانائی کو اکائی مان لیا جائے تو ہم پچھلے 25 سال کے دوران اپنے سمندروں پر 3 ارب 60 کروڑ ’حرارتی ایٹم بموں‘ کے دھماکے کرچکے ہیں جبکہ گزرتے وقت کے ساتھ اس میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔چینی ماہرین کے بقول، پچھلے 25 سالہ اوسط کو مدنظر رکھا جائے تو ہم ہر ایک سیکنڈ میں جتنی حرارت کرہ ہوائی میں شامل کررہے تھے، وہ ہیروشیما پر گرائے جانے والے چار ایٹم بموں کی توانائی جتنی تھی۔ تاہم 2019 میں یہ اوسط غیرمعمولی طور پر بڑھ گیا اور اب ہم ہر سیکنڈ میں 5 ایٹم بموں کی توانائی جتنی حرارت زمینی فضا میں شامل کررہے ہیں۔اگر ایٹم بموں والی مثال کچھ عجیب لگ رہی ہو تو یوں سمجھ لیجیے کہ دنیا کے ہر انسان نے 100 عدد ہیئر آن کر رکھے ہوں اور ان کا ر±خ سمندروں کی طرف کیا ہوا ہو۔ایڈوانسز ان ایٹموسفیرک سائنسز نامی ریسرچ جرنل کے تازہ شمارے میں شائع ہونے والی اس رپورٹ سے اندازہ ہوتا ہے کہ انسان کس تیزی سے زمین کو تباہی کے منہ میں دھکیل رہا ہے۔ لیکن سوال وہی ہے کہ کیا ہم اب بھی سنبھلنے کو تیار ہیں؟