تازہ تر ین

امریکی صدر کی عقل گھاس چرنے چلی گئی ، ہر کوئی حیران

اسلام آباد (خصوصی رپورٹ)فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں واقع نوٹرے ڈیم کیتھڈرل گزشتہ پیر کو خوفناک آگ کا شکار ہوا۔ آگ بجھانے کیلئے 3سو فرانسیسی ماہرین دن رات جدید ترین فائر کنٹرول کے آلات اور بلندو بالا آگ بجھانے والی گاڑیوں کے ہمراہ آگ پر قابو پانے کیلئے کوشاں رہے۔ اسکے بارے میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ٹویٹ میں فرانسیسی ایجنسی کو ایک عجیب و غریب مشورہ دیا۔ ٹویٹ میں ڈونلڈ جے ٹرمپ نے کہا کہ نوٹرے ڈیم کیتھڈرل پیرس میں شدید آگ دیکھ کر دل پر خوف طاری ہو گیا شاید اگر فرانس اس آگ کو بجھانے کیلئے فلائنگ واٹر ٹینکر استعمال کرتا تو آگ بہت جلد بجھ جاتی۔ اس عجیب و غریب مشورے پر مبنی امریکی صدر کے ٹویٹ پر فرانسیسی سول سکیورٹی ایجنسی نے امریکی صدر کے ٹویٹ کو پوائنٹ آﺅٹ کر کے جوابی ٹویٹ کیا کہ کیتھڈرل کو لگی ہوئی آگ بجھانے کیلئے تمام دستیاب ذرائع استعمال کئے جاتے رہے ماسوائے طیاروں سے واٹر بمنگ کے۔ کیونکہ اگر بلندی سے کیتھڈرل کی آگ بجھانے کیلئے ائرکرافٹ واٹر بمنگ کرتے تو اس سے (آٹھ سو سال پرانے) کیتھڈرل کا سٹرکچر بھی تباہ ہو جاتا۔ ایڈن کلے EDEN CLAY نے اپنے جوابی ٹویٹ میں لکھ دیا کہ حقیقی لیڈر 800سال قدیمی نوٹرے ڈیم کیتھڈرل پیرس کی آتشزدگی پر دکھ افسوس اور تعزیت کے پیغامات بھیج رہے ہیں محترم صدر ٹرمپ صاحب آپ ہمیں متحیر کن آگ بجھانے کا طریقہ سمجھا رہے ہیں۔ آپ ہمارے 3سو سے زائد فائر فائٹرز کو یہ بتانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ انہیں اتنی بڑی آگ کس طرح بجھانی چاہئے تھی۔ حقیقت یہ ہے کہ مسٹر پریزیڈنٹ آپ ہمیں اپنے ٹویٹ کے ذریعے پشیمان کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ایک اور فرانسیسی شخصیت ELSIE نے اپنے ٹویٹ میں صدر ٹرمپ کو کہا کہ وہ شاید خود کو بہت ماہر فائرمین تصور کرنے لگے ہیں۔ فرانس کی سول سکیورٹی نے فوری جوابی ٹویٹ میں کہا کہ پیرس فائر بریگیڈ کے سینکڑوں فائر مین کیتھڈرل کی آگ جلد سے جلد بجھانے کیلئے ہرممکن ذریعہ استعمال کر رہے ہیں۔ تمام وسائل استعمال ہو رہے ہیں ماسوائے (بقول صدر ٹرمپ) واٹر بمبنگ ائرکرافٹ کے۔ اگر کیتھڈرل کے اوپر ائرکرافٹ کے ذریعے پانی کی بمباری کی جاتی تو اس سے کیتھڈرل کا پورا سٹرکچر تباہ و برباد ہوجاتا۔


اہم خبریں
   پاکستان       انٹر نیشنل          کھیل         شوبز          بزنس          سائنس و ٹیکنالوجی         دلچسپ و عجیب         صحت        کالم     
Copyright © 2016 All Rights Reserved